ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک : معروف عالم دین مولانا مفتی شعیب اللہ خان مفتاحی کو ملی اب یہ نئی بڑی ذمہ داری

صدائے اتحاد تنظیم کے بانی رکن مجاہد علی بابا نے کہا کہ اجلاس کے اختتام پر نئے صدر کے نام کا اعلان کیا گیا ، تمام مسلکوں کے نمائندوں کی تائید کے ساتھ اتفاق رائے سے ریاست کے معروف عالم دین جامعہ مسیح العلوم کے بانی و مہتمم مولانا شعیب اللہ خان مفتاحی کو صدائے اتحاد کا صدر منتخب کیا گیا ۔

  • Share this:
کرناٹک : معروف عالم دین مولانا مفتی شعیب اللہ خان مفتاحی کو ملی اب یہ نئی بڑی ذمہ داری
کرناٹک کے معروف عالم دین مولانا مفتی شعیب اللہ خان مفتاحی کو ملی اب یہ نئی بڑی ذمہ داری

ریاست کرناٹک میں گزشتہ 10 سالوں سے قائم صدائے اتحاد تنظیم مسلمانوں کے مختلف مسلکوں اور مکاتب فکر کے درمیان اتحاد قائم کرنے کی کوششوں میں سرگرم ہے ۔ 18 ستمبر 2020 کو بنگلورو میں  صدائے اتحاد کا ایک اہم اجلاس منعقد ہوا ۔ اس اجلاس میں ریاست کرناٹک کے معروف عالم دین مولانا شعیب اللہ خان مفتاحی کو صدائے اتحاد کا نیا صدر منتخب کیا گیا ۔ صدائے اتحاد تنظیم کے بانی رکن مجاہد علی بابا نے کہا کہ اجلاس کے اختتام پر نئے صدر کے نام کا اعلان کیا گیا ، تمام مسلکوں کے نمائندوں کی تائید کے ساتھ اتفاق رائے سے ریاست کے معروف عالم دین جامعہ مسیح العلوم کے بانی و مہتمم مولانا شعیب اللہ خان مفتاحی کو صدائے اتحاد کا صدر منتخب کیا گیا ۔


مجاہد علی بابا نے کہا کہ صدائے اتحاد تنظیم مسلمانوں کے 8 مسلکوں پر مشتمل ہے۔ اہل سنت و الجماعت ، تبلیغی جماعت ، اہل حدیث جماعت ، شیعہ جماعت ، شافعی جماعت ،  مہدوی جماعت ، میمن جماعت اور بوہرا جماعت کے نمائندے اس تنظیم میں شامل ہیں ۔ صدائے اتحاد تنظیم کے آرگنائزنگ سکریٹری عثمان شریف نے کہا کہ مسلمانوں کے تمام مسلکوں میں اتحاد قائم کرنا تنظیم کا بنیادی مقصد ہے ۔ مختلف مسلکوں کے لوگ اپنے اپنے طریقوں پر قائم رہتے ہوئے کلمہ طیبہ کی بنیاد پر متحد رہیں ، اس لئے یہ تنظیم سال 2010 میں قائم کی گئی ہے ۔ عثمان شریف نے کہا کہ " اپنے مسلک کو نہ چھوڑیں ، دوسروں کے مسلک کو نہ چھیڑیں"، صدائے اتحاد تنظیم کا نعرہ ہے ۔


مجاہد علی بابا نے کہا کہ صدائے اتحاد تنظیم کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ ریاست کے چوٹی کے علما کرام نے تنظیم کی صدارت اور سرپرستی فرمائی ہے ۔ بنگلورو کی سٹی جامع مسجد کے خطیب و امام مرحوم مولانا ریاض الرحمن رشادی صدائے اتحاد تنظیم کے پہلے صدر تھے ۔ اس کے بعد ریاست کرناٹک کے جید عالم دین امیر شریعت مرحوم مولانا مفتی محمد اشرف علی باقوی صدر بنے ، اس کے بعد مرحوم مولانا مفتی شمس الحق حسنی الحسینی قادری نے صدائے اتحاد کی صدارت سنبھالی ۔ مولانا شمس الحق کے انتقال کے بعد وظیفہ یاب آئی اے ایس افسر کو صدائے اتحاد کا عارضی صدر منتخب کیا گیا تھا ۔ مجاہد علی بابا نے کہا کہ اب مولانا مفتی شعیب اللہ خان مفتاحی اس تنظیم کو آگے بڑھائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ گلبرگہ کی درگاہ حضرت خواجہ بندہ نواز گیسو دراز کے سجادہ نشین سید خسرو حسینی صدائے اتحاد تنظیم کے سرپرست اعلی ہیں ۔




اس تنظیم میں مختلف مسلکوں کی نمائندگی کرنے والے 5 نائب صدور اور 8 سیکریٹریز موجود ہیں ۔ جمعہ کو ہوئے صدائے اتحاد کے اجلاس میں نہ صرف مختلف مسلکوں کے نمائندوں نے حصہ لیا بلکہ مختلف مذاہب کے رہنماؤں نے بھی شرکت کی ۔ ملک اور ریاست کے موجودہ حالات پر گفتگو ہوئی ۔ کورونا وبا کے دوران نفرت کی سیاست اور تبلیغی جماعت کو نشانہ بنائے جانے کے واقعات کی مذمت کی گئی ۔ اجلاس میں حال ہی میں بنگلورو میں پیش آئے تشدد کے واقعہ کے پیش نظر شہر اور ریاست میں امن و امان اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو برقرار رکھنے پر زور دیا گیا ۔

اجلاس کے صدر مولانا مفتی شعیب اللہ خان نے کہا کہ دنیا کے تمام مذاہب اس بات پر متفق ہیں کہ انسانیت کی خدمت سب سے بڑی عبادت ہے اور یہی پیغام اس اجلاس سے دیا گیا ہے ۔ مولانا شعیب اللہ خان نے کہا کہ ملک میں سبھی مذاہب کے لوگوں کیلئے مل جل کر رہنے کی فضا قائم کرنے کی ضرورت ہے ۔ آپس میں اتحاد اور بھائی چارگی کو فروغ دینے کی ضرورت ہے ۔ مولانا شعیب اللہ خان نے کہا کہ اس سلسلے میں محنتیں اور کوششیں کرنے سے اچھے نتائج برآمد ہوں گے ۔ اجلاس میں کانگریس ، بی جے پی اور جے ڈی ایس پارٹیوں کے نمائندوں نے بھی حصہ لیا ۔

سابق ریاستی وزیر آر روشن بیگ نے کہا کہ نوجوانوں کی اصلاح کی جانی چاہئے ۔ روشن بیگ نے کہا کہ کئی نوجوان گانجا ، افیم اور دیگر نشیلی چیزوں کے عادی بن رہے ہیں ۔ حال ہی میں بنگلورو کے ڈی جے ہلی اور کے جی ہلی میں ہوئے تشدد میں نشہ کے عادی نوجوانوں کے شامل ہونے کی بات سامنے آئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ کے حل کیلئے جگہ جگہ ڈرگ ڈی ایڈکیشن سینٹر قائم کئے جائیں ۔ روشن بیگ نے کہا کہ وہ جلد ہی اس طرح کا ایک سینٹر بنگلورو میں قائم کریں گے جہاں ماہر نفسیات کی موجودگی میں نشہ کے عادی نوجوانوں کی اصلاح اور تربیت کا کام انجام دیا جائے گا ۔

سابق ریاستی وزیر اور بنگلورو کے چامراج پیٹ کے رکن اسمبلی ضمیر احمد خان نے بھی اجلاس سے خطاب کیا ۔ ضمیر احمد خان نے کہا کہ فرقہ پرست طاقتیں سماج میں پھوٹ ڈالنے کی مسلسل کوششیں کرتی آرہی ہیں ۔ ان کوششوں کو ناکام بنانے کیلئے سبھی مذاہب کے رہنماؤں کو ایک پلیٹ فارم پر آنے کی ضرورت ہے تاکہ ملک اور ملت میں اتحاد قائم و دائم رہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Sep 20, 2020 05:41 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading