ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

منشیات سپلائی کرنے والے ایک بڑے نیٹ ورک کا پردہ فاش،  بنگلورو اور ممبئی میں این سی بی کی کارروائی

این سی بی نے کہا کہ ممبئی میں ایک کارڈ باکس میں نرم کھیلونوں کے اندر ایم ڈی ایم اے کی گولیاں موجود تھیں اور انہیں جرمنی اور بلجیئم سے حاصل کیا گیا تھا۔

  • Share this:
منشیات سپلائی کرنے والے ایک بڑے نیٹ ورک کا پردہ فاش،  بنگلورو اور ممبئی میں این سی بی کی کارروائی
منشیات سپلائی کرنے والے ایک بڑے نیٹ ورک کا پردہ فاش،  بنگلورو اور ممبئی میں این سی بی کی کارروائی

گزشتہ دو ہفتوں میں ممبئی اور بنگلورو میں این سی بی ( Narcotics Control Bureau ) نے بڑی کارروائی کرتے ہوئے منشیات سپلائی کرنے والے ایک بڑے نیٹ ورک کا پردہ فاش کیا ہے ۔  اس کارروائی میں 4317 ایم ڈی ایم اے ڈرگس کی گولیاں، 180 ایل ایس ڈی مادہ اور 2 لاکھ 20 ہزار 500 روپئے کی نقد رقم ضبط کر لی گئی ہے ۔ اس کارروائی کے بعد یہ سوال ایک بار پھر ابھر کر سامنے آرہاہے کہ کیا ملک کے دو بڑے شہر ممبئی اور بنگلورو جدید ترین منشیات کے کاروبار کے مرکز بن رہے ہیں ؟ کیا ان شہروں میں اثر و رسوخ رکھنے والا سماج کا ایک طبقہ منشیات کی لت میں مبتلا ہورہا ہے؟ ۔


اس کارروائی میں ضبط کی گئیں ایم ڈی ایم اے کی نشیلی  گولیوں کو عام زبان میں ایکسٹیسی Pills کے طور پر جانا جاتا ہے۔ ایم ڈی ایم اے گولیاں اور ایل ایس ڈی مادہ نشیلی ڈرگس میں شامل ہے ، عام طور پر نوجوان تفریحی مقاصد کیلئے ان کا استعمال کرتے ہیں ۔ ان گولیوں کے استعمال کے بعد طبیعت میں ایک عجیب سا احساس، جوش، طاقت، لذت محسوس ہوتی ہے۔ ان ڈرگس کے استعمال کے بعد 30 سے 45 منٹ میں اثر شروع ہوتا ہے جو 3 سے 6 گھنٹوں تک جاری رہتا ہے ۔ ذرائع کے مطابق MDMA کی ایک گولی 1500 سے 2500 روپے کی قیمت میں فروخت کی جاتی ہے۔


این سی بی نے کہا کہ ممبئی میں ایک کارڈ باکس میں نرم  کھیلونوں کے اندر ایم ڈی ایم اے کی گولیاں موجود تھیں اور انہیں جرمنی اور بلجیئم سے حاصل کیا گیا تھا۔ ان نشیلی  گولیوں کو ممبئی اور بنگلورو  کی پارٹیوں میں سپلائی کرنے کا منصوبہ تھا ۔ بحرحال اس کارروائی کے بعد بنگلورو اور ممبئی میں MDMA اور LSD  نشیلی اشیا کے سپلائی کرنے کا ایک بڑا جال موجود رہنے کا انکشاف ہوا ہے ۔ 21 اگست کو ٹھوس جانکاری کی بنیاد پر این سی بی کے بنگلورو یونٹ نے کارروائی کی۔ بنگلورو کے کلیان نگر کے ہوٹل اپارٹمنٹ میں چھاپہ مار کر 145 ایم ڈی ایم اے گولیاں ، جو 60 گرام پر مشتمل تھیں ، ضبط کی گئیں اور اسی اپارٹمنٹ سے 220500 کی نقد رقم بھی حاصل ہوئی ۔


عام طور پر نوجوان ان گولیوں کا تفریحی مقاصد کیلئے ان کا استعمال کرتے ہیں ۔
عام طور پر نوجوان ان گولیوں کا تفریحی مقاصد کیلئے استعمال کرتے ہیں ۔


اس سلسلے میں مزید کارروائی کرتے ہوئے بنگلورو کے نیکو ہوم سے MDMA کی 96 گولیاں اور LSD  کے 180 مادہ جات کو  ضبط کیا گیا ہے ۔ ایک خاتون کو جو ان نشیلی گولیوں کو سپلائی کیا کرتی تھی ، 270 ایم ڈی ایم اے کی گولیوں کے ساتھ گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ اس خاتون کو بنگلورو کے دوڈ گبی میں موجود اس کے گھر سے گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ اس پورے معاملے میں این سی بی نے اب تک تین ملزمین کو گرفتار کیا ہے ۔ ایم انوپ، آر رویندرن اور انیکھا ڈی کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ابتدائی جانچ کے مطابق یہ افراد سماج کے خاص طبقے کو ڈرگ سپلائی کیا کرتے تھے ، جن میں چند مشہور موسیقار ، گلوروکار، اداکار اور کالج کے طلبہ بھی شامل ہیں ۔ این سی بی نے کہا ہے کہ اس معاملے میں مزید گرفتاریاں ہوسکتی ہیں ۔

اس سے پہلے کارروائی کرتے ہوئے 10 اگست 2020 کو این سی بی کے ممبئی زونل یونٹ نے 3010 ایم ڈی ایم اے کی گولیاں جو 969 گرام پر مشتمل ہیں ممبئی کے گورے گاؤں میں واقع ڈی ایچ ایل ایکسپریس انڈیا نامی کمپنی کے دفتر سے  ضبط کرلی ہیں۔ اس کے فوری بعد ایک اور کارروائی میں نوی ممبئی میں ایک جوڑے کے پاس سے MDMA  کی 46 گولیاں برآمد کی گئیں ، جنہیں بلجیئم سے حاصل کیا گیا تھا ۔  اس جوڑے کو بھی این سی بی نے گرفتار کر لیا ہے۔ 31 جولائی 2020 کو بنگلورو میں کی گئی کارروائی میں MDMA کی 750 گولیوں کو ضبط کیا گیا ہے ، جنہیں جرمنی سے درآمد کیا گیا تھا۔اس معاملے میں رحمن کے نامی ملزم  فرار بتایا گیا ہے اور اس کی تلاش جاری ہے۔ رحمن،  نشیلی گولیاں کو  اپنی کالج کے طلبہ اور دیگر نوجوانوں کو فروخت کیا کرتا تھا۔

اس طرح این سی بی کی کارروائی میں ممبئی اور بنگلورو میں جاری منشیات کے ایک بڑے دھندے کا پردہ فاش ہوا ہے ۔ اہم بات یہ ہے کہ سماج کا ایک  خصوصی طبقہ ان منشیات کا عادی بنتا جارہا ہے ۔ موسیقاروں ، گلوکاروں  اور اداکاروں کو ڈرگس سپلائی کئے جانے کا حیرت انگیز انکشاف بھی اس معاملے کے ذریعہ سامنے آیا ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 27, 2020 11:41 PM IST