ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

تلنگانہ میں مسلم ریزرویشن کیلئے بی سی کمیشن کی دوسرے دن بھی عوامی سماعت،کئی تنظیموں کی نمائندگی

ریاست کے مختلف علاقوں سے مسلم اقلیت اور پسماندہ طبقات سے تعلق رکھنے والی تنظیموں کے نمائندوں اور افراد کی کثیر تعداد نے اپنی نمائندگیاں اور تجاویزوغیرہ کمیشن کو پیش کیں۔ آج کی سماعت میں خواتین کی بڑی تعداد بھی کمیشن کے روبرو پیش ہوئی

  • UNI
  • Last Updated: Dec 15, 2016 10:18 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
تلنگانہ میں مسلم ریزرویشن کیلئے بی سی کمیشن کی دوسرے دن بھی عوامی سماعت،کئی تنظیموں کی نمائندگی
فائل تصویر

حیدرآباد : ریاست تلنگانہ میں مسلمانوں کے پسماندہ طبقات کے لئے ریزرویشن کو4 فیصد سے بڑھا کر 12 کرنے کے تعلق سے سدھیر کمیشن آف انکوائری کی سفارشات کاجائزہ لینے کے مقصد سے تلنگانہ اسٹیٹ کمیشن برائے پسماندہ طبقات کی جانب سے عوامی سماعت کا سلسلہ آج دوسرے دن بھی جاری رہا۔ ریاست کے مختلف علاقوں سے مسلم اقلیت اور پسماندہ طبقات سے تعلق رکھنے والی تنظیموں کے نمائندوں اور افراد کی کثیر تعداد نے اپنی نمائندگیاں اور تجاویزوغیرہ کمیشن کو پیش کیں۔ آج کی سماعت میں خواتین کی بڑی تعداد بھی کمیشن کے روبرو پیش ہوئی۔

کمیشن کے صدر  بی ایس راملو اور ارکان ڈاکٹر وی کرشنا موہن راؤ، ڈاکٹر انجنیا گوڑ، جلورو گوری شنکر اور ممبرسکریٹری جی ڈی ارونا آئی اے ایس اس سماعت کے موقعہ پر موجود تھے۔ کمیشن کے صدر بی ایس راملو نے کہا کہ عوامی نمائندگیوں کی سماعت کا یہ پروگرام17 دسمبر کی شام تک جاری رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کے پسماندہ طبقات کو تعلیم اور روزگار کے معاملہ میں ریزرویشن میں اضافہ کرنے کے لئے پہلے سے ہی پسماندہ طبقات کو جو تحفظات دےئے جارہے ہیں، ان کو متاثر نہیں کیا جائے گا اور کسی طبقہ کے ساتھ ناانصافی نہیں کی جائے گی۔ راملو نے عوام سے اس عوامی اجلاس میں بڑی تعداد میں حصہ لینے اور اپنے خیالات ‘ نظریات اور تجاویز پیش کرنے کی خواہش کی۔

آج عوامی اجلاس کے دوسرے دن مختلف گوشوں سے نمائندگیاں پیش کی گئیں۔ آج نمائندگیاں داخل کرنے والوں میں سیاسی و سماجی ،مذہبی رہنما‘ وکلا‘ پروفیسرز‘ وغیرہ شامل تھے جن میں جماعت اسلامی ہند ‘ ویلفیر پارٹی آف انڈیا ‘ آل انڈیا مسلم تھنک ٹینک ایسوسی ایشن ‘ تلنگانہ اآل مائینارٹیز اینڈ ورکرز ایسوسی ایشن‘ لاری ورکرز ایسوسی ایشن‘ تلنگانہ مائینرٹیز سیکیولر فرنٹ‘ سینےئر سٹیزنس ویلفیر ایسوسی ایشن ‘ انڈین یونین مسلم لیگ‘ بی سی مسلم ایسوسی ایشن‘ اور دوسری تنظیموں کے رہنماوں نے 12فیصد ریزرویشن کی حمایت کرتے ہوئے نمائیندگیاں داخل کیں۔

مسلم رہنماوں اور نمائندوں نے مسلمانوں کے لئے ریزرویشن کو بڑھا کر 12 فیصد کردینے کے تعلق سے سدھیر کمیٹی کی سفارشات پر اظہار مسرت کیا اور کمیشن کے صدر نشین جناب بی ایس راملو اور کمیشن کے اراکین ڈاکٹر وی کرشنا موہن راؤ‘ ڈاکٹر انجنیا گوڑ‘ جلورو گوری شنکر اور ممبرسکریٹری جی ڈی ارونا آئی اے ایس سے ان سفارشات کو کامیابی کیساتھ روبہ عمل لانے کے لئے سفارش کرنے کی اپیل کی اور توقع ظاہر کی کہ بی سی کمیشن اس معاملہ میں عاجلانہ اور ضروری کارروائی کرے گا۔ ان لیڈران کی اکثریت نے مسلمانوں کے پسماندہ طبقات کے ریزرویشن میں اضافہ کرنے کے لئے جو اعلانات کئے ہیں اس پر وہ مبارکباد کے مستحق ہیں اور ان کی جس قدر ستائش کی جائے کم ہے۔ تلنگانہ مائنارٹیز سکیولر فورم ‘ آل انڈیا مسلم تھنک ٹینک ایسوسی ایشن ‘ جماعت اسلامی ‘ آل انڈیا مائینارٹیز اینڈ ورکرز ایسوسی ایشن کے نمائندوں نے ریزرویشن کو روبہ عمل لانے پر زور دیا۔

اس سماعت کے موقعہ پر ٹی آر ایس‘ تلگو دیشم‘ بی جے پی اور ویلفیر پارٹی آف انڈیا کے رہنماوں نے شرکت۔ ریڈی جاگرتی اور ویر ساورکر یوا جنا سنگم کے لیڈران نے بی اپنے خیالات پیش کئے۔ اور کہا کہ بابا صاحب امبیڈکر نے کبھی بھی مذہب کی بنیاد پر ریزرویشن دینے کی بات نہیں کی۔ ریزرویشن معاشی پسماندگی کی بنیاد پر دےئے جانے چاہئیں۔
تامل ناڈو میں ریزرویشن کے طریقہ کار کو یہاں روبہ عمل لایا جاسکتا ہے اس کے لئے دستور کے آرٹیکل 15(4) اور آرٹیکل 16(4) میں گنجائش موجود ہے۔ تحفظات کے موجود سسٹم کے تحت بی سی کے اے بی سی اور ڈی زمروں میں ریزرویشن کو کوئی نقصان نہیں ہونا چاہئے۔
First published: Dec 15, 2016 10:18 PM IST