உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Border Row: کرناٹک اورمہاراشٹرکےدرمیان سرحدی تنازع کی کیاہےوجہ؟ ’ہم تجربہ کار وکلاء کی خدمات حاصل کریں گے‘ سی ایم

    کرناٹک کے چیف منسٹر بسواراج بومئی

    کرناٹک کے چیف منسٹر بسواراج بومئی

    Border row between Karnataka and Maharashtra: چیف منسٹر بسواراج بومئی نے کہا کہ اس مسئلہ پر رپورٹ پیش کرنے کے لیے ایک ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ انھوں نے بتایا کہ سپریم کورٹ میں اپیل دائر کرنے کا فیصلہ قانونی ماہرین سے مشاورت کے بعد کیا جائے گا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Mumbai | Delhi | Gujarat
    • Share this:
      کرناٹک کے چیف منسٹر بسواراج بومئی (Basavaraj Bommai) نے اتوار کو کہا کہ ریاست کی قانونی ٹیم میں سینئر اور تجربہ کار وکلاء کو مقرر کیا جائے گا تاکہ مہاراشٹر کے ساتھ سرحدی تنازعہ پر سپریم کورٹ (Supreme Court) میں مدلل انداز میں بحث کرسکیں۔ کرناٹک اور مہاراشٹر کے درمیان سرحدی تنازعہ (Border row between Karnataka and Maharashtra) 23 نومبر کو سپریم کورٹ میں سماعت کے لیے کیا جائے گا۔ اس کے لیے کرناٹک حکومت نے اعلان کیا ہے کہ کرناٹک کی جانب سے مؤثر طریقے سے بحث کرنے کے لیے سینئر اور تجربہ کار قانونی ٹیم کا تقرر کیا جائے گا۔

      چیف منسٹر نے کہا کہ اس مسئلہ پر ایڈوکیٹ جنرل کے ساتھ تبادلہ خیال کیا گیا ہے اور ایک کیس اسٹڈی بھی کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ کرناٹک ہائی کورٹ (High Court of Karnataka) کے پیشہ ورانہ کورسز میں داخلے کے لئے کامن انٹرینس ٹیسٹ کے نمبروں پر غور کرنے کے حکم پر بومئی نے کہا کہ ایڈوکیٹ جنرل کو اس بارے میں ہدایت دے دی گئی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      Relationship:نئے لوگوں سے دوستی کرنے کیلئے ایسے شروع کریں بات چیت، ہر کوئی ہوجائے گا متاثر

      یہ بھی پڑھیں: 

      Mohali fair: موہالی میلے میں ہر جگہ خوف ہی خوف! جوئرائیڈ ہوا تباہ، 5 بچوں سمیت 10 افراد زخمی

      چیف منسٹر بسواراج بومئی نے کہا کہ اس مسئلہ پر رپورٹ پیش کرنے کے لیے ایک ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ انھوں نے بتایا کہ سپریم کورٹ میں اپیل دائر کرنے کا فیصلہ قانونی ماہرین سے مشاورت کے بعد کیا جائے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: