ہوم » نیوز » وطن نامہ

بار بار مشت زنی کرنے سے کم ہوتی ہے کشیدگی؟ یہاں پڑھیں تفصیلات

سوال: میں ہر ہفتے کم از کم تین بار مشت زنی کرتا ہوں اور اس سے میری کشیدگی کم ہوجاتی ہے۔ یہ اچھا ہے کہ نہیں یا ایسا تو نہیں کہ مجھے اپنا دھیان کہیں اور لگانا چاہئے کیونکہ سوتے وقت ہی میرے لنگ میں ایکسائیٹمنٹ ہوتی ہے۔

  • Share this:
بار بار مشت زنی کرنے سے کم ہوتی ہے کشیدگی؟ یہاں پڑھیں تفصیلات
بار بار مشت زنی کرنے سے کم ہوتی ہے کشیدگی؟ یہاں پڑھیں تفصیلات

سوال: میں ہر ہفتے کم از کم تین بار مشت زنی کرتا ہوں اور اس سے میری کشیدگی کم ہوجاتی ہے۔ یہ اچھا ہے کہ نہیں یا ایسا تو نہیں کہ مجھے اپنا دھیان کہیں اور لگانا چاہئے کیونکہ سوتے وقت ہی میرے لنگ میں ایکسائیٹمنٹ ہوتی ہے۔


کوئی شخص کتنی بار مشت زنی کرتا ہے یہ الگ الگ شخص پر منحصر کرتا ہے۔ آپ کتنی بار مشت زنی کرتے ہیں، یا آپ کو ایکسائیٹیڈ کرنے والے ہارمون کی کیا سطح ہے، آپ کی جنسی عادت کیسی ہے، آُپ کی پرورش کے مذہبی اور تہذیبی طریقے کو دیکھتے ہوئے مشت زنی کے تئیں آپ کا نظریہ کیا ہے اور آپ کی جنسی ضرورت کیا ہیں، اس پر منحصر کرتا ہے۔ یہ بات کہیں مقررہ نہیں ہے کہ کسی شخص کو کتنی بار مشت زنی کرنی چاہئے۔


یہ صحیح ہے کہ مشت زنی کرنا اچھا ہے۔ خود کو جنسی لطف دینے کا اس سے بہتر اور کوئی راستہ نہیں ہے۔ مشت زنی کے سبب صحت کو بہت فائدہ ہوتا ہے۔ آپ کا موڈ ٹھیک رہتا ہے، نیند اچھی آتی ہے، کشیدگی کم ہوتی ہے، پروسٹیٹ صحت مند رہتا ہے اور قوت مدافعت کی سطح خاص طور پر مردوں میں زیادہ ہے۔


اگر آپ کو جنسی ایکسائیٹیڈ کا تجربہ ہوتا ہے تو آپ جتنی بار چاہیں اسے کرسکتے ہیں، بشرطیکہ یہ جنون نہ بن جائے، آپ کے روزمرہ زندگی میں مداخلت کرنا نہ شروع کردے اور مثبت ریلیشن شپ کے رستے میں رکاوٹ نہ بن جائے، وغیرہ۔ یہ کہیں سے ایسا کام نہیں ہے، جس سے آپ کو نقصان پہنچتا ہے۔ جب یہ آپ کو نقصان پہنچاتا ہے، تب ہم اسے ‘مشت زنی کی مجبوری (Masturbation Compulsion)‘ کہتے ہیں۔ اگر رکھئے کہ ’مشت زنی کی عادت (Masturbation Addiction)‘ جیسی کوئی چیز نہیں ہوتی۔ کچھ لوگ اس وقت بھی مشت زنی کرتے ہیں، جب انہیں ایکسائیٹمنٹ نہیں ہوتی۔ وہ ایسا کرنے کے لئے مجبور ہوتے ہیں۔

اگر کوئی جنونی طریقے سے مشت زنی کرتا ہے کہ اس سے اس کے اندام نہانی پہنچتا ہے، یا اندام نہانی پر زخم ہوجاتا ہے اور پھر بھی اگر وہ اسے کنٹرول نہیں کرپاتا ہے، تو یہ پریشانی بننے لگتی ہے۔ اگر آپ کام کرجاتے ہیں، اپنے دوستوں، فیملی کے اراکین کے ساتھ وقت بتا رہے ہیں اور زندگی کی دیگر ساری جوابدہی کو نبھا رہے ہیں تو وقت نکال کر ہر دن مشت زنی کرنے میں کوئی برائی نہیں ہے۔ حقیقت میں، ایسا دیکھا گیا ہے کہ جن مردوں نے اپنے کبھی بلوغت میں کبھی بھی مشت زنی نہیں کی، وہ وقت سے پہلے انزال کے مسئلے میں مبتلا ہوتے ہیں کیونکہ ان کا لنگ بہت زیادہ حساس ہوتا ہے۔ مشت زنی آپ کے اپنے پارٹنر کے ساتھ سیکس کے لئے نیٹ پریکٹس کی طرح ہوتا ہے، اس لئے اسے جاری رکھئے۔

آپ چاہیں تو اسے ہر دوسرے دن کرسکتے ہیں، اگر آپ کا جسم فطری طور پر ایسا محسوس کرتا ہے، جب تک یہ زبردستی اور پابند پوزیشن میں نہیں کیا جاتا ہے، ہفتے میں تین بار کرنا ویسا ہی ہے جیسے ہفتے میں پانچ کرنا۔ میڈیکل کے نظریے سے ہفتے میں پانچ بار پروسٹیٹ کو مناسب طریقے سے کام کرنے کے لئے انزال ہونا اچھا ہے۔ آپ اسی دائرے میں آتے ہیں۔ اس لئے فکر کرنے کی کوئی بات نہیں ہے۔ صرف یہ یقینی بنائیے کہ مشت زنی کے بعد آپ کسی بھی طرح کے جرم کا شکار نہیں ہوں۔ اپنی جنسی صحت کی خود دیکھ بھال کرنے کے لئے آپ کو خوش ہونا چاہئے اور اس سے بھی زیادہ اس بات سے خوش ہونا چاہئے کہ آپ میں مشت زنی پر بات کرنے کی ہمت ہے۔ کچھ بھی کہئے، آرگیزم جیسا کچھ نہیں ہے۔ آپ جتنی بار اس کا تجربہ کرنا چاہیں، کریں اور اس بارے میں فکر نہ کریں کہ اس سے آپ کے لنگ میں کوئی کمی آجائے گی، آپ کا اسپرم کاونٹ کم ہوجائے گا یا کسی بھی طرح کی ذہنی گڑبڑی پیدا ہوجائے گی۔ یاد رکھیں کہ مشت زنی جنسی اظہار اور آزادی کا ایک فطری اور صحت مند طریقہ ہے۔ آپ کو اس بارے میں اپنے ذہن میں کوئی الجھن پیدا نہیں کرنا چاہئے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Apr 05, 2021 10:41 PM IST