உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Shab-e-Barat 2022: ملک بھر میں تزک واحتشام کے ساتھ منائی گئی شب برات، عبادات کا کیا گیا اہتمام

    Youtube Video

    Shab-e-Barat 2022: ہندوستان میں 18 مارچ 2022 بروز جمعہ کی شام شب برات منائی جا رہی ہے۔ اس دن سے متعلق اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ جو بخشش چاہتا ہے میں تمہیں بخش دوں گا۔ جسے کھانا چاہیے، میں کھانا فراہم کروں گا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پورے ملک میں شب برات (Shab-e-Barat) انتہائی تزک واحتشام کے ساتھ منائی گئی۔ کا مطلب مغفرت یا کفارہ کی رات ہے۔ اس کا اسلامی کیلنڈر کے آٹھویں مہینے یعنی شعبان المعظم کی 14 اور 15 ویں رات کے درمیان اہتمام کیا جاتا ہے۔ اس بات کی وضاحت ضروری ہے کہ ’شب‘ فارسی کا لفظ ہے، جس کے معنی رات کے ہیں۔ جب کہ عربی میں ’برات‘ کا مطلب نجات اور بخشش ہے۔ مسلمانوں کا عقیدہ ہے کہ اس رات اللہ تعالیٰ لوگوں کے آنے والے سال کی قسمت کو لکھتا ہے۔ اس دن لوگ دعاؤوں اور ذکر و تلاوت قرآن کا خاص اہتمام کرتے ہیں۔ لہٰذا وہ اللہ سے دعا کرتے ہیں کہ وہ ان کے اور ان کے فوت شدہ باپ دادا کے تمام گناہوں کو معاف فرمائے اور انھیں جہنم سے خلاصی عطا کرے۔

      عام طور پر اس دن ہندوستان کے مسلم معاشرے میں جاگنے کی رات کے طور پر اہتمام کیا جاتا ہے۔ اسے شب برأت، وسط شعبان، شب برات یا لیلۃ البرات کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔


      واضح رہے کہ یہ رات پورے برصغیر پاک و ہند، وسطی ایشیا اور ترکی میں بھی منائی جاتی ہے۔ وہیں مسلمانوں کے کئی ایک مکتبہ فکر میں اس کا اہتمام نہیں بھی کیا جاتا ہے۔
      مزید پڑھیں: Delhi News: شب برات پر کھلے گا تبلیغی جماعت مرکز ، تاہم پوری کرنی ہوں گی کئی شرطیں 

      تاریخ:

      ہندوستان میں 18 مارچ 2022 بروز جمعہ کی شام شب برات کا اہمتام ہوگا۔ اس دن سے متعلق اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ جو بخشش چاہتا ہے میں تمہیں بخش دوں گا۔ جسے کھانا چاہیے، میں کھانا فراہم کروں گا۔ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے یہ بات رات بھر کہی یہاں تک کہ یہ منادی فجر تک بھی لگائی جاتی ہے۔ یہ بھی خیال کیا جاتا ہے کہ اس دن اللہ تعالیٰ تمام لوگوں کی تقدیر ان کے پچھلے اعمال کا حساب لے کر لکھتا ہے اور جب وہ گناہ گاروں کو بھی معاف کر دیتا ہے۔

      یہ بھی پڑھئے: ہندوستانی میزائل گرتے ہی پاکستان میں مچ گیا تھا ہنگامہ، اٹھانے والا تھا یہ بڑا قدم!




      اہمیت:

      بعض سنی روایات کے مطابق اس رات میں پیدا ہونے والی اور دنیا سے رخصت ہونے والی ارواح کے نام بھی طے کیے جاتے ہیں اور رزق کا نزول بھی ہوتا ہے۔ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ اس رات رحمت اور بخشش کے دروازے کھلے ہوتے ہیں کیونکہ اللہ کی لامحدود رحمت کے لیے اس سے رجوع کیا جا سکتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: