ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

بنگلورو : کورونا متاثرین کیلئے مسلم نوجوانوں کی مثالی خدمت

بنگلورو میں مسلم رضاکاروں نے ایمرجنسی رسپانس ٹیم (ERT) قائم کی ہے۔ اس ٹیم نے گزشتہ 3 ماہ میں 400 سے زائد کورونا کے مریضوں کو نجی اسپتالوں میں سرکاری کوٹہ کے تحت بیڈ دلوانے میں مدد اور رہنمائی فراہم کی ہے ۔

  • Share this:
بنگلورو : کورونا متاثرین کیلئے مسلم نوجوانوں کی مثالی خدمت
بنگلورو : کورونا متاثرین کیلئے مسلم نوجوانوں کی مثالی خدمت

کرناٹک میں کورونا کے مفت علاج کی سہولت موجود ہے ۔حکومت کی اسکیم کے تحت بڑے سے بڑے نجی اسپتالوں میں مفت علاج کا انتظام ہے ۔ لیکن جانکاری نہ ہونے اور طریقہ کار کے معلوم نہ ہونے کی وجہ سے لوگ اس اسکیم تک نہیں پہنچ پا رہے ہیں۔ اس مسئلہ کو دیکھتے ہوئے بنگلورو میں مسلم رضاکاروں نے ایمرجنسی رسپانس ٹیم (ERT) قائم کی ہے۔ اس ٹیم نے گزشتہ 3 ماہ میں 400 سے زائد کورونا کے مریضوں کو نجی اسپتالوں میں سرکاری کوٹہ کے تحت بیڈ دلوانے میں مدد اور رہنمائی فراہم کی ہے ۔ ای آر ٹی سے وابستہ امین مدثر نے کہا کہ جون کے مہینہ میں ریاستی حکومت نے کورونا کے مریضوں کیلئے خصوصی اسکیم شروع کی تھی ۔ اس اسکیم کے تحت نجی اسپتالوں میں 50 فیصد بیڈ گورنمنٹ کوٹہ کے ذریعہ آنے والے مریضوں کیلئے مختص ہیں۔ حکومت کی اس اسکیم کے باوجود زیادہ تر لوگ اپنی جیب سے لاکھوں روپے خرچ کرتے ہوئے کورونا کا علاج نجی اسپتالوں میں کروا رہے ہیں ۔ امین مدثر نے کہا کہ اس اسکیم کے سلسلے میں معلومات اور جانکاری نہ ہونے کے سبب نہ صرف امیر بلکہ متوسط اور غریب طبقے کے لوگ بھی راست طور پر اسپتال چلے جاتے ہیں اور وہاں انہیں بھاری رقم ادا کرنی پڑتی ہے ۔ جبکہ حکومت کی اسکیم کے ذریعہ ایڈمٹ ہونے والے مریضوں کا سرکاری اور نجی اسپتالوں میں مکمل طور پر مفت علاج کیا جارہا ہے ۔


ایمرجنسی رسپانس ٹیم کے رکن توسیف احمد نے کہا کہ مفت کووڈ علاج کی اسکیم سے فائدہ اٹھانے کا طریقہ بہت آسان ہے۔ اگر کسی شخص میں کورونا کے علامات پائے جائیں تو اسے فوری طور پر سرکاری کلینک یا پرائمری ہیلتھ سینٹر سے رجوع ہونا چاہئے۔ یہاں کورونا کے مفت ٹسٹ کی سہولت موجود ہے۔ کورونا کے ٹسٹ کے بعد اگر رپورٹ مثبت آجائے تو بروہت بنگلورو مہانگر پالیکے ( BBMP)  سے متاثرہ شخص کو فون کیا جاتا ہے۔ گھر میں ٹریٹمنٹ، سرکاری یا نجی اسپتال میں ٹریٹمنٹ کا آپشن مریض کو دیا جاتا ہے۔ مریض کو  اپنی حالت اور ضرورت کے مطابق سرکاری یا نجی اسپتالوں میں بیڈ کیلئے فارم بھرتی کرنا ہوتا ہے۔ اس کے بعد مریض کیلئے بیڈ الاٹ کی جاتی ہے۔ توسیف احمد نے کہا کہ اگر کسی مریض یا اسکے رشتہ دار کو اس سہولت کے حاصل کرنے میں دقت پیش آئے تو وہ ایمرجنسی رسپانس ٹیم کے ہیلپ لائن نمبر پر رابطہ کرسکتے ہیں۔ 24 گھنٹے رضاکاروں کی ٹیم رہنمائی اور مدد کیلئے تیار رہتی ہے۔ اس کیلئے باقاعدہ ویب سائٹ بنایا گیا ہے، جس کے ذریعہ مریض یا انکے رشتہ دار ایمرجنسی رسپانس ٹیم سے  رابطہ کرسکتے ہیں۔ اس ویب سائٹ کا نام  www.covidhelplinebangalore.com ہے ۔


اس ٹیم کی رکن نبیلہ نے کہا کہ ایک شخص کو بیڈ کے ملنے سے لیکر اسپتال سے ڈسچارج ہونے تک گائیڈ کرنے کا کام انجام دیا جاتا ہے۔
اس ٹیم کی رکن نبیلہ نے کہا کہ ایک شخص کو بیڈ کے ملنے سے لیکر اسپتال سے ڈسچارج ہونے تک گائیڈ کرنے کا کام انجام دیا جاتا ہے۔


اس ٹیم کی رکن نبیلہ نے کہا کہ ایک شخص کو بیڈ کے ملنے سے لیکر اسپتال سے ڈسچارج ہونے تک گائیڈ کرنے کا کام انجام دیا جاتا ہے۔ مریض اور اس کے رشتہ دار سے ایمرجنسی رسپانس ٹیم کے ممبرز مسلسل رابطہ میں رہتے ہیں۔ انہیں نہ صرف معلومات بلکہ حوصلہ بھی دیتے ہیں۔ اگر مریض کے گھر والے انتہائی غریب ہیں تو انہیں راشن فراہم کرنے کا کام بھی انجام دیا جاتا ہے ۔ نبیلہ کہتی ہیں کہ اس ٹیم میں انکی ذمہ داری مریض کے گھر والوں سے بات چیت کرنے کی ہے۔ ای آر ٹیم  میں خدمت کرنے والی طالبہ ایمن کہتی ہیں کہ یہاں کام کرنا ان کے لئے ایک بڑا تجربہ ثابت ہوا ہے۔ ہنگامی حالات میں کیسے کام کیا جائے، فوری طور پر کیسے ایمبولینس اور دیگر سہولیات کا انتظام کیا جائے، کس کس سے رابطہ کیا جائے، اس طرح انہیں بہت کچھ سیکھنے کا موقع ملا ہے۔ ایمن نے کہا کہ کورونا کے علامات پائے جانے کے بعد جلد سے جلد کووڈ ٹسٹ کرلینا چاہئے۔ اس کام میں تاخیر سے متاثرہ شخص کو کئی طرح کی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اسپتالوں میں آئی سی یو اور وینٹلیٹر بیڈ بڑی مشکل سے دستیاب ہوتے ہیں۔ لہذا جلد سے جلد کووڈ ٹسٹ مکمل کر تے ہوئے اسپتال میں مفت بیڈ حاصل کرنے کی کوشش کی جائے۔

عاصم جواد نے کہا کہ ٹیم کے ارکان بی بی ایم پی کی وار روم سے رابطہ میں رہتے ہیں۔ جو بھی درخواست موصول ہوتی ہے فوری طور پر وار روم کے  ذریعہ حل کرنے کی کوشش کی جاتی ہے۔ اس ٹیم کے ہر ممبر کی الگ الگ ذمہ داری متعین ہے۔بنگلورو کے مسلم رضاکاروں کی اس ٹیم میں ڈاکٹرز، آئی ٹی انجنیئرز، تاجر، سماجی کارکن اور طلبہ شامل ہیں۔ ایمرجنسی رسپانس ٹیم کے نوجوان محمد اسمٰعیل نے کہا کہ یہ پوری خدمت اللہ کو راضی کرنے کیلئے کی جارہی ہے۔ محمد اسمٰعیل نے کہا کہ حضرت محمد صلی اللہ علیہ و سلم کا قول ہے کہ ایک شخص کی جان کو بچانا پوری انسانیت کو بچانے کے مترادف ہے۔ اسی جذبہ کے ساتھ ٹیم کے تمام ارکان اپنی رضاکارانہ خدمات انجام دے رہے ہیں۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 18, 2020 11:09 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading