உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش کی 56 سال کی غیر شادی شدہ IAS کی لو اسٹوری- شیل بالا نے کہا’۔۔۔شائد اس لئے مجھے کسی نے پرپوز نہیں کیا‘

    شیل بالا مارٹن۔

    شیل بالا مارٹن۔

    مدھیہ پردیش کیڈر آئی اے ایس شیل بالا مارٹن نے حال ہی میں سینئر صحافی ڈاکٹر راکیش پاٹھک سے محبت اور شادی کا اعلان کرکے سب کو حیران کردیا۔ شیل کی عمر 56 سال ہے۔

    • Share this:
      شیل بالا مارٹن 2009 بیچ کی آئی اے ایس آفیسر ہیں۔ وہ اسٹیٹ ایڈمنسٹریٹو سروس کی افسر تھیں۔ ترقی کے بعد وہ آئی اے ایس بن گئیں۔ ان دنوں وہ جنرل ایڈمنسٹریشن ڈیپارٹمنٹ میں ایڈیشنل سیکرٹری ہیں۔ اس سے پہلے وہ نیواری ضلع کی کلکٹر اور برہان پور کی میونسپل کمشنر بھی رہ چکی ہیں۔

      مدھیہ پردیش کیڈر آئی اے ایس شیل بالا مارٹن نے حال ہی میں سینئر صحافی ڈاکٹر راکیش پاٹھک سے محبت اور شادی کا اعلان کرکے سب کو حیران کردیا۔ شیل کی عمر 56 سال ہے۔ انہوں نے ابھی تک شادی نہیں کی۔ پاٹھک کی عمر 57 سال ہے۔ ان کی اہلیہ کا انتقال 7 سال قبل بلڈ کینسر سے ہوا تھا۔ ڈاکٹر پاٹھک کی دو بیٹیاں ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      ہریدوار میں سنگھ کا2024الیکشن پراجلاس:حکومت-سنگھ میں تال میل اوردلتوں کو ساتھ لانے پرغور

      شیل بالا کا کہنا ہے کہ، ’ڈاکٹر راکیش پاٹھک اور میں دو سال پہلے ایک ٹی وی ڈیبیٹ کے بعد سوشل میڈیا پر دوست بن گئے۔ ہم نے نمبروں کا تبادلہ کیا۔ باتیں شروع ہوئیں۔ آئیڈیاز آئے۔ ڈیڑھ سال پہلے میں ایک بار ڈاکٹر پاٹھک کے گھر گئی۔ ڈاکٹر پاٹھک کی پہلی بیوی کی والدہ بھی تھیں۔ ان سے ملی. انہوں نے ڈاکٹر پاٹھک سے کہا کہ آپ ایک دوسرے کو جانتے ہیں۔ شیل بہت اچھی ہے۔ تم شادی کیوں نہیں کرتے؟ ڈاکٹر پاٹھک کی بیٹیوں کو ہماری دوستی اور ملاقاتوں کا علم ہوا۔ بیٹیوں نے یہ بھی کہا کہ تم دونوں شادی کیوں نہیں کرتے۔ سچ پوچھیں تو میں نے پہلے کبھی شادی کا نہیں سوچا تھا لیکن پھر سب کچھ یوں ہی ہوتا گیا۔ ڈاکٹر پاٹھک نے مجھے شادی کی پیشکش کی۔ میں نے سوچنے میں کچھ وقت لیا اور پھر ہاں کہہ دی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      OMG: بوائے فرینڈ نے شادی سے کیا انکار تو گرل فرینڈ اور 5 سہیلیوں نے اٹھایا خوفناک قدم

      شیل بالا کہتی ہیں کہ میرے خیال میں شادی کی کوئی عمر نہیں ہوتی۔ خواتین کو اپنی زندگی کے فیصلے خود کرنے کی آزادی ہونی چاہیے۔ میں نے بھی اپنی زندگی کا فیصلہ کیا ہے۔ اس میں میری فیملی بھی میرے ساتھ ہے۔ ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم کورٹ میرج کریں گے۔ اس کے بعد رسم و رواج کے مطابق ان کی شادی ہوگی۔ ہم نے ابھی تک یہ فیصلہ نہیں کیا کہ ہم ریسپشن دیں گے یا نہیں۔ بات چیت کے بعد اس بارے میں فیصلہ کریں گے۔ شادی کی رسومات میں مذہب کی کوئی پابندی نہیں ہوگی۔ مجھے کوئی اعتراض نہیں ہم دونوں ایک دوسرے کا احترام کرتے ہیں۔ اس میں مذہب کی کوئی پابندی نہیں۔

      شیل نے بتایا کہ، لڑکوں سے دوستی تھی مگر کوئی ایسا نہ ملا جس سے محبت ہو جائے۔ محبت صرف ڈاکٹر پاٹھک سے ہوئی۔ کبھی کسی کو پیار کے لائق نہیں پایا۔ یہ بھی ہو سکتا ہے کہ میں کرسچین کمیونٹی سے آتی ہوں۔ شاید اسی لیے مجھے کسی نے پرپوز نہیں کیا۔ میں بھی ناراض تھی۔ میرا غصہ صرف ڈاکٹر پاٹھک ہی برداشت کر سکتے ہیں۔ وہ ایک اچھے انسان ہیں۔ مجھے بہتر سمجھ سکتے ہیں، اس لیے میں ان کے قریب آگئی۔ اب شاید میرا غصہ کچھ کم ہو گیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: