உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ’کوئی بھی حجاب پر پابندی نہیں لگاتا، اصلی مسئلہ اسکول میں حجاب پہننا ہے‘ سپریم کورٹ

     جبکہ دیگر تمام کمیونٹیز ڈریس کوڈ کی پیروی کر رہی ہیں۔

    جبکہ دیگر تمام کمیونٹیز ڈریس کوڈ کی پیروی کر رہی ہیں۔

    Karnataka hijab ban cases: کامت نے بنچ کو قائل کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت کے فروری میں جاری کردہ گورنمنٹ آرڈر میں خاص طور پر ذکر کیا گیا ہے کہ حجاب پہننا اسلام میں ذکر کردہ ضروری مذہبی عمل کا حصہ نہیں ہے۔ تاہم بنچ نے جواب دیا کہ ہو سکتا ہے آپ صحیح نہ ہوں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Hyderabad | Mumbai | Delhi | Ajmer
    • Share this:
      Karnataka hijab ban cases: سپریم کورٹ (Supreme Court) نے بدھ کے روز مشاہدہ کیا کہ صرف ایک کمیونٹی کی طالبات حجاب پہن کر تعلیمی اداروں میں آنا چاہتی ہے جب کہ دیگر طالبات ڈریس کوڈ کی پیروی کرنے کو تیار ہیں اور انھیں اس پر کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ سپریم کورٹ نے اس بات سے اتفاق نہیں کیا کہ یونیفارم کو لازمی بنانے سے متعلق کرناٹک حکومت کے فروری کا حکم صرف ایک کمیونٹی کو نشانہ بنانے کے لیے جاری کیا گیا۔

      کرناٹک میں حجاب پر پابندی کے کیسس کی سماعت کرتے ہوئے جسٹس ہیمنت گپتا اور سدھانشو دھولیا کی بنچ نے بھی ایک درخواست گزار کی عرضی سے اتفاق نہیں کیا کہ لباس پہننا ایک بنیادی حق ہے کیونکہ اس میں اظہار رائے کی آزادی شامل ہے۔ بنچ نے سینئر ایڈوکیٹ دیودت کامت سے کہا کہ آپ اسے غیر منطقی انجام تک نہیں لے جا سکتے۔ اگر لباس پہننے کا حق بنیادی حق ہے تو کپڑے اتارنے کا حق بھی بنیادی حق بن جاسکتا ہے۔

      انھوں نے مزید کہا کہ کوئی بھی آپ کو حجاب پہننے سے منع نہیں کر رہا ہے۔ مسئلہ اسکول میں حجاب پہننے کے بارے میں ہے۔ جسٹس ہیمنت گپتا اڈوپی کی ایک طالبہ کی طرف سے پیش ہو رہی تھی۔ جو حجاب کے استعمال کی وجہ سے منظر عام پر آئی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      پاکستانی نیوز چینل چھپا رہے ہیں اس ملٹی نیشنل کمپنی میں ریپ کا واقعہ؟ ہانیہ عامر نے اٹھائی آواز
      یہ بھی پڑھیں: 

      Flipkart: اب فلپ کارٹ پر ہوٹل بکنگ سروس کا بھی آغاز، تہواروں کے موقع پر ملے گی سہولت

      کامت نے بنچ کو قائل کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت کے فروری میں جاری کردہ گورنمنٹ آرڈر میں خاص طور پر ذکر کیا گیا ہے کہ حجاب پہننا اسلام میں ذکر کردہ ضروری مذہبی عمل کا حصہ نہیں ہے۔ تاہم بنچ نے جواب دیا کہ ہو سکتا ہے آپ صحیح نہ ہوں۔ صرف ایک کمیونٹی حجاب یا سر پر اسکارف کے ساتھ آنا چاہتی ہے جبکہ دیگر تمام کمیونٹیز ڈریس کوڈ کی پیروی کر رہی ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: