உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    روہت ویمولہ کے کنبہ کو مالی امداد اور بھائی کو ملازمت دینے کیلئے مرکز تیار : رام داس اٹھاولے

    مرکزی مملکتی وزیر سماجی انصاف رام داس اٹھاولے نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت خودکشی کرنے والے سنٹرل یونیورسٹی حیدرآباد کے طالب علم روہت کے خاندان کو مالی امداد کے علاوہ اس کے بھائی کو ملازمت دینے تیار ہے

    مرکزی مملکتی وزیر سماجی انصاف رام داس اٹھاولے نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت خودکشی کرنے والے سنٹرل یونیورسٹی حیدرآباد کے طالب علم روہت کے خاندان کو مالی امداد کے علاوہ اس کے بھائی کو ملازمت دینے تیار ہے

    مرکزی مملکتی وزیر سماجی انصاف رام داس اٹھاولے نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت خودکشی کرنے والے سنٹرل یونیورسٹی حیدرآباد کے طالب علم روہت کے خاندان کو مالی امداد کے علاوہ اس کے بھائی کو ملازمت دینے تیار ہے

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      حیدرآباد: مرکزی مملکتی وزیر سماجی انصاف رام داس اٹھاولے نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت خودکشی کرنے والے سنٹرل یونیورسٹی حیدرآباد کے طالب علم روہت کے خاندان کو مالی امداد کے علاوہ اس کے بھائی کو ملازمت دینے تیار ہے۔
      واضح رہے کہ روہت ویمولہ نے گذشتہ سال 17جنوری کو یونیورسٹی آف حیدرآباد میں خودکشی کی تھی جس کے نتیجہ میں ملک بھر میں کئی ماہ تک احتجاج کیا گیا تھا ۔ اس کے بعد مرکزی وزارت فروغ انسانی وسائل نے اس اسکالر کی خودکشی کی وجوہات جاننے کے لئے ایک رکنی جانچ کمیشن قائم کیاتھا۔ اس کمیٹی نے مرکز کو اپنی رپورٹ دے دی ہے ۔
      حیدرآباد میں ایک پروگرام کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے رام داس نے کہا کہ مرکز ذات کے زاویہ سے روہت کے معاملہ کو نہیں دیکھ رہی ہے بلکہ طلبہ کے زاویہ سے اس معاملہ یکو دیکھ رہی ہے ۔ قبل ازیں مرکز نے روہت کے خاندان کو 15تا 20لاکھ روپے مالی امداد اور اس کے بھائی کو ملازمت کی تجویز رکھی تھی تاہم روہت کی ماں رادھیکا ویمولہ نے مرکز کی پیشکش کو مسترد کردیا۔
      یونیورسٹی آف حیدرآباد کے وائس چانسلر کے خلاف کارروائی کے مطالبہ کا حوالہ دیتے ہوئے رام داس نے کہا کہ اس وقت کی مرکزی وزیر فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی کو اس سلسلہ میں کوئی اختیار نہیں تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ صدر جمہوریہ پرنب مکرجی یونیورسٹی کے چانسلر کے طور پر وائس چانسلر کے خلاف کارروائی کرنے کا اختیار رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا ’’اگر رادھیکا ویمولہ مجھ سے رجوع ہوتی ہیں تو میں اس معاملہ کو مرکز سے رجوع کروں گا تاکہ مالی امداد اور روہت کے بھائی کو ملازمت حاصل ہوسکے ۔ ‘‘
      First published: