اپنا ضلع منتخب کریں۔

    رائچور کے معروف شاعر سید شاہ قاسم القادری شہمیری کا انتقال

    رائچور : کرناٹک کا رائچور شہر ایک اور معروف شاعر سے محروم ہوگیا ہے ۔

    رائچور : کرناٹک کا رائچور شہر ایک اور معروف شاعر سے محروم ہوگیا ہے ۔

    رائچور : کرناٹک کا رائچور شہر ایک اور معروف شاعر سے محروم ہوگیا ہے ۔

    • ETV
    • Last Updated :
    • Share this:
      رائچور : کرناٹک کا رائچور شہر ایک اور معروف شاعر سے محروم ہوگیا ہے ۔ سید شاہ قاسم القادری شہمیری طویل علالت کے بعد بدھ کی صبح دنیا سے رخصت ہوگئے ۔ قاسم القادری کےانتقال سے ادبی حلقوں میں رنج وغم کی لہردوڑ گئی۔ سید شاہ قاسم القادری شہمیری نے ہند و پاک کے کافی مشاعروں میں رائچور کی نمائندگی کی ۔
      شاہ قاسم قادری نے نعتیہ شاعری کے علاوہ ایک طویل عرصہ تک مزاحیہ شاعری بھی کی۔ نعتیہ شاعری میں نور تخلص رکھتے تھے جبکہ مزاحیہ شاعری میں ان کو ڈھکن تخلص سے شہرت حاصل تھی ۔ تاہم حج کی سعادت نصیب ہونے کے بعد انہوں نے مزاحیہ شاعری ترک کردی تھی اور صرف نعتیہ شاعری ہی کرتے تھے۔ان کا نعتیہ کلام فردوس سخن کی کافی پذیرائی کی جاچکی ہے ۔ایک زمانے میں ان کی مزاحیہ شاعری کی بڑی دھوم رہی۔ ان کا یہ مزاحیہ قطعہ آج بھی اہل ادب کی زبان پر ہے۔
      تخت نہ کوئی تاج رکھتا ہے
      پھر بھی عالی مزاج رکھتا ہے
      کیا سمجھتے ہوتم یہ ڈھکن کو
      خالی ڈبےکی لاج رکھتا ہے
      رائچور کے شکر باؤلی قبرستان میں سید شاہ قاسم القادری شہمیری کی تدفین عمل میں آئی۔ نماز جنازہ اور تدفین میں شہر کی اہم شخصیتوں ، شاعروں، ادیبوں، دانشوروں اور مشائخین نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ نماز جنازہ شہر کے معروف عالم دین مولانا سید محمد صفی حسینی اشرفی نے پڑھائی ۔
      First published: