ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

خاتون صحافی کے گال تھپتھپانے پر گورنر نے مانگی معافی، کہا آپ میری پوتی جیسی

چنئی۔ پریس کانفرنس کے دوران خاتون صحافی کے گال تھپتھپانے پر تنازعات کی زد میں آئے تمل ناڈو کے گورنر نے معافی مانگ لی ہے۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
خاتون صحافی کے گال تھپتھپانے پر گورنر نے مانگی معافی، کہا آپ میری پوتی جیسی
راج بھون میں خاتون کے رخسار کو تھپتھپاتے ان کی یہ تصویر وائرل ہو گئی ہے۔

چنئی۔ پریس کانفرنس کے دوران خاتون صحافی کے گال تھپتھپانے پر تنازعات کی زد میں آئے تمل ناڈو کے گورنر نے معافی مانگ لی ہے۔ خاتون صحافی کو خط لکھ کر انہوں نے اس معاملہ میں صفائی دی۔ انہوں نے لکھا کہ سوال کی تعریف کرتے ہوئے انہوں نے ایسا کیا۔


گورنر نے خط میں لکھا کہ آپ کے گال کو میں نے ایسے ہی تھپتھپایا ہے جیسا میں اپنی پوتی کے گال کو تھپتھپاتا ہوں۔ ایسا میں نے بطور صحافی آپ کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے تعریف میں کیا کیونکہ میں بھی چالیس سالوں تک اس پیشہ کا حصہ رہا ہوں۔ آپ کے ای میل سے میں سمجھ سکتا ہوں کہ آپ کو اس واقعہ سے تکلیف ہوئی۔ میں اظہار افسوس کرتا ہوں اور آپ کی تکلیف کو کم کرنا چاہتا ہوں۔


بتا دیں کہ تمل ناڈو کے گورنر بنواری لال پروہت ایک خاتون صحافی کے رخسار کو تھپتھپانے کی وجہ سے تنازعات میں پھنس گئے تھے۔ راج بھون میں خاتون کے رخسار کو تھپتھپاتے ان کی یہ تصویر وائرل ہو گئی ۔ یہ واقعہ اس وقت ہوا جب 78 سالہ گورنر راج بھون میں بھیڑ بھاڑ والے پریس کانفرنس ہال سے جا رہے تھے۔


خاتون صحافی لکشمی سبرمنیم دی ویک میں کام کرتی ہیں۔ اس واقعے کے بعد انہوں نے ٹویٹ کیا، "میں نے پریس کانفرنس کے اختتام پر تمل ناڈو کے گورنر بنواری لال پروہت سے ایک سوال پوچھا۔ انہوں نے بغیر میری اجازت کے میرے گال پر تھپتھپایا۔ حزب اختلاف ڈی ایم کے نے اس واقعہ کو ایک آئینی پوسٹ پر بیٹھے ہوئے فرد کے ' وقار کے خلاف' کام قرار دیا۔



ڈی ایم کے کی راجیہ سبھا رکن كنی موزی نے ٹویٹ کیا، "اگر شک نہیں بھی کیا جائے، تب بھی عوامی عہدے پر بیٹھے ایک شخص کو اس کی عزت سمجھنی چاہئے اور ایک خاتون صحافی کے ذاتی عضو کو چھو کر وقار کا مظاہرہ نہیں کیا یا کسی بھی انسان کے تئیں دکھایا جانے والا احترام نہیں دکھایا۔ "



ڈی ایم کے ایگزیکٹو صدر ایم کے اسٹالن نے اپنے ٹویٹر ہینڈل پر لکھا، "یہ نہ صرف بدقسمتی کی بات ہے بلکہ ایک آئینی عہدہ پر بیٹھے شخص کی غلط حرکت ہے۔"

 
First published: Apr 18, 2018 11:30 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading