உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک میں مالیاتی شمولیت کے حصول کے لیے بینکنگ خدمات کی توسیع پر رگھورام راجن کا زور

    آربی آئی گورنر نے کہا کہ ملک لازمی،سبسیڈیز اور عوامی شعبہ کے بینکس کے دور سے بتدریج آگے بڑھ رہا ہے

    آربی آئی گورنر نے کہا کہ ملک لازمی،سبسیڈیز اور عوامی شعبہ کے بینکس کے دور سے بتدریج آگے بڑھ رہا ہے

    آربی آئی گورنر نے کہا کہ ملک لازمی،سبسیڈیز اور عوامی شعبہ کے بینکس کے دور سے بتدریج آگے بڑھ رہا ہے

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      حیدرآباد : ریزرو بینک آف انڈیا کے گورنر رگھورام راجن نے ملک میں مالیاتی شمولیت کے حصول کے لیے ملک میں بینکنگ خدمات کی توسیع کی ضرورت پر زور دیا ۔انہوں نے حیدرآباد میں مالیاتی شمولیت کے ذریعہ دیہی ہندوستان کی تبدیلی کے موضوع پر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کو بالخصوص دیہی علاقوں میں مالیاتی شمولیت کے بیشتر اقدامات کی شروعات کے باوجود طویل وقت لگے گا۔
      آربی آئی گورنر نے کہا کہ ملک لازمی،سبسیڈیز اور عوامی شعبہ کے بینکس کے دور سے بتدریج آگے بڑھ رہا ہے تاکہ ایک مستحکم فریم ورک تیار کیا جاسکے جس کے ذریعہ تمام مالیاتی اداروں کو راغب کیا جاسکے تاکہ ان کا احاطہ کیا جاسکے جن کا احاطہ نہیں کیا گیا ہے۔اسی وقت تعلیم،مسابقت اور باقاعدگی کے ذریعہ محروم افراد کے مفادات کا تحفظ کیا جانا چاہئے۔
      انہوں نے قرض پر زائد اورکم شرح سود کے درمیان توازن کی ضرورت پر بھی زور دیا تاکہ ہر شہری کو رسمی مالیاتی خدمات فراہم کی جاسکیں ۔ انہوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ اس سے قابل قیاس مستقبل کا حصول ممکن ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے روپئے کی گھٹتی قدر کے خلاف انتباہ دیا اور کہا کہ اس کے نتیجہ میں دراصل اعلی افراط زر ممکن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ روپئے کی قدر موجودہ طورپر کافی مناسب ہے۔
      First published: