ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

قاضیوں سے طلاق اور خلع کے معاملات شہر کی دارالقضا میں منتقل کرنے کی اپیل

مسلم رہنما اور علمائے اکرام نے قاضیوں کو مشورہ دیاہے کہ ان کے پاس آنے والے طلاق اور خلع کے معاملات کووہیں ختم نہ کریں بلکہ شہر میں موجود دارالقضا کو منتقل کردیں ۔

  • ETV
  • Last Updated: May 26, 2017 09:04 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
قاضیوں سے طلاق اور خلع کے معاملات شہر کی دارالقضا میں منتقل کرنے کی اپیل
مسلم رہنما اور علمائے اکرام نے قاضیوں کو مشورہ دیاہے کہ ان کے پاس آنے والے طلاق اور خلع کے معاملات کووہیں ختم نہ کریں بلکہ شہر میں موجود دارالقضا کو منتقل کردیں ۔

گلبرگہ : مسلم رہنما اور علمائے اکرام نے قاضیوں کو مشورہ دیاہے کہ ان کے پاس آنے والے طلاق اور خلع کے معاملات کووہیں ختم نہ کریں بلکہ شہر میں موجود دارالقضا کو منتقل کردیں ۔ جہاں علمامیاں بیوی کی کاؤنسلنگ کرکے معاملہ کا حل نکالنے کی کوشش کریں گے۔ گلبرگہ میں منعقدہ ایک اجلاس میں علما نے طلاق کے غلط طریقہ کار کے بڑھتے واقعات پر روک لگانے کے لیے کئی تجاویز پیش کیں ۔

مسلم رہنمائوں کا کہنا ہے کہ طلاق کی ضرورت اور اس کے طریقہ کار کی عدم واقفیت کی وجہ سے طلاق ثلاثہ کے واقعات رونما ہو رہے ہیں۔ مسلم پرسنل لا بورڈ کے رکن قمر الاسلام کی قیادت میں گلبرگہ میں منعقدہ اجلاس میں طلاق کے غیر ضروری واقعات کو روکنے کے لیے ایک موثرمیکانزم پر بھی زور دیا گیا۔

ساتھ ہی ساتھ نوجوانوں میں نکاح وطلاق کے تعلق سے بیداری پیدا کرنے کی حکمت عملی بنانے پر بھی اجلاس میں غور وخوص کیا گیا۔ اجلاس میں اس بات سے بھی اتفاق کیا گیا کہ مسلم پرسنل لا کے تعلق سے بیداری کیلئے ماہ رمضان میں خصوصی اہتمام کیا جائے۔ اجلاس کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ مسلم پر سنل لا بیداری کے تعلق سے جماعت اسلامی ہند نے کامیاب طریقہ سے پندرہ روزہ مہم چلائی تھی اور اب اسی کارواں کو منطقی انجام تک پہنچانے کی ضرورت ہے۔

First published: May 26, 2017 09:04 PM IST