ہوم » نیوز » وطن نامہ

Opinion | کسانوں کا احتجاج : تعلطل سے کھیل میں کسی گہری سازش کی بو آتی ہے

کسانوں کے احتجاج کو لے کر تعطل اور حکومت کی ثالثی کی کوششوں کے تئیں خود ساختہ سلیٹروٹک کسان تنظیموں کی غیر معمولی و غیر مناسب ہٹ دھرمی سے کھیل میں کسی گہری سازش کی بو آتی ہے ۔

  • Share this:
Opinion | کسانوں کا احتجاج : تعلطل سے کھیل میں کسی گہری سازش کی بو آتی ہے
Opinion | کسانوں کا احتجاج : تعلطل سے کھیل میں کسی گہری سازش کی بو آتی ہے (PTI Photo/Ravi Choudhary)

ڈاکٹر نشاکانت اوجھا


کسانوں کے احتجاج کو لے کر تعطل اور حکومت کی ثالثی کی کوششوں کے تئیں خود ساختہ سلیٹروٹک کسان تنظیموں کی غیر معمولی و غیر مناسب ہٹ دھرمی سے کسی گہری سازش کی بو آتی ہے ۔


مختلف سروے سے یہ بات واضح ہے کہ ملک کے طول و عرض میں زیادہ تر کسان برادریوں نے نئے زرعی قوانین کی سراہنا کی ہے ، جس کا مقصد چھوٹے کسانوں کو منڈیوں اور بچولیوں کی گرفت سے آزاد کرانا ہے ، جنہوں نے دہائیوں سے کسانوں کو یرغمال بناکر ان کا استحصال کیا اور اس کے نتیجہ میں کسان محرومی اور ڈپریشن کے شکار ہوگئے اور بہت سارے کسانوں نے خودکشی تک کرلی ۔


یہ افسوس کی بات ہے کہ چین سمیت غیر ملکی اداروں سے روابط رکھنے والے عناصر کے ایک خفیہ گٹھ جوڑ کے ذریعہ حکومت کے ایک جرات مندانہ اقدام کو آسیب زدہ بنانے کی کوشش کی گئی ۔  کارکنان ، کمیونسٹ اور پروپیگنڈہ پھیلانے والوں کے خود ساختہ کاروان کے ذریعہ ناقص میڈیا کی مدد سے بہت ساری اسپن آف پھینکی گئیں تاکہ ملکی کاروباری اداروں کو نیچا دکھایا جاسکے ، انہیں بدنام کیا جاسکے اور تقسیم کیا جاسکے ۔

زرعی اصلاحاتی قوانین اور ہندوستان کی اصل ریفارمس ٹیم کی خاموشی
مختلف سروے سے یہ بات واضح ہے کہ ملک کے طول و عرض میں زیادہ تر کسان برادریوں نے نئے زرعی قوانین کی سراہنا کی ہے ۔


کاروباری اداروں کو کھلنائک کے طور پر پیش کرنے کے پہلو کی چینی مفادات اور مشینری میں اس کے اثر و رسوخ سے بالاتر ہوکر جانچ کرنے کی ضرورت ہے جو کسانوں کے احتجاج کے شعلے کو بھڑکائے رکھنے کیلئے وسائل اور ایندھن فراہم کررہی ہیں ۔

چین کے ایپس اور سرمایہ کاری پر ہندوستانی بازار میں پابندی لگانے میں ہندوستان سرفہرست رہا ہے ، جس سے چینی اداروں کے کاروبار اور جذبات کو بڑا دھچکہ لگا ہے اور اس سے دیگر ممالک کیلئے چین کے خلاف ایکشن کیلئے بھی راہ ہموار ہوئی ہے ۔

پورا مضموں پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں ۔

نوٹ : مضمون نگار سائبر سیکورٹی اینڈ کاونٹر ٹریریزم ( مغری ایشیا اور مشرقی وسطی) کے ایڈوائزر ہیں ۔ مضمون میں ظاہر کئے گئے خیالات ذاتی ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Dec 29, 2020 05:33 PM IST