ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک: سنی تنظیموں کا بڑا فیصلہ ، اس بار نہیں نکالا جائے گا جشن عید میلاد کا جلوس

کورونا وبا کی وجہ سے عید میلاد کیلئے جاری کی گئی ریاستی حکومت کے گائیڈ لائنس کی تمام سنی تنظیموں نے تائید کی اور متفقہ طور پر یہ فیصلہ کیا ہے کہ اس مرتبہ عید میلاد النبی کا جلوس نہیں نکالا جائے گا ۔ عوامی مقامات پر سیرت رسول پاک کے جلسے اور تقاریب منعقد نہیں کئے جائیں گے۔

  • Share this:
کرناٹک: سنی تنظیموں کا بڑا فیصلہ ، اس بار نہیں نکالا جائے گا جشن عید میلاد کا جلوس
کرناٹک: سنی تنظیموں کا بڑا فیصلہ ، اس بار نہیں نکالا جائے گا جشن عید میلاد کا جلوس

30 اکتوبر 2020 بروز جمعہ کو ملک کی دیگر ریاستوں کی طرح ریاست کرناٹک میں جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ و سلم منایا جارہا ہے ۔ جشن آمد رسول کے پیش نظر کرناٹک کی نمائندہ سنی تنظیموں کا آج بنگلورو میں ایک اہم اجلاس منعقد ہوا ۔ اس اجلاس میں کورونا وبا کی وجہ سے عید میلاد کیلئے جاری کی گئی ریاستی حکومت کے گائیڈ لائنس کی تمام سنی تنظیموں نے تائید کی اور متفقہ طور پر یہ فیصلہ کیا ہے کہ اس مرتبہ عید میلاد النبی کا جلوس نہیں نکالا جائے گا ۔ عوامی مقامات پر سیرت رسول پاک کے جلسے اور تقاریب منعقد نہیں کئے جائیں گے۔


بنگلورو کے ٹیانری روڈ میں واقع مسجد حضرت بلال میں منعقدہ اس اہم اجلاس میں مرکزی میلاد و سیرت کمیٹی ، مرکز اہل سنت جامعہ حضرت بلال ، سنی جمعیت آل کرناٹک ، مرکزی جلوس محمدی کمیٹی ، سنی جمعیت العلماء اور مرکز اہل سنت جامعہ حضرت بلال کے نمائندوں نے شرکت کی ۔ مسجد حضرت بلال کے خطیب و امام مولانا ذوالفقار رضا نوری نے کہا کہ مسلمان جشن آمد رسول صلی اللہ علیہ و سلم کا سال بھر انتظار کرتے ہیں ۔ اب یہ مبارک دن قریب ہے ، لیکن ملک بھر میں پھیلی کورونا کی وبا کے پیش نظر اس مرتبہ عید میلاد النبی احتیاط کے ساتھ منائی جائے گی ۔


مولانا ذوالفقار رضا نوری نے کہا کہ ریاستی حکومت نے عید میلاد کے سلسلے میں گائڈ لائنس جاری کئے ہیں ۔ جلوس اور عوامی مقامات پر جلسے منعقد کرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے ۔ لیکن اطمینان کی بات یہ ہے کہ  مسجدوں ، درگاہوں میں سماجی فاصلے کو برقرار رکھتے ہوئے سیرت النبی صلی اللہ علیہ و سلم کے جلسے منعقد کرنے کی اجازت دی گئی ہے ۔ مولانا ذوالفقار رضا نوری نے کہا کہ اس مرتبہ 12 ربیع الاول بروز جمعہ کو ہے ۔ اس دن نبی کریم کی ولادت کا جشن مسجدوں میں، گھروں اور دکانوں میں منائیں ۔ سڑکوں پر، عوامی مقامات میں ہر گز کسی بھی طرح کے پروگرام منعقد نہ کریں ۔


جلوس اور عوامی مقامات پر جلسے منعقد کرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے ۔
جلوس اور عوامی مقامات پر جلسے منعقد کرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے ۔


مولانا نے مسجد کمیٹیوں کو مشورہ دیا کہ چونکہ اس بار عید میلاد جمعہ کے دن منائی جارہی ہے ۔ لہذا جمعہ کی نماز سے قبل ہی اردو کے خطبہ کیلئے زیادہ وقت دیں ۔ اردو خطبہ میں سیرت النبی صلی اللہ علیہ و سلم پر خطاب کریں ۔ لوگوں تک پیغمبر اسلام کا پیغام پہنچائیں ۔ مرکزی جلوس محمدی کمیٹی کے سکریٹری افسر بیگ قادری نے کہا کہ ہر سال بنگلورو میں 100 سے زائد مقامات سے عید میلاد کے جلوس نکالے جاتے تھے ۔ شہر کے تین مقامات پر بیک وقت تین بڑے جلسے وائی ایم سی اے گراؤنڈ ، قدوس صاحب عید گاہ ، شیواجی نگر کے عبدالباری گراؤنڈ میں منعقد ہوا کرتے تھے ۔ لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ کورونا وبا کی وجہ سے جلوس اور بڑے جلسوں پر حکومت نے پابندی عائد کی ہے ۔

افسر بیگ قادری نے کہا کہ 17 اکتوبر بروز سنیچر کو مختلف تنظیموں کے نمائندوں نے جشن عید میلاد کے سلسلے میں بنگلورو کے پولیس کمشنر کمل پنتھ سے ملاقات کی تھی ۔ کمل پنتھ نے کہا کہ تمام مذاہب کے تہواروں کے جلسے اور جلوسوں پر کورونا کی وجہ سے پابندی عائد کی گئی ہے ۔ لہذا اس بار عوام سے تعاون کی پولیس کمشنر نے درخواست کی ۔ افسر بیگ قادری نے کہا کہ حالات کو دیکھتے ہوئے اس بار حکومت نے صرف مسجدوں میں جشن میلاد منانے کی اجازت دی ہے ۔ لہذا مسجدوں میں سماجی فاصلے ، ماسک ، سنیٹائزر اور دیگر احتیاطی اقدامات اختیار کرتے ہوئے سیرت پاک کے جلسے منعقد کئے جائیں ۔ افسر بیگ قادری نے کہا کہ مسجدوں کے باہر یا اندر لوگوں کو کھانہ کھلانے کا نظم نہ بنائیں ۔

انہوں نے کہا کہ سڑکوں پر لائٹنگ ، جھنڈے ، سجاوٹ نہ کرنے کی بھی پولیس نے ہدایت دی ہے ۔ لہذا تمام جلوس کمیٹیاں اور خاص طور پر نوجوان حکومت کی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے اس جشن کو منائیں ۔ کسی بھی طرح کی شکایت کا موقع نہ دیں ۔ افسر بیگ قادری نے کہا کہ شر پسند عناصر مسلمانوں اور اسلام کو بدنام کرنے کیلئے بہانے کی تلاش میں رہتے ہیں ۔ لہذا عید میلاد کے موقع پر مسلم نوجوان صبر، سنجیدگی اور ذمہ داری کا مظاہرہ کریں ۔ مرکزی میلاد و سیرت کمیٹی کے ناظم نشر و اشاعت اعجاز احمد حسینی نے کہا کہ مذہب اسلام حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و سلم کے کردار سے پھیلا ہے ۔ مسلمان اس جشن کے موقع پر حضور صلی اللہ علیہ و سلم کے کردار اور سنتوں کا مظاہرہ کریں ۔ عید میلاد کے موقع پر غریبوں میں راشن تقسیم کریں ، پڑوسیوں کی مدد کریں ، مریضوں کی مدد کریں ، ضروت مندوں کیلئے خون کا عطیہ دیں ۔ غریب طلبہ کیلئے اسکالرشپ اسطرح کے فلاحی کام انجام دیتے ہوئے جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ و سلم منائیں ۔

اجلاس میں موجود مناہل تعلیمی ادارے کے نمائندے سلیم احمد نے کہا کہ مسجدوں کی کمیٹیاں کووڈ 19 کے اصولوں کے مطابق جلسے منعقد کریں ۔ عمر دراز افراد اور بچوں سے عاجزانہ طور پر درخواست کرتے ہوئے انہیں جلسوں سے دور رکھیں ۔ سنی جمعیت العلماء کے رکن امین اللہ خان قادری نے کہا کہ کورونا کی وبا کی وجہ سے اس سال عید الفطر اور عیدالاضحٰی گھروں میں رہ کر منائی گئی ہیں ۔ لہذا آنے والی عید میلاد بھی لوگ سادگی کے ساتھ گھروں میں رہ کر منائیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 19, 2020 11:34 PM IST