உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اب نماز فجر کی اذان کیلئے اب مائک اور Loudspeaker کا استعمال نہیں کیا جائے گا، علماء کرام نے ایک اہم فیصلہ

    Youtube Video

    oudspeaker Azan: طویل گفتگو کے بعد اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ نماز فجر کیلئے لاوڈ اسپیکر کا استعمال نہیں کیا جائے گا۔واضح ہو کہ حال ہی میں ریاستی حکومت نے سرکولر جاری کرتے ہوئے رات دس بجے سے صبح چھ بجے تک لاوڈ اسپیکر کے استعمال پر پابندی عائد کی ہے۔

    • Share this:
      ریاست کرناٹک میں فجر کی اذان کے سلسلے میں علماء کرام نے ایک اہم فیصلہ لیا ہے۔ نماز فجر کی اذان کیلئے اب مائک اور لاوڈ اسپیکر کا استعمال نہیں کیا جائے گا۔ کرناٹک کے امیر شریعت مولانا صغیر احمد رشادی نے بنگلورو میں اس بات کا اعلان کیا۔ کل شام امیر شریعت کی صدارت میں دارالعلوم سبیل الرشاد میں ایک اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں جمعیت علماء ہند، جماعت اسلامی ہند، جمعیت اہل حدیث اور سنی تنظیموں کے نمائندہ علماء کرام اور مسلم سیاسی لیڈروں نے شرکت کی۔

      طویل گفتگو کے بعد اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ نماز فجر کیلئے لاوڈ اسپیکر کا استعمال نہیں کیا جائے گا۔واضح ہو کہ حال ہی میں ریاستی حکومت نے سرکولر جاری کرتے ہوئے رات دس بجے سے صبح چھ بجے تک لاوڈ اسپیکر کے استعمال پر پابندی عائد کی ہے۔ ساتھ ہی دن میں لاوڈ اسپیکر کے استعمال کیلئے پولیس سے اجازت نامہ حاصل کرنے کی ہدایت دی ہے۔

      قابل ذکر ہے کہ کرناٹک میں پولیس ہائی الرٹ پر ہے جب پیر کو ایک ہندو تنظیم کے کارکنوں نے ریاست بھر میں اذان کے خلاف ہنومان چالیسہ Hanuman Chalisa کا پاٹھ کرنے کا اعلان کیا۔ شری رام سینا کے بانی پرمود متھالک نے صبح 5 بجے میسور ضلع کے ایک مندر میں ہنومان چالیسہ پاٹھ کا افتتاح کیا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ مساجد میں اذان کے خلاف 1000 سے زیادہ مندروں میں ہنومان چالیسہ اور 'سپربھات' آرتی کا اہتمام کیا گیا۔ انہوں نے اس سے قبل کرناٹک کے وزیر اعلی بسواراج بومائی اور وزیر داخلہ اراگا گیانیندر سے کہا تھا کہ وہ بھی اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی طرح ہمت کا مظاہرہ کریں کہ وہ مذہبی مقامات سے غیر مجاز لاؤڈ اسپیکر اتارنے کے لیے کارروائی کریں۔

      پولیس نے شری رام سینا کے کارکنوں کو حراست میں لے لیا ہے جو بنگلورو کے ایک مندر میں ہنومان چالیسہ کا نعرہ لگانے کی تیاری کر رہے تھے۔ اس معاملے پر فرقہ وارانہ تصادم کے امکان کے پیش نظر ریاست بھر میں سیکورٹی کو بڑھا دیا گیا ہے۔ بنگلورو کے پولیس کمشنر کمل پنت نے بھی تنازعہ کے پس منظر میں وزیر اعلی بسواراج بومئی سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی اور انہیں تازہ ترین پیش رفت سے آگاہ کیا۔

      مزید پڑھئے: سپریم کورٹ پہنچاGyanVap Case،سروے روکنے کے مطالبےپرCJIبولے، بغیر کاغذات دیکھے کیسے دیں حکم

      دریں اثناء کرناٹک کے وزیر داخلہ اراگا گیانندرا نے کہا تھا کہ صوتی آلودگی پیدا کرنے والی کسی بھی سرگرمی سے عدالت کے حکم کے مطابق نمٹا جائے گا۔ عدالت کے حکم پر سب کو عمل کرنا چاہیے۔ ہم قانون کو اپنے ہاتھ میں لینے والوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے سے ذرا بھی نہیں ہچکچائیں گے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: