ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک : شیر میسور ٹیپو سلطان کو 271 ویں یوم پیدائش پر خراج عقیدت پیش کیا گیا

بنگلورو کے چامراج پیٹ علاقے میں ٹیپو سلطان سمر پیالیس کے قریب کل ہند جمعیت الصو فیا والمشائخ، ٹیپو سلطان دلت سنگھرش سمیتی اور دیگر تنظیموں کے نمائندوں نے مل کر ہر سال کی طرح اس بار بھی ٹیپو سلطان کے یوم پیدائش کا اہتمام کیا۔

  • Share this:
کرناٹک : شیر میسور ٹیپو سلطان  کو 271 ویں یوم پیدائش پر خراج عقیدت پیش کیا گیا
کرناٹک : شیر میسور ٹیپو سلطان کو 271 ویں یوم پیدائش پر خراج عقیدت پیش کیا گیا

میسور کی شان ٹیپو سلطان کو ان کے 271 ویں یوم پیدائش کے موقع پر یاد کیا گیا۔ اس مرتبہ کورونا وبا کے باعث عائد کی گئی پابندیوں کی وجہ سے کہیں بھی جلوس اور کوئی بڑی تقریب منعقد نہیں ہوئی ۔ لیکن ٹیپو سلطان کے مداحوں نے مختصر طور پر آپ کی ولادت کا جشن سادگی کے ساتھ جگہ جگہ منایا۔ بنگلورو، میسور، دیونہلی اور ریاست کے دیگر مقامات پر چھوٹے چھوٹے پروگرام منعقد کرتے ہوئے مجاہد آزادی ٹیپو سلطان کی شہادت اور کارناموں کو یاد کیا گیا۔


بنگلورو کے چامراج پیٹ علاقے میں ٹیپو سلطان سمر پیالیس کے قریب کل ہند جمعیت الصو فیا والمشائخ، ٹیپو سلطان دلت سنگھرش سمیتی اور دیگر تنظیموں کے نمائندوں نے مل کر ہر سال کی طرح اس بار بھی ٹیپو سلطان کے یوم پیدائش کا اہتمام کیا۔ ٹیپو سلطان کے یوم پیدائش کے ساتھ 65 واں کنڑا راجیہ اتسو بھی منایا گیا۔ اس موقع پر صوفی ولی با قادری نے کہا کہ ٹیپو سلطان کے مخالفین ملک کی سالمیت اور یکجہتی کے دشمن ہیں۔


دوسری جانب بنگلورو کے قریب دیونہلی میں ہر سال کی طرح اس بار بھی کئی تنظیموں کے نمائندوں نے ٹیپو سلطان کے جائے پیدائش اور یہاں موجود ان کے مجسمہ پر پہنچ کر  گلہائے عقیدت پیش کئے۔ چکبالاپور کی جماعت اہل اسلام کے ایڈمنسٹریٹر اور ضلع وقف مشاورتی کمیٹی کے سابق چیئرمین بی ایس رفیع اللہ نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر  ٹیپو سلطان کی پیدائش کے نشان پر پھول پیش کرتے ہوئے تاریخ کی اس عظیم شخصیت کو یاد کیا۔ ٹیپو سلطان کے مجسمے پر پھولوں کا ہار پیش کیا گیا۔


ٹیپو سلطان کے یوم پیدائش کے ساتھ 65 واں کنڑا راجیہ اتسو بھی منایا گیا۔
ٹیپو سلطان کے یوم پیدائش کے ساتھ 65 واں کنڑا راجیہ اتسو بھی منایا گیا۔


بی ایس رفیع اللہ نے کہا سابقہ سدارامیا حکومت میں 10 نومبر کو ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش سرکاری سطح پر منایا جاتا تھا۔ حکومت، ٹیپو جینتی مناتے ہوئے ریاست کے اس عظیم سپوت کو یاد کرتی تھی۔ بی جے پی اور سنگھ پریوار کی تنظیموں کی شدید مخالفت کے باوجود سرکاری سطح پر ٹیپو جینتی منانے کا سلسلہ پچھلی کانگریس اور جے ڈی ایس کی مخلوط حکومت میں بھی جاری رہا۔ لیکن ریاست میں جیسے ہی بی جے پی حکومت قائم ہوئی ٹیپو جینتی کو منسوخ کر دیا گیا۔ رفیع اللہ نے کہا کہ وہ گزشتہ 15 سالوں سے ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش بڑے پیمانے پر مناتے ہوئے آرہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ٹیپو جینتی منائے یا نہ منائے ریاست کے عوام ٹیپو سلطان کو دل اور جان سے چاہتے اور انہیں ہمیشہ یاد کرتے ہوئے آرہے ہیں۔

میسور کی شان ٹیپو سلطان کو ان کے 271 ویں یوم پیدائش کے موقع پر یاد کیا گیا۔
میسور کی شان ٹیپو سلطان کو ان کے 271 ویں یوم پیدائش کے موقع پر یاد کیا گیا۔


تحریک خداداد کے نمائندوں نے بھی مجاہد آزادی حضرت ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش منایا۔ اس تحریک کے جنرل سیکرٹری سید منصور نے کہا کہ نہ صرف بی جے پی بلکہ اپنے آپ کو سیکولر کہنے والی سیاسی پارٹیوں نے بھی اس بار ٹیپو سلطان کو نظر انداز کیا ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ کانگریس اور جے ڈی ایس کے لیڈروں نے کیوں ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش نہیں منایا ۔ کورونا وبا کی وجہ سے اگر کوئی تقریب نہیں ہوئی ہے تو ان پارٹیوں کے بڑے لیڈروں نے کیوں نہیں مبارکبادی کا پیغام جاری کیا۔ خداداد تحریک نے کرناٹک ریاستی وقف بورڈ کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ سید منصور نے کہا ٹیپو سلطان نے ہزاروں ایکڑ اراضی وقف کی تھی۔ آج بھی اس دور کی کئی جائدادیں وقف بورڈ کے زیر نگرانی ہیں ۔ حکومت ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش منائے یا نہ منائے کم از کم وقف بورڈ کو ایک چھوٹی تقریب منعقد کرنا چاہئے تھا۔

خیال رہے کہ میسور کی خداداد سلطنت کے بانی نواب حیدر علی خان بہادر کے فرزند ٹیپو سلطان 10 نومبر 1750 کو دیونہلی میں پیدا ہوئے تھے۔ انگریزوں کے خلاف لڑی گئی میسور کی چوتھی جنگ میں 4 مئی 1799 کو سری رنگا پٹن میں شہید ہوئے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Nov 11, 2020 11:19 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading