ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک کے وزیر اعلی کا بیان: مندر اگر کھلیں گے تو مسجد اور چرچ بھی کھولے جائیں گے ملک کا قانون سب کیلئے ایک ہے

ملک بھر میں لاک ڈاؤن کا چوتھا مرحلہ اختتام کو پہونچ رہاہے ۔لاک ڈاؤن میں کئی سطح پر ڈھیل دئے جانے کے بعد عبادت گاہوں کو بھی کھولنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

  • Share this:
کرناٹک کے وزیر اعلی کا بیان: مندر اگر کھلیں گے تو مسجد اور چرچ بھی کھولے جائیں گے ملک کا قانون سب کیلئے ایک ہے
ملک بھر میں لاک ڈاؤن کا چوتھا مرحلہ اختتام کو پہونچ رہاہے ۔لاک ڈاؤن میں کئی سطح پر ڈھیل دئے جانے کے بعد عبادت گاہوں کو بھی کھولنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

ملک بھر میں لاک ڈاؤن کا چوتھا مرحلہ اختتام کو پہونچ رہاہے ۔لاک ڈاؤن میں کئی سطح پر ڈھیل دئے جانے کے بعد عبادت گاہوں کو بھی کھولنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔ کرناٹک کے وزیر اعلی بی ایس یدیورپا نے واضح کیا ہے کہ ریاست میں اگر مندر کھلیں گے تو مسجد اور چرچ  بھی عبادت کیلئے کھولے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کا قانون سب کیلئے ایک ہے۔ مندر، مسجد، چرچ سب ایک ہیں۔ وزیر اعلی نے کہا کہ  عبادت گاہوں کو کھولنے کیلئے مرکزی حکومت کی اجازت ضروری ہے۔ اس سلسلے میں مرکز کی گائڈ لائنس کا ریاستی حکومت کو انتظار ہے۔


وہیں اس معاملے میں سابق ریاستی وزیر اور چامراج پیٹ کے ایم ایل اے ضمیر احمد خان نے بھی وزیر اعلی یڈیورپا کو خط لکھا ہے۔ ضمیر احمد خان نے  حکومت سے درخواست کی ہے کہ سماجی فاصلے اور دیگر ضروری ہدایتوں کی بنیاد پر عبادت گاہیں عوام کیلئے کھولی جائیں۔  انہوں نے اپیل کی ہے ہندو، مسلم، سکھ اور عیسائی تمام مذاہب کی عبادت گاہیں کھولنے کے سلسلے میں حکومت فیصلہ لے۔


واضح رہے کہ کرناٹک کے وزیر مزرائی کوٹا سرینواس پجاری نے یکم جون سے مندروں کو عوام کیلئے کھولے جانے کا اشارہ دیا ہے۔ ریاستی حکومت کے تحت قائم مزرائی محکمہ مندروں کی نگرانی کرتا ہے۔ کوٹا سرینواس پجاری نے کہا کہ ریاستی حکومت مندروں کیلئے اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروٹوکال جاری کرے گی۔ انہوں نے کہا ہے کہ فی الوقت کیلئے مندروں میں صرف پجا اور آرتی کی اجازت دی جائے گی۔  مندروں میں جاتروں یا کوئی تقریب منعقد کرنے کی ہرگز اجازت نہیں ہوگی۔دوسری جانب کرناٹک ریاستی وقف بورڈ نے بھی وزیر اعلی یڈیورپا کو مکتوب روانہ کیا ہے۔ وقف بورڈ نے مسجدوں، درگاہوں اور عاشور خانوں کو تمام احتیاطی تدابیر کے ساتھ عوام کیلئے کھولنے کی درخواست کی ہے۔


وقف بورڈ کے چیئرمین ڈاکٹر محمد یوسف نے کہا ہے کہ سوشل ڈسٹنسنگ اور کورونا وبا سے بچنے کیلئے تمام ضروری تدابیر کے ساتھ عبادت گاہوں کو  عوام کیلئے کھلا جائے۔ انہوں نے اپنے مکتوب میں کہا ہے کہ حکومت کے احکامات کے مطابق وقف بورڈ نے مسجدوں، درگاہوں میں عوام کے داخلے  پر پابندی کیلئے وقت وقت پر ضروری ہدایات جاری کئے ہیں اور مسلمانوں نے بھی نہ صرف عام دنوں میں بلکہ جمعہ کے موقع پر ماہ رمضان کے دوران اور عیدالفطر کے موقع پر حکومت کی ہدایات پر عمل کیا ہے۔ لیکن غیر معینہ مدت تک عبادت گاہوں سے دوری عوام میں تشویش کا باعث ہے۔ لہذا سماجی فاصلے اور ضروری احتیاطی اقدامات کے ساتھ عبادت گاہیں بھی عوام کیلئے کھولے جائیں۔واضح رہے کہ لاک ڈاؤن کے چوتھے مرحلے میں حکومت نے مختلف شعبوں میں  ڈھیل دی ہے۔ کرناٹک میں سرکاری بس سروس کا جزوی طور پر آغاز ہوا ہے۔ کئی سطح پر  معاشی سرگرمیوں کی بھی اجازت دی گئی ہے۔ اب ریاست کے مختلف گوشوں سے عبادت گاہوں کو بھی عوام  کیلئے کھولنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔
First published: May 27, 2020 10:48 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading