உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرناٹک : سابق وزیر روشن بیگ کے بنگلورو اور ممبئی کے ٹھکانوں پر ای ڈی کے چھاپے ، جانئے کیا ہے معاملہ

    کرناٹک : سابق وزیر روشن بیگ کے بنگلورو اور ممبئی کے ٹھکانوں پر ای ڈی کے چھاپے ، جانئے کیا ہے معاملہ

    کرناٹک میں کانگریس کے سابق لیڈر اور سابق وزیر روشن بیگ کے ٹھکانوں پر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے چھاپہ ماری کی ہے ۔ یہ چھاپے منی لانڈرنگ کے سلسلے میں مارے گئے ہیں ۔

    • Share this:
      بنگلورو : کرناٹک میں کانگریس کے سابق لیڈر اور سابق وزیر روشن بیگ کے ٹھکانوں پر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے چھاپہ ماری کی ہے ۔ یہ چھاپے منی لانڈرنگ کے سلسلے میں مارے گئے ہیں ۔ بتادیں کہ کرناٹک حکومت میں وزیر رہے اور سابق کانگریس لیڈر روشن بیگ کا نام 4000 کروڑ کے آئی مانیٹری ایڈوائزری پونجی گھوٹالہ سے جڑا ہے ۔ اس معاملہ میں سی بی آئی روشن بیگ کو گزشتہ سال گرفتار بھی کرچکی ہے اور اس کے ٹھکانے پر چھاپہ ماری بھی کی تھی ۔

      انفورسمنٹ ڈٓائریکٹوریٹ کے افسران نے بنگلورو میں پولیکیش نگر میں روشن بیگ کے رہائشی علاقوں میں سرچ آپریشن چلایا ۔ یہ سرچ آپریشن پانچ اگست کی صبح سے ہی شروع ہوا ۔ وہیں ایک درجن سے زیادہ ای ڈی افسران ممبئی میں روشن بیگ کے رہائشی اور کاروباری ٹھکانوں پر چھاپہ ماری کررہے ہیں ۔

      روشن بیگ بنگلورو کے شیواجی نگر سے سات مرتبہ ممبر اسمبلی رہے ہیں ۔ گزشتہ سال سی بی آئی نے روشن بیگ سے دس گھنٹوں تک پوچھ گچھ کی تھی ۔ اس کے بعد 22 نومبر 2020 کو ان کو گرفتار کیا گیا تھا ۔

      اس معاملہ میں سی بی آئی نے سرکاری افسران اور پولیس افسران کے خلاف سپلیمنٹری چارج شیٹ بھی داخل کی ہے ۔ ای ڈی کی ٹیم نے جس پونجی گھوٹالہ کے سلسلہ میں چھاپہ ماری کی ہے ، وہ گھوٹالہ تقریبا چار ہزار کروڑ روپے کا ہے ۔

      بتادیں کہ کرناٹک میں واقعی آئی ایم اے نام کی کمپنی نے لوگوں کو ہائی ریٹرن کا وعدہ کیا تھا اور لاکھوں کروڑوں کی سرمایہ کاری کروائی اور ان کا پیسہ لے کر فرار ہوگئی ۔

      یہ گھوٹالہ 2019 جون میں سامنے آیا تھا ، جب آئی ایم اے کا مالک محمد منصور خان ، روشن بیگ اور کچھ سرکاری افسران پر دھوکہ دہی کا الزام لگاتے ہوئے  ملک سے فرار ہوگیا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: