உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ابھی PAN-Aadhaar لنک کریں ورنہ اگلے مہینے سے دوگنا ادا کریں جرمانہ! جانیے طریقہ کار

    Aadhaar کو PAN سے جلد کرالیں لنک ورنہ دینا پڑسکتا ہے دس ہزار روپے کا جرمانہ۔

    Aadhaar کو PAN سے جلد کرالیں لنک ورنہ دینا پڑسکتا ہے دس ہزار روپے کا جرمانہ۔

    یہ نوٹ کرنا ضروری ہے کہ آپ کے پین کا حوالہ دینا بہت سے مالیاتی لین دین کے لیے ضروری ہے اور اس طرح اگر یہ غیر فعال ہو جائے تو لین دین مکمل نہیں ہو سکتے۔ مثال کے طور پر اگر آپ کے پاس غیر فعال پین ہے تو آپ بینک اکاؤنٹ نہیں کھول سکیں گے اور جائیدادیں خرید یا فروخت نہیں کر سکیں گے۔

    • Share this:
      پین اور آدھا لنک (PAN-Aadhaar Linking): اگر آپ کے پاس آدھار یا پین کارڈ ہے اور پھر بھی آپ نے انہیں لنک نہیں کیا ہے، تو آپ کو انہیں 30 جون یا اس سے پہلے لنک کرنے کی ضرورت ہے۔ اگر آپ اس تاریخ کے بعد لنک کرتے ہیں، تو آپ کو 1,000 روپے کا جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔ ورنہ پین ۔ آدھار لنک کرنے کے لیے دیر سے جرمانہ بھی عائد ہوگا۔

      مرکزی حکومت کے تحت محکمہ انکم ٹیکس نے شہریوں کے لیے PAN-Adhaar کو لنک کرنے کے کام میں توسیع کی اطلاع دی ہے۔ آپ کو 31 مارچ 2023 تک پین آدھار کو لنک کرنے کی ضرورت ہے، لیکن آپ کا پین غیر فعال ہونے سے بچنے کے لیے جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔ جو لوگ 30 جون کے بعد اپنے پین آدھا کارڈ کو لنک کر رہے ہیں انہیں اس لازمی کام کو مکمل کرتے ہوئے جرمانہ بھی ادا کرنا پڑے گا۔

      30 جون کے بعد پین آدھار لنک کرنے میں دیر سے کیا جرمانہ ہے؟

      محکمہ انکم ٹیکس نے اس سال کے شروع میں ایک نوٹیفکیشن میں کہا کہ جو شہری 30 جون تک پین ۔ آدھار کو لنک کریں گے، انہیں 500 روپے کی لیٹ فیس ادا کرنی ہوگی۔ ایسی صورت میں جہاں اس طرح کی اطلاع ذیل میں درج تاریخ سے تین ماہ کے اندر دی جاتی ہے۔
      30 جون کے بعد PAN-Adhaar لنک کرنے میں دیر سے کیا جرمانہ ہے؟

      تیس جون کے بعد 1000 روپے کی لیٹ فیس ان لوگوں کو ادا کرنی ہوگی جو اپنا آدھار پین لنک کر رہے ہیں۔ یہ نوٹ کرنا ضروری ہے کہ یہ کام اگلے سال 31 مارچ سے پہلے کرنا ہوگا تاکہ ان کے پین کو غیر فعال ہونے سے بچایا جا سکے، جو ٹیکس جمع کرنے جیسے کئی کاموں میں مددگار ہوگا۔

      اگر آپ 31 مارچ 2023 تک PAN-Adhaar کو لنک نہیں کرتے ہیں تو کیا ہوگا؟

      اگر آپ آخری تاریخ ختم ہونے کے بعد اپنے پین کو آدھار کے ساتھ لنک نہیں کرتے ہیں، تو آپ کا پین غیر فعال ہو جائے گا اور آپ کو کئی نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔ ایک فرد جس کا پین آدھار سے منسلک نہیں ہے، وہ اس دستاویز کا استعمال کرتے ہوئے کوئی مالی لین دین نہیں کر سکے گا۔

      یہ نوٹ کرنا ضروری ہے کہ آپ کے پین کا حوالہ دینا بہت سے مالیاتی لین دین کے لیے ضروری ہے اور اس طرح اگر یہ غیر فعال ہو جائے تو لین دین مکمل نہیں ہو سکتے۔ مثال کے طور پر اگر آپ کے پاس غیر فعال پین ہے تو آپ بینک اکاؤنٹ نہیں کھول سکیں گے اور جائیدادیں خرید یا فروخت نہیں کر سکیں گے۔ ایک غیر فعال پین بھی بہت سے نتائج کا باعث بنے گا جیسے ٹیکس ریٹرن فائل کرنے کے قابل نہ ہونا، زیر التواء ریٹرن اور ریفنڈز پر کارروائی نہ ہونا، زیادہ شرح پر ٹیکس کٹوتیاں اور بہت سے دوسرے معاملات میں مشکلات پیش آسکتی ہے۔

      پین آدھار کو کیسے جوڑیں؟

      مزید پڑھیں: Film Based On History:کے آصف کی کرشمہ تھی’مغل اعظم‘،بدل دی تھی ہندوستانی سینما کی تاریخ

      بہت سے طریقے ہیں جن سے آپ پین کو آدھار سے جوڑ سکتے ہیں۔ ایک تو آپ اسے دو طریقوں سے آن لائن کر سکتے ہیں - انکم ٹیکس پورٹل میں لاگ ان کیے بغیر یا اپنے اکاؤنٹ میں لاگ ان کر کے۔ آپ کو اپنے پین اور آدھار کی تفصیلات کو لنک کرنے کے لیے دیگر ضروری تفصیلات کے ساتھ درج کرنا ہوگا۔

      مزید پڑھیں: Swara Bhasker Death Threat:سلمان خان کے بعد سورا بھاسکر کو ملی جان سے مارنے کی دھمکی،لکھا’ویرساورکر کی توہین نہیں کریں گے برداشت‘

      ان طریقوں کے علاوہ آپ اپنے آدھار کارڈ کو ایس ایم ایس کے ذریعے اپنے پین کارڈ سے لنک بھی کر سکتے ہیں، آدھار جاری کرنے والی اتھارٹی یونیک آئیڈینٹی فکیشن اتھارٹی آف انڈیا (UIDAI's) کی نئی اپ ڈیٹس پر یہ دستیاب ہے۔ لنک کرنے کا عمل آپ کے رجسٹرڈ فون نمبر سے 567678 یا 56161 پر ایس ایم ایس بھیج کر کیا جا سکتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: