உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیر اعظم مودی نے گئو رکشا کے نام پر غنڈہ گردی کی پھر تنقید کی ، کہا : اتحاد سے پریشان ہیں نقلی گئو رکشک ، ہندو تنظیمیں چراغ پا

    وزیر اعظم نریندر مودی: فائل فوٹو۔

    وزیر اعظم نریندر مودی: فائل فوٹو۔

    وزیر اعظم مودی نے کہا کہ کچھ مٹھی بھر لوگ گائے کے تحفظ کے نام پر کشیدگی پھیلا رہے ہیں ۔ وہ ہندوستان میں اتحاد سے پریشان ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کسان ، کھیتی اور گاوں کو بچانے کیلئے گئو رکشکوں سے ہوشیار رہیں ۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      تلنگانہ : وزیر اعظم نریندر مودی نے ایک مرتبہ پھر گئوركشا کے نام پر ظلم کرنے والوں کو آڑے ہاتھوں لیا ۔ تلنگانہ میں وزیر اعظم نے کہا کہ نقلی گئوركشكوں سے ہوشیار رہیں، ساتھ ہی گئوركشا کے نام پر ظلم کرنے والوں پر ریاستوں سے سخت کارروائی کرنے کیلئے بھی کہا ۔ وزیر اعظم نے اصلی گئوركشكو سے اپیل کی کہ وہ انہیں بے نقاب کریں۔
      وزیر اعظم مودی نے کہا کہ کچھ مٹھی بھر لوگ گائے کے تحفظ کے نام پر کشیدگی پھیلا رہے ہیں ۔ وہ ہندوستان میں اتحاد سے پریشان ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کسان ، کھیتی اور گاوں کو بچانے کیلئے گئو رکشکوں سے ہوشیار رہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سچے گئو رکشکوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ آگئے آئیں اور فرضی گئو رکشکوں کو بے نقاب کریں ۔ کہیں ایسا نہ ہو کہ ان کی وجہ سے اصلی گئو رکشکوں کی شبیہ بھی خراب ہوجائے ۔ ساتھ ہی ساتھ وزیر اعظم نے ریاستی حکومت سے بھی کہا کہ وہ ایسے لوگوں کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کریں ۔
      ادھر وزیر اعظم مودی کے بیان سے گئو رکشک چراغ پا ہوگئے ہیں ۔ سنت سے لے کر متعدد ہندو تنظیمیں نے شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ آل انڈیا ہندو مہاسبھا نے وزیر اعظم کے اس بیان کوگئوركشكوں اور گوسیوكوں کی توہین قرار دیا ۔ ہندو مہاسبھا نے کہا کہ وزیر اعظم نے اپنے وعدوں سے بچنے کے لئے گئوركشكو ںپر ٹھیکرا پھوڑنے کا کام کیا ہے۔
      سوامی چكرپا نی کہا کہ وزیر اعظم کو کشمیر میں لوگ مارے جا رہے ہیں ، اس پر غصہ آنا چاہئے، مگر گئو رکشک پر ان کو غصہ آ رہا ہےاور ان گئو رکشک پر غصہ آ رہا ہے ، جس کی بات کرکے ان کی حکومت بنی تھی۔ ان کو یقینی طور پر پیش کرنا چاهيے کی 80 فیصد کا اعدادوشمار ان کے پاس کہاں سے آیا ہے۔ 60000 سلاٹر ہاوسوں میں لاکھوں گائیں کٹ جاتی ہیں اور بات پولی تھین کی کرتے ہیں۔
      انہوں نے کہا کہ وہاں پر جو گئوشالا تھی وہ سرکاری ہے، وہاں بہت سی گائیں ہلاک ہوگئی ہیں۔ متعدد گئوركشک کمیٹیوں نے کہا بھی تھا کی یہ گئوشالا ہم کو دے دینی چاہئے۔ جے پور میں جو واقعہ پیش آیا ، اس کی پردہ پوشی کے لئے وزیر اعظم نے ایسا بیان دیا ۔ مودی جی کو اپنے الفاظ پر غور کرنا چاہئے اور الفاظ واپس لینا چاہئے۔
      سمیرو پیٹھ کے شنکراچاریہ سوائی نریندر نند نے کہا کہ کہیں نہ کہیں گئو رکشک سے ان کو اقتصادی فائدہ ہی ہوا ہے۔ دہلی میں بوچڑخانے چل رہے ہیں، وزیر اعظم کو نظر نہیں آتا ہے۔ آج تک وشوہندو پریشد اور دیگر ادارے دکان چلا رہے تھے کیا؟ وزیر اعظم سے میں درخواست کرتا ہوں کہ جتنے سلاٹر ہاوس ہیں ، ان کا لائسنس منسوخ کیا جائے۔ یہ ملک گائے کا ہے اور یہاں گائے کی حفاظت ہونی چاہئے۔
      آل انڈیا ہندو مہاسبھا کے قومی جنرل سکریٹری منا کمار شرما نے کہا کہ وزیر اعظم مودی نے گئو رکشکوں اور گئوسیوكوں کی توہین کی ہے اور 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں گائے کی حفاظت اور گئو کشی پر مکمل پابندی لگانے کا جو انہوں نے ہم وعدہ کیا تھا ، اس سے مکمل طور سے کنارہ کشی اختیار کر لی ہے۔ گئو رکشا دل کے لیڈر پون پنڈت نے کہا کہ وہ ملک کے وزیر اعظم ہیں ، وہ رائے رکھ سکتے ہیں ۔ وزیر اعظم کو ملک کو یہ بھی بتانا چاہئے کتنی گائے سروس ہوئی ہے۔ بی جے پی کے لوگ گوركھ دھندا کرتے ہیں ، گئو رکشا دل کے لوگ نہیں کرتے۔
      First published: