உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مولانا عبدالعلیم اصلاحی اور محمد رحیم الدین انصاری کا انتقال، دینی حلقوں میں غم کی لہر

    مولانا عبدالعلیم اصلاحی کی پیدائش ضلع اعظم گڑھ اتر پردیش میں ہوئی۔

    مولانا عبدالعلیم اصلاحی کی پیدائش ضلع اعظم گڑھ اتر پردیش میں ہوئی۔

    مولانا اصلاحی کی تنصیفات میں دارالاسلام، ملت کے دفع کا مسئلہ، بابری مسجد سے دستبرادری شرعاً جائز نہیں، طاقت کا استعمال قرآن کی روشنی میں، اسلام اور جمہوریت، مجسموں کا مسئلہ، اسلامی فکر کیا ہے؟ اور جاہلیت کے خلاف جنگ وغیرہ شامل ہیں۔ وہ ناظم جامعۃ البنات اصلاحیہ حیدرآباد تھے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Hyderabad | Mumbai | Jammu | Lucknow | Ahmadabad Cantonment
    • Share this:
      حیدرآباد شہر سے تعلق رکھنے والے دو معروف مسلم علماء کا منگل کے روز انتقال ہوگیا۔ آندھرا پردیش اور تلنگانہ کی اردو اکیڈیمی کے سابق چیئرمین مولانا محمد رحیم الدین انصاری (Maulana Mohammed Raheemuddin Ansari) کئی روز علالت کے بعد انتقال کر گئے۔ مولانا انصاری معروف عالم دین مولانا محمد حمید الدین عاقل حسامی کے داماد اور شیورام پلی میں مدرسہ جامعہ اسلامیہ دارالعلوم کے بانی تھے۔

      وہ آل انڈیا مسلم پرسنل بورڈ کے بانی رکن اور یونائیٹڈ مسلم فورم، تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے صدر بھی تھے۔ ان کی نماز جنازہ آج یعنی 28 ستمبر 2022 بروز بدھ بقمام مسجد مولانا عاقلؒ احاطہ مدرسہ جامعہ اسلامیہ دارالعلوم، شیورام پلی حیدرآباد میں ادا کی جائے گی۔ تدفین حسامیہ چمن مادنا پیٹ میں ادا کی جائے گی۔

      وہیں مدرسہ جامعہ البنات اصلاحیہ کے بانی مولانا عبدالعلیم اصلاحی (Maulana Abdul Aleem Islahi) نے سعیدآباد جیون یار جنگ کالونی میں واقع اپنی رہائش گاہ پر آخری سانس لی۔ مولانا عبدالعلیم اصلاحی کا وحدت اسلامی کے مولانا نصیر الدین سے گہرا تعلق تھا۔ مولانا اصلاحی اس نوجوان مجاہد سلیم اعظمی کے والد تھے جنہیں 2004 میں گجرات کی کرائم برانچ کے اہلکاروں کی ایک ٹیم نے لکڑی کا پل میں سابقہ ​​آندھرا پردیش کے ریاستی پولیس ہیڈکوارٹر کے قریب قتل کر دیا تھا۔ مولانا اصلاحی کی نماز جنازہ صبح درگاہ حضرت اُجالے شاہ قبرستان سعیدآباد بعد نماز فجر ادا کی جاچکی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      دہشت گردی کے خلاف ایک اور اہم اقدام، 2016 کی سرجیکل اسٹرائیکس کی طرح  پی ایف آئی پر پابندی

      مولانا عبدالعلیم اصلاحی کی پیدائش ضلع اعظم گڑھ اتر پردیش میں ہوئی۔ انہوں نے مدرستہ الاصلاح سے تعلیم حاصل کی وہ مظہر العلوم کے پرنسپل کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دی۔ مولانا اصلاحی جماعت اسلامی ہند کے فعال رکن تھے تاہم ان کی تصنیف ’’ملت کے دفع کا مسئلہ‘‘ لکھنے پر ان کو جماعت اسلامی سے نکال دیا گیا تھا۔ انہوں نے جماعت اسلامی کو مسلسل اپنی تنقیدوں کا نشانہ بنایا اور وہ اس سے نہیں رکھے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      ملک کی 7 ریاستوں میں PFI کےخلاف دوبارہ کارروائی، 270 افرادزیرحراست، فسادات کیلئےاکسانے...

      مولانا اصلاحی کی تنصیفات میں دارالاسلام، ملت کے دفع کا مسئلہ، بابری مسجد سے دستبرادری شرعاً جائز نہیں، طاقت کا استعمال قرآن کی روشنی میں، اسلام اور جمہوریت، مجسموں کا مسئلہ، اسلامی فکر کیا ہے؟ اور جاہلیت کے خلاف جنگ وغیرہ شامل ہیں۔ وہ ناظم جامعۃ البنات اصلاحیہ حیدرآباد تھے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: