உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    قبرستان سے 433 کروڑ روپے کا خزانہ برآمد ، محکمہ انکم ٹیکس کی ٹیم کے بھی اڑ گئے ہوش

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    حکمہ انکم ٹیکس نے 9 دنوں تک قبرستان میں کھدائی کی ، جس کے بعد اس کو وہاں سے کئی کلو سونا ، کروڑوں کے ہیرے اور کئی کروڑ کیش برآمد ہوا ہے ۔ محکمہ انکم ٹیکس کی جانچ فی الحال جاری ہے ۔

    • Share this:
      محکمہ انکم ٹیکس نے تمل ناڈو کے ایک قبرستان سے 433 کروڑ روپے کا خزانہ برآمد کیا ہے ۔ محکمہ انکم ٹیکس نے 9 دنوں تک قبرستان میں کھدائی کی ، جس کے بعد اس کو وہاں سے کئی کلو سونا ، کروڑوں کے ہیرے اور کئی کروڑ کیش برآمد ہوا ہے ۔ محکمہ انکم ٹیکس کی جانچ فی الحال جاری ہے ۔

      محکمہ انکم ٹیکس کو اطلاع ملی تھی کہ تمل ناڈو کے مشہور سرونا اسٹور ، لوٹس گروپ اور جی اسکاور نے چنئی میں ایک پراپرٹی خریدی ہے ۔ اس پراپرٹی کی قیمت 180 کروڑ روپے بتائی جارہی ہے اور اس کو کیش میں خریدا گیا ہے ۔

      محکمہ انکم ٹیکس کو خبر ملی تھی کہ اس ڈیل میں ٹیکس کی چوری کی گئی ہے ۔ پختہ جانکاری ملنے کے بعد محکمہ انکم ٹیکس نے ان کمپنیوں کے چنئی  اور کوئمبٹور کے 72 ٹھکانوں پر چھاپہ ماری کی ۔ اس چھاپہ ماری کی شروعات میں محکمہ انکم ٹیکس کو کچھ بھی ہاتھ نہیں لگا ، لیکن ایک مخبر کی اطلاع پر انہوں نے ایک قبرستان میں چھاپہ مارا اور وہاں سے انہیں جو ملا ، اس کو دیکھ کر سبھی کے ہوش اڑ گئے ۔

      بتایا جارہا ہے کہ گروپ کے مالکوں کو محکمہ انکم ٹیکس کے چھاپہ کی خبر پہلے ہی مل گئی تھی اور انہوں نے اپنا سارا خزانہ 28 جنوری کو ہی قبرستان میں چھپا کر رکھ دیا تھا ۔ قبرستان سے 12.53 کلوگرام سونا ، 626 کیرٹ ہیرے اور 25 کروڑ کیش برآمد ہوئے ہیں ۔
      First published: