ہوم » نیوز » وطن نامہ

سکما نکسلی انکاؤنٹر: لاپتہ 17 جوان شہید، زخمیوں سے ملنے اسپتال پہنچے سی ایم بھوپیش بگھیل

چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل نے اتوار کو راجدھانی رائے پور کے رام کرشن کیئر اسپتال پہنچ کر وہاں علاج کیلئے داخل جوانوں سے ملاقات کی اور ان کی صحت کے بارے میں جانا۔

  • Share this:
سکما نکسلی انکاؤنٹر: لاپتہ 17 جوان شہید، زخمیوں سے ملنے اسپتال پہنچے سی ایم بھوپیش بگھیل
چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل نے اتوار کو راجدھانی رائے پور کے رام کرشن کیئر اسپتال پہنچ کر وہاں علاج کیلئے داخل جوانوں سے ملاقات کی اور ان کی صحت کے بارے میں جانا۔

سکما: چھتیس گڑھ کے ضلع سکما کے چنتاگپھا علاقے میں پولیس اور نکسلیوں کے درمیان ہوئے تصادم میں 17 جوان شہید ہو گئے اور 15 زخمی ہیں، جنہیں بذریعہ ہیلی کاپٹر رائے پور منتقل کر دیا گیا جن میں سے پانچ کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے ۔بستر رینج کے انسپکٹر جنرل سندرراج پی نے آج بتایا کہ چنتا گپھا علاقے کے كسالپاڑ منپا میں گزشتہ روز ہوئے نکسلی تصادم کے بعد سے سترہ نوجوان لاپتہ بتائے گئے تھے ۔ جن کی مسلسل تلاش کی جا رہی ہے ۔


آج تمام لاپتہ سترہ نوجوان تلاش کے دوران مردہ حالت میں پائے گئے ہیں ۔ شہیدوں میں ضلع ریزرو پولیس فورس اور اسپیشل ٹاک فورس کے جوان شامل ہونا بتائے جا رہے ہیں ۔ وہیں اس تصادم میں پندرہ جوان زخمی ہو گئے ہیں، جنہیں گزشتہ روز ہی هے ہیلی کاپٹر سے رائے پور منتقل کر دیا گیا ہے، جن میں پانچ جوانوں کی حالت نازک بتائی گئی ہے ۔ پولیس اور نکسلیوں کے درمیان گزشتہ روز تقریبا پانچ گھنٹے تک تصادم جاری رہا تھا جس میں پانچ سے چھ نکسلیوں کے مارے جانے کا بھی دعوی کیا گیا ہے ۔ وہیں اس تصادم میں کئی دیگر نکسلی زخمی بھی ہوئے ہیں ۔جوانوں نے ہلاک شدہ نکسلیوں میں سے ایک کی لاش برآمد کر لی ہے ۔


چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل نے اتوار کو راجدھانی رائے پور کے رام کرشن کیئر اسپتال پہنچ کر وہاں علاج کیلئے داخل جوانوں سے ملاقات کی اور ان کی صحت کے بارے میں جانا۔

First published: Mar 22, 2020 06:36 PM IST