உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آئی ایس کے مشتبہ افراد کوہم دیں گے قانونی مدد، ہماری پارٹی دہشت گردی کی حمایت نہیں کرتی: اویسی

    حیدرآباد۔ مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اسد الدین اویسی نے کہا کہ ان کی پارٹی ان نوجوانوں کو قانونی مدد مہیا کرائے گی جنہیں این آئی اے نے آئی ایس آئی ایس کے مبینہ ماڈيول میں شامل ہونے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

    حیدرآباد۔ مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اسد الدین اویسی نے کہا کہ ان کی پارٹی ان نوجوانوں کو قانونی مدد مہیا کرائے گی جنہیں این آئی اے نے آئی ایس آئی ایس کے مبینہ ماڈيول میں شامل ہونے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

    حیدرآباد۔ مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اسد الدین اویسی نے کہا کہ ان کی پارٹی ان نوجوانوں کو قانونی مدد مہیا کرائے گی جنہیں این آئی اے نے آئی ایس آئی ایس کے مبینہ ماڈيول میں شامل ہونے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

    • Share this:
      حیدرآباد۔ مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اسد الدین اویسی نے کہا کہ ان کی پارٹی ان نوجوانوں کو قانونی مدد مہیا کرائے گی جنہیں این آئی اے نے آئی ایس آئی ایس کے مبینہ ماڈيول میں شامل ہونے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔ اویسی نے ساتھ ہی صاف کیا کہ ان کی پارٹی دہشت گردی کی حمایت نہیں کرتی۔

      اویسی نے کہا کہ گرفتار نوجوانوں کے خاندان کے ارکان نے ان سے ملاقات کی اور دعوی کیا کہ وہ بے گناہ ہیں۔ اویسی نے کہا کہ انہوں نے ایک سینئر ایڈووکیٹ سے انہیں قانونی مدد مہیا کرانے کے لئے کہا۔

      اویسی نے یہاں مکہ مسجد میں رمضان المبارک کے آخری جمعہ کو ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کل یہ لڑکے اگر مجرم نہیں پائے گئے تو انہیں ان کی زندگی کون لوٹائے گا؟ ہم دہشت گردی کی حمایت نہیں کرتے۔ اگر کوئی ہندوستان پر حملہ کرتا ہے تو ہم سامنے کھڑے ہوں گے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کیا این آئی اے یہ تحریری طور پر دے سکتا ہے کہ وہ مشتبہ افراد کو گرفتار کرنے والے افسران کو معطل کرے گا اگر نوجوان مجرم نہیں پائے گئے۔
      First published: