ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک انتخابات:کانگریس کا طلبا کو انتخابی منشور میں اسمارٹ فون دینے کا وعدہ

کانگریس صدر راہل گاندھی نے منگلورو میں پارٹی کا انتخابی منشور لانچ کر دیا ہے۔انہوں نے کہا "یہ انتخابی منشور ہر بلاک ،ضلع اور کموینٹی کو دھیان میں رکھ کر بنایا گیا ہے۔ہم ریاست کے لوگوں تک گئے اور ان سے پوچھا کہ وہ ہمارے انتخابی منشور میں کیا چاہتے ہیں۔

  • News18.com
  • Last Updated: Apr 27, 2018 12:55 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کرناٹک انتخابات:کانگریس کا طلبا کو انتخابی منشور میں اسمارٹ فون دینے کا وعدہ
کانگریس صدر راہل گاندھی نے منگلورو میں پارٹی کا انتخابی منشورجاری کر دیا ہے۔

کانگریس صدر راہل گاندھی نے منگلورو میں پارٹی کا انتخابی  منشورجاری  کر دیا ہے۔کناگریس کے انتخابی منشور میں 18 سے 23 سال کی عمر کے سبھی طلبا کو فری اسمارٹ فون دینے کا وعدہ کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا "یہ انتخابی منشور ہر بلاک ،ضلع اور کموینٹی کو دھیان میں رکھ کر بنایا گیا ہے۔ہم ریاست کے لوگوں تک گئے اور ان سے پوچھا کہ وہ ہمارے انتخابی منشور میں کیا چاہتے ہیں۔"میں ریاست کے استحکام "میں یقین رکھتا ہوں۔"


عوام کےہزاروں کرور روپئے لوٹنے والے کو معاف کرنے میں کس کا مفاد ہے؟ کیا یہ آپ کی حد میں ہے؟"جمعرات کو پی ایم مودی نے کرناٹک کے امیدواروں سے ویڈیوں کانفرنسنگ کے ذریعے بات بھی کی تھی۔

راہل گاندھی نے کہا "ا س انتخابی منشور میں لوگوں کے من کی بات ہے۔انہوں نے کہاکہ وہ کرناٹک کے عوام کی بات سننے کے لئے یہاں آئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہمارے مخالفین کرناٹک کی تہذیب کا احترام نہیں کرتے ۔وزیراعظم نریندر مودی اور بی جے پی جو بات کہتے ہیں ، ان پر عمل نہیں کرتے ۔

ہم  نے اس میں جو بھی لکھا ہے ہم کر کے دکھائیں گے۔گزشتہ انتخابی منشور سے بھی ہم نے 95 فیصد کام مکمل کئے ہیں۔آپ دیکھیں گے کہ بی جے پی کا انتخابی منشور 3۔4 لوگ مل کر بناتے ہیں۔ان کے انتخابی منشور میں بد عنوانی ،ریڈی برادرس کے آئیڈیا میں شامل ہوتے ہیں۔بی جے پی کا انتخابی منشور آر ایس ایس کا انتخابی منشور ہوتا ہے"۔


کانگریس کے اس منشور میں کسانوں کی ترقی کو اجاگر کیا گیا ہے ۔ساتھ ہی ترقی ، تعلیم،کھیل کود،ثقافت ،آئی ٹی اور بہتر حکمرانی اس منشور میں شامل کئے گئے ہیں۔راہل گاندھی ان انتخابات کے لئے کرناٹک کے کئی علاقوں میں کافی سرگرمی سے مہم چلارہے ہیں ۔


راہل گاندھی نے کہا "یہ انتخابی منشور ہر بلاک ،ضلع اور کموینٹی کو دھیان میں رکھ کر بنایا گیا ہے"۔بدعنوانی کے الزاموں میں گھرے جی جناردن  ریڈی کو معاف کرنے والے بیان کو لیکر سدا رمیا نے ان کی تنقید کی ہے۔سدا رمیا نے  ٹویٹ کیا،"کافی دلچسپ!بی ایس یدیو رپا نے ریاست کے مفاد میں ریڈی کو معاف کر دیا ہے۔



کرناٹک کے سی ایم سدا رمیا نے بی جے پی سی ایم کینڈڈیٹ بی ایس یدیو رپا پر نشانہ لگایا ہے۔

انہوں نے کہا’’گزشتہ تین ماہ کے دوران میں نے ریاست کے ہر ضلع کادورہ کیا اور یہ ایک بہترین تجربہ رہا ۔میں کرناٹک کے عوام کا شکریہ ادا کرتا ہوں ۔ہر ریاست اب کرناٹک کی سمت دیکھ رہی ہے۔میں کرناٹک کے عوام کا شکریہ اداکرتا ہوں کہ اس مشکل گھڑی میں آپ کے وقار نے ملک کی مدد کی ہے۔اگر اس ریاست کے ہر ضلع کا احترام نہ کیاجائے اور اس کی بات نہ سنی جائے تو اس ریاست کا کوئی بھی مستقبل نہیں ہوگا۔ہمارا منشور کرناٹک کے عوام کی من کی بات پر مشتمل ہے۔

First published: Apr 27, 2018 11:47 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading