ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

روہت خودکشی معاملہ: ایرانی کے بیان سے ناراض 10 پروفیسروں نے دی استعفی کی دھمکی

حیدرآباد۔ حیدرآباد میں دلت طالب علم کی خودکشی کے معاملے میں ایک طرف جہاں طالب علموں کا مظاہرہ مسلسل جاری ہے وہیں دوسری طرف سیاست بھی جاری ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Jan 21, 2016 12:16 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
روہت خودکشی معاملہ: ایرانی کے بیان سے ناراض 10 پروفیسروں نے دی استعفی کی دھمکی
حیدرآباد۔ حیدرآباد میں دلت طالب علم کی خودکشی کے معاملے میں ایک طرف جہاں طالب علموں کا مظاہرہ مسلسل جاری ہے وہیں دوسری طرف سیاست بھی جاری ہے۔

حیدرآباد۔ حیدرآباد میں دلت طالب علم کی خودکشی کے معاملے میں ایک طرف جہاں طالب علموں کا مظاہرہ مسلسل جاری ہے وہیں دوسری طرف سیاست بھی جاری ہے۔ اس معاملے میں اے بی وی پی لیڈر سشیل کمار، جن سے روہت کی لڑائی ہوئی تھی، کا کہنا ہے کہ وہ روہت ویملا کی موت سے دکھی ہیں، لیکن اس پورے تنازعہ میں ان کا نام کھینچے جانے سے وہ ذہنی طور پر پریشان ہو رہے ہیں۔


سشیل کمار کا کہنا ہے کہ میرے موبائل پر ایسے میسیج آ رہے ہیں کہ میں ایک کریمنل ہوں۔ ان میسیج میں مجھے روہت کی موت کا ذمہ دار ٹھہرایا جا رہا ہے۔ سشیل کا کہنا ہے کہ میرا روہت سے نظریاتی اختلاف تھا نہ کہ ذاتی دشمنی اور اس معاملے کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش ہو رہی ہے۔


وہیں یہ معاملہ نیا موڑ لیتا جا رہا ہے۔ 10 ایس سی-ایس ٹی پروفیسر احتجاجی طالب علموں کی حمایت میں آ گئے ہیں۔ یہ پروفیسر مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کے کل کے بیان سے ناراض ہیں۔ 10 ایس سی-ایس ٹی پروفیسروں نے انتظامی عہدوں سے استعفی کی دھمکی دی ہے۔ ان کا الزام ہے کہ اسمرتی ایرانی نے غلط حقائق پیش کئے ہیں۔

First published: Jan 21, 2016 11:12 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading