உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آندھرا پردیش: ٹیچر پرطالبہ سے عصمت دری اوراسقاط حمل کا الزام، ننگا کرکے سڑک پرگھمایا گیا

    استاد پر شاگردہ سے عصمت دری کا الزام۔ علامتی تصویر

    استاد پر شاگردہ سے عصمت دری کا الزام۔ علامتی تصویر

    رام بابو نامی ٹیچرپرالزام ہے کہ دو سال سے طالبہ کا جنسی استحصال کیا اور حاملہ ہونے پر اسقاط حمل کے لئے دوا دے دی، جس کے بعد گھروالوں کو پتہ چلا۔

    • Share this:
      ایک طالبہ کے ساتھ مبینہ عصمت دری کے الزامات میں آندھرا پردیش کے ایک ٹیچرکو پیٹا گیا اورننگا کرکے سڑک پرگھمایا گیا۔ یہ واقعہ آندھرا پردیش کے مغربی گوداوری ضلع کے ایلرو قصبے کا ہے۔ وہاں سے گزرنے والے لوگوں نے اس کا ویڈیو بنا لیا۔ ویڈیو میں نظرآرہا ہے کہ لوگ 40 سال کے ایک آدمی کو بھیڑبھاڑ والی سڑک پرگھما رہے ہیں۔

      رام بابو نام کا یہ شخص اسکول میں انگریزی پڑھا تا ہے۔ الزام ہے کہ وہ گزشتہ دو سال سے طالبہ کا جنسی استحصال کررہا تھا۔ طالبہ کی اس وقت عمر 18 سال ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ جب طالبہ حاملہ ہوگئی، تواس نے اسقاط حمل کے لئے دوا دے دی۔

      دوا کھانے کے بعد طالبہ کو کافی خون نکلنے لگے اوراس کے اہل خانہ کو پتہ لگا، جس کے بعد پورا معاملہ سامنے آیا۔ اس سے ناراض اہل خانہ نے ٹیچرکو پکڑا، اسے پیٹا اورننگا کرکے پولیس اسٹیشن تک لے گئے۔ ویڈیو میں نظرآرہا ہے کہ دو لوگ ٹیچرکا ہاتھ پکڑ کر اسے پولیس اسٹیشن لے کرجارہے ہیں۔

      پولیس اسٹیشن میں اسے ایک تولیا اورایک شرٹ دی گئی ہے تا کہ وہ اپنے جسم کوچھپا سکے۔ اس کے بعد پولیس اسٹیشن میں اس سے پوچھ گچھ کی گئی۔ پولیس نے اس کے خلاف معاملہ درج کرکے گرفتار کرلیا ہے۔
      First published: