உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Maharashtra: بی جے پی کے 12 ایم ایل ایز معطل، مہاراشٹر اسمبلی کی کارروائی کچھ دیر کے لیے ملتوی

    سپریم کورٹ (Supreme Court) نے اس سال کے شروع میں بی جے پی کے 12 ایم ایل ایز کی ایک سال کی معطلی کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ اخراج یا نااہلی سے بھی بدتر ہے اور یہ کہ جاری سیشن کی بقیہ مدت کے بعد اس طرح کی کارروائی جمہوری سیٹ اپ کو متاثر کرے گی۔

    سپریم کورٹ (Supreme Court) نے اس سال کے شروع میں بی جے پی کے 12 ایم ایل ایز کی ایک سال کی معطلی کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ اخراج یا نااہلی سے بھی بدتر ہے اور یہ کہ جاری سیشن کی بقیہ مدت کے بعد اس طرح کی کارروائی جمہوری سیٹ اپ کو متاثر کرے گی۔

    سپریم کورٹ (Supreme Court) نے اس سال کے شروع میں بی جے پی کے 12 ایم ایل ایز کی ایک سال کی معطلی کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ اخراج یا نااہلی سے بھی بدتر ہے اور یہ کہ جاری سیشن کی بقیہ مدت کے بعد اس طرح کی کارروائی جمہوری سیٹ اپ کو متاثر کرے گی۔

    • Share this:
      مہاراشٹرا اسمبلی (Maharashtra Assembly) جمعرات کو بی جے پی (BJP) کے ایک ایم ایل اے کی موجودگی کے معاملے پر وقفہ سوالات کے اختتام تک ملتوی کر دی گئی، جو جولائی 2021 میں مانسون سیشن کے دوران ایک سال کے لیے معطل پارٹی کے 12 اراکین اسمبلی میں شامل تھے۔

      سپریم کورٹ (Supreme Court) نے اس سال کے شروع میں بی جے پی کے 12 ایم ایل ایز کی ایک سال کی معطلی کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ اخراج یا نااہلی سے بھی بدتر ہے اور یہ کہ جاری سیشن کی بقیہ مدت کے بعد اس طرح کی کارروائی جمہوری سیٹ اپ کو متاثر کرے گی۔ انھوں نے کہا کہ جولائی 2021 میں منعقدہ سیشن کی بقیہ مدت سے باہر ان ایم ایل اے کو معطل کرنے کی قرارداد ’غیر آئینی‘ اور غیر معقول تھی۔

      جمعرات کو جادھو (شیو سینا) نے وقفہ سوالات کے دوران بی جے پی کے رکن اسمبلی یوگیش ساگر کے کارروائی میں حصہ لینے پر اعتراض کیا۔ ساگر ان 12 ایم ایل ایز میں شامل تھے جنہیں گزشتہ سال اسپیکر کے چیمبر میں اس وقت کے پریذائیڈنگ آفیسر جادھو کے ساتھ مبینہ بدسلوکی کے الزام میں معطل کیا گیا تھا۔ طریقہ کار کا ایک نکتہ اٹھاتے ہوئے، جادھو نے پوچھا کہ ایم ایل ایز کو ان کی ایک سال کی معطلی کی مدت پوری ہونے سے پہلے ایوان میں کیسے داخل ہونے دیا گیا۔

      UP Election Results:رجحانات پر اکھیلیش یادو نے کہا : وقت آگیا ہے اب 'فیصلوں' کا



      انہوں نے کہا کہ قانون ساز اسمبلی نے ایم ایل ایز کو معطل کر دیا اور عدلیہ مقننہ کی کارروائی میں مداخلت نہیں کر سکتی۔ جادھو نے یہ بھی کہا کہ مقننہ کو اس مسئلہ پر خود پر زور دینا چاہئے۔ اپوزیشن اور ٹریژری بنچوں کے ارکان ایوان کے کنویں میں پہنچ گئے جس کے باعث شور شرابے کے مناظر دیکھنے کو ملے۔ اس کے بعد ڈپٹی سپیکر نرہری زروال نے ایوان کی کارروائی وقفہ سوالات کے اختتام تک ملتوی کر دی۔

      یہ بھی پڑھئے :  اپنی اپنی سیٹوں سے پیچھے چل رہے ہیں تین موجودہ وزرائے اعلی، دو ریاستوں میں بی جے پی کی ساکھ داو پر



      ساگر کے علاوہ سنجے کوٹے، آشیش شیلر، ابھیمانیو پوار، گریش مہاجن، اتل بھٹکلکر، پیراگ الاوانی، ہریش پمپلے، جے کمار راول، نارائن کوچے، رام ستپوتے اور کیرتی کمار بھنگڈیا کو پچھلے سال معطل کیا گیا تھا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: