ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک: مساجد اور دیگر عبادت گاہوں کے دروازے عوام کیلئے کھولے جانے پر وزیر اعظم مودی کا شکریہ

بنگلورو میں جامعہ حضرت بلال کے مہتمم مولانا ذوالفقار رضا نوری نے کہا کہ مسجدوں اور دیگر عبادت گاہوں کو عوام کیلئے کھولے جانے پر ہم پی ایم مودی کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔

  • Share this:
کرناٹک: مساجد اور دیگر عبادت گاہوں کے دروازے عوام کیلئے کھولے جانے پر وزیر اعظم مودی کا شکریہ
مساجد اور دیگر عبادت گاہوں کے دروازے عوام کیلئے کھولے جانے پر وزیر اعظم مودی کا شکریہ

بنگلورو۔ کرناٹک میں ڈھائی ماہ کی پابندی کے بعد اب ہر مذہب کے لوگ  اپنی اپنی عبادت گاہوں کا رخ کررہے ہیں۔ مسلمان بھی نمازوں کی ادائیگی کیلئے مسجدوں میں حاضر ہورہے ہیں۔ بنگلورو سمیت کرناٹک کے  سبھی اضلاع میں مسلمان اطمینان اور راحت محسوس کرتے ہوئے مسجدوں میں  نمازیں با جماعت ادا کررہے ہیں۔ مسجدوں اور دیگر عبادت گاہوں کو کھولنے کی اجازت دئے جانے پر کرناٹک کے مرکز اہل سنت جامعہ حضرت بلال نے وزیراعظم نریندر مودی سے اظہار تشکر کیا ہے۔


بنگلورو میں جامعہ حضرت بلال کے مہتمم مولانا ذوالفقار رضا نوری نے کہا کہ مسجدوں اور دیگر عبادت گاہوں کو عوام کیلئے کھولے جانے پر ہم پی ایم مودی کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ مولانا نے کہا کہ اس وقت  کورونا کی خطرناک وبا سے انسانیت پریشان ہے۔ عام زندگی مفلوج ہوچکی ہے۔ سماجی، معاشی، تعلیمی سرگرمیاں بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔ ان نازک حالات میں روحانی طاقت لوگوں کو باہمت رکھ سکتی ہے۔ لوگوں کا حوصلہ بڑھا سکتی ہے۔ مولانا نے کہا کہ روحانی اور ایمانی طاقت مایوسی کو امیدوں میں بدل دے گی۔ مسجد حضرت بلال کے خطیب و امام مولانا ذوالفقار رضا نوری نے کہا کہ مسلمان مسجدوں کے ذریعہ ملک کی سلامتی، کورونا وائرس کی وبا سے پوری انسانیت کی حفاظت کیلئے خوب دعائیں مانگیں گے۔ مولانا نے کہاکہ روحانی طاقت کے ساتھ محکمہ صحت اور حکومتوں کی ہدایات پر لوگ اگر پوری طرح عمل پیرا رہیں گے تو جلد ہی کورونا کی وبا کو شکست دینے میں کامیابی ملے گی۔


مرکز اہل سنت جامعہ حضرت بلال کے تحت قائم مسجد حضرت بلال کا شمار بنگلورو کی بڑی مساجد میں ہوتا ہے۔


مرکز اہل سنت جامعہ حضرت بلال کے تحت قائم مسجد حضرت بلال کا شمار بنگلورو کی بڑی مساجد میں ہوتا ہے۔ مسجد کے سکریٹری انیس احمد خان نے کہا کہ بیک وقت 4 ہزار مصلی مسجد میں نماز ادا کرسکتے ہیں لیکن حکومت کے گائڈ لائنس کے مطابق از سر نو صف بندی کی گئی ہے۔ سماجی فاصلے کے تحت  بنائی گئی صفوں کے بعد یہاں ایک وقت میں 800 افراد نماز ادا کر سکیں گے۔  انیس احمد خان نے کہا کہ کورونا کی وبا سے لوگوں کی حفاظت کیلئے مسجد میں تمام احتیاطی تدابیر اختیار کئے گئے ہیں۔ درجہ حرارت کی جانچ، سنیٹائزر، ماسک، سماجی فاصلے اسطرح تمام باتوں کا خیال رکھا گیا ہے۔ اب بس لوگوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ تمام ہدایتوں پر عمل کرتے ہوئے مسجدوں میں عبادتیں انجام دیں۔
First published: Jun 09, 2020 07:37 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading