ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

تلنگانہ: سونیا گاندھی کے حملے سے ٹی آرایس چھلنی، تلنگانہ سے سونیا نے کیا ماں کی طرح محبت کا اظہار

تلنگانہ میں منعقدہ جلسے کو خطاب کرتے ہوئے سونیا گاندھی نے واضح کردیا کہ الگ تلنگانہ ریاست بنانے کا مطالبہ ان کی ہی قیادت میں یوپی اے حکومت نے پورا کیا تھا۔

  • Share this:
تلنگانہ: سونیا گاندھی کے حملے سے ٹی آرایس چھلنی، تلنگانہ سے سونیا نے کیا ماں کی طرح  محبت کا اظہار
سونیا گاندھی: فائل فوٹو

تلنگانہ میں تلنگانہ راشٹریہ سمیتی(ٹی آرایس) کے لئے انتخابی مقابلہ مشکل ہوتاجارہا ہے۔ تیلگودیشم پارٹی، تلنگانہ جن سمیتی اورسی پی آئی کے ساتھ اتحاد بنانے کے بعد کانگریس نے جمعہ کو سونیا گاندھی کو میدان میں اتاردیا۔ حیدرآباد سے تقریباً 40 کلو میٹردورمیڈچیل میں منعقدہ تقریب میں سونیا گاندھی نے خود کوتلنگانہ کے لوگوں کی ماں کے طورپرپیش کیا۔


اس دوران سونیا گاندھی نے واضح کردیا کہ الگ تلنگانہ ریاست بنانے کا مطالبہ ان کی ہی قیادت میں یوپی اے حکومت نے پورا کیا تھا۔ سونیا گاندھی نے باربارنہ صرف خود کوایک ماں کے طورپرپیش کیا بلکہ سونیا گاندھی اورراہل گاندھی کی تقریرکے تیلگومترجم نے 10 سے زیادہ بار"سونیا تلی" لفظ کا استعمال کیا۔


تیلگومیں 'تلی' کا مطلب ماں ہوتا ہے۔ سونیا نے کہا کہ انہیں تلنگانہ کے لوگوں سے بات کرتے ہوئے ویسی ہی خوشی ہورہی ہے، جیسی کسی ماں کو اپنے بچے سے بات کرنے پرہوتی ہے۔ کانگریس تلنگانہ میں عوام کوسمجھانا چاہتی ہے کہ ایک ماں کی طرح سونیا نے الگ تلنگانہ ریاست کوجنم دیا ہے۔ تلنگانہ میں آج بھی بحث کا یہ موضوع ہے کہ الگ تلنگانہ ریاست بنانے کا سہرا کس کوجاتا ہے۔


ظاہرطورپرکے سی آرخود کوفادرآف تلنگانہ (تلنگانہ کے والد) کے طورپرپیش کرتے رہے ہیں۔ کانگریس اس شبیہ کوہرحال میں توڑنا چاہتی ہے۔ سونیا گاندھی نےسوال اٹھایا کہ جن مقاصد کولے کرآندھرا پردیش سےالگ تلنگانہ ریاست کا قیام کیا گیا، کیا وہ مقصد ساڑھے چارسال میں حاصل ہوسکے ہیںَ، اس کے بعد انہوں نے کے سی آرپرزوردارحملہ بول دیا۔

سونیا گاندھی نے الزام لگایا کہ کسان خودکشی کررہے ہیں، کھیتوں تک پانی نہیں پہنچا ہے، نوجوانوں کوروزگارنہیں ملا ہے اورکے سی آرحکومت نے دلت، آدیواسی، پسماندہ طبقات سے کئے گئے وعدے پورے نہیں کئے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ تلنگانہ کے وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراو اپنی مدت کارمیں صرف اپنے اہل خانہ اوراپنے اقربا کوفائدہ پہنچاتے رہے ہیں۔ سونیا کا اشارہ کے سی آرکے اس وعدے سے تھا، جس میں انہوں نے تلنگانہ میں دلت وزیراعلیٰ بنانے کا وعدہ کیا تھا، لیکن بعد میں خود وزیراعلیٰ بن گئے تھے۔

سونیا گاندھی نے مزید کہا کہ کے سی آربھروسے کے لائق نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جواپنی زبان کا پکا نہیں ہوتا، وہ بھروسے کے لائق بھی نہیں ہوتا۔ سونیا کا اشارہ واضح طورپرکےسی آرکے اس وعدے کی طرف تھا، جس میں کے سی آرنے کہا تھا کہ جس دن یوپی اے حکومت الگ تلنگانہ ریاست بنانے کا اعلان کرے گی، اسی دن وہ اپنی پارٹی کا اںضمام کانگریس میں کردیں گے، لیکن اس کے بعد کے سی آرنے کانگریس میں انضمام سے انکارکردیا تھا۔

جذباتی اندازمیں سونیا گاندھی نے لوگوں سے پوچھا کہ کیا انہوں نے جوخواب دیھکھا تھا، وہ پوراہوسکا ہے۔ انہوں  نے کہا کہ کانگریس نہ صرف تلنگانہ کے لوگوں سے کئے گئے وعدوں کوپورا کرے گی بلکہ مرکزمیں اگرکانگریس کی حکومت بنی تووہ آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست  کا درجہ بھی دے گی۔ ظاہرطورپرکانگریس نے 'سونیا اما' کا تیرکھیل دیا ہے، اب دیکھنا یہ ہے کہ اگریہ کارڈ چل گیا، توکانگریس اوراس کی اتحادی جماعتوں کے لئے اقتدارکی راہ انتہائیآسان ہوسکتی ہے۔

حیدرآباد سے سنجے تیواری کی رپورٹ

 

 
First published: Nov 24, 2018 05:37 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading