உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرناٹک اردو اکیڈمی دربدربھٹکنے پر مجبور ، محکمہ کنڑ ااینڈ کلچر نے عمارت خالی کرنے کیلئے کہا

    کرناٹک میں اردو والوں کا ایک دیرانہ خواب آج تک خواب ہی بن کر رہ گیا ہے۔ بنگلورومیں اردو بھون کی تعمیرکے لئےکئی سالوں سےکوششیں کی جا رہی ہیں۔

    کرناٹک میں اردو والوں کا ایک دیرانہ خواب آج تک خواب ہی بن کر رہ گیا ہے۔ بنگلورومیں اردو بھون کی تعمیرکے لئےکئی سالوں سےکوششیں کی جا رہی ہیں۔

    کرناٹک میں اردو والوں کا ایک دیرانہ خواب آج تک خواب ہی بن کر رہ گیا ہے۔ بنگلورومیں اردو بھون کی تعمیرکے لئےکئی سالوں سےکوششیں کی جا رہی ہیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      بنگلورو : کرناٹک میں اردو والوں کا ایک دیرانہ خواب آج تک خواب ہی بن کر رہ گیا ہے۔ بنگلورومیں اردو بھون کی تعمیرکے لئےکئی سالوں سےکوششیں کی جا رہی ہیں۔ یہاں تک کےاردواکیڈمی کےبجٹ میں اردو بھون کی تعمیر کیلئے رقم بھی مختص کی جاچکی ہے ، لیکن اردوبھون کا کوئی نام ونشان نظرنہیں آرہا ہے۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ اردوبھون نہ ہونے کی وجہ سے اردو اکیڈمی کو دربدر بھٹکنے کی نوبت آگئی ہے۔ محکمہ کنڑا اینڈ کلچر نے جلد سے جلد عمارت خالی کرنے کے لئے اردو اکیڈمی سے کہا ہے۔
      ادھر وزیراقلیتی بہبود تنویرسیٹھ کا کہنا ہے کہ اردو اکیڈمی کا دفترعارضی طورپر حج کمیٹی کے دفتر میں منتقل کیا جائےگا۔ تنویرسیٹھ نے کہا کہ اردو بھون کیلئے جگہ حاصل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر کوخط لکھا گیا ہے۔ واضح رہے کہ سال2015 میں سابق وزیراقلیتی بہبودقمرالاسلام نے اردو بھون کی تعمیر کے لئے پہل کی تھی، جس کے بعد اکیڈمی کےبجٹ میں ایک کروڑ25 لاکھ روپئے بھی مختص کئےگئے ۔ لیکن اس معاملےمیں اب تک کوئی ٹھوس پیش رفت نہیں ہوپائی ہے۔
      First published: