ہوم » نیوز » وطن نامہ

لوگوں کی پرائیویٹ باتیں سنتی تھی یہ میسیجنگ ایپ، Google نے پلے اسٹور سے ہٹایا

9ٹو5 گوگل رپورٹ میں جمعے کو بتایاگیا کہ جن لوگوں نے یہ ایپ انسٹال کررکھا ہے ان کاڈیٹا محفوظ نہیں ہے کیونکہ UAE کے ذ ریعے مبینہ طور پر ٹوٹاک کا استعمال ہر طرح کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کیلئے کیا جارہا ہے۔

  • Share this:
لوگوں کی پرائیویٹ باتیں سنتی تھی یہ میسیجنگ ایپ، Google  نے پلے اسٹور سے ہٹایا
9ٹو5 گوگل رپورٹ میں جمعے کو بتایاگیا کہ جن لوگوں نے یہ ایپ انسٹال کررکھا ہے ان کاڈیٹا محفوظ نہیں ہے کیونکہ UAE کے ذ ریعے مبینہ طور پر ٹوٹاک کا استعمال ہر طرح کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کیلئے کیا جارہا ہے۔

دنیا کے سب سے بڑے سرچ انجن گوگل  (search engine google) نے مشہور میسیجنگ ایپ ٹوٹاک (ToTok) کو ایک مرتبہ پھر پلے اسٹور سے ہٹا دیا ہے۔ یہ دعویٰ کیا جارہاتھا کہ اس کا استعمال متحدہ عرب امارات (UAE)  حکومت کے ذریعے نگرانی کیلئے کیا جارہا ہے۔ ایپ کو اس سے پہلے دسمبر میں ایپل کے ایپ اسٹور اور گوگل کے پلے اسٹور سے ہٹایا گیاتھا۔


9ٹو5 گوگل رپورٹ میں جمعے کو بتایاگیا کہ جن لوگوں نے یہ ایپ انسٹال کررکھا ہے ان کاڈیٹا محفوظ نہیں ہے کیونکہ UAE  کے ذ ریعے مبینہ طور پر ٹوٹاک کا استعمال ہر طرح کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کیلئے کیا جارہا ہے۔




خفیہ ایجنسیوں سے واقف امریکی افسران کے مطابق  یہ ایپ جو کہ ٹیلیگرام اور سگنل (ایپ) کی طرح کام  کرتا ہے۔ اسے مڈل ایسٹ، مشرق وسطی ، یورپ ، ایشیاء ، افریقہ اور شمالی امریکہ میں اینڈرائیڈ اور آئی او ایس ڈیوائس پر لاکھوں مرتبہ ڈاؤن لوڈ کی گیا ہے۔

نیویارک ٹائمز کے ذریعے کی گئی ایک  تحقیق میں پایا گیا ہے کہ ٹوٹاک نامی ایک ایپ کو بریز ہولڈنگ نامی کمپنی نے بنایا ہے جو ابوظہبی میں قائم سائبر انٹلیجنس اور ہیکنگ کمپنی ڈارک میٹر سے وابستہ ہے۔ ڈارک میٹر پہلے ہی ممکنہ سائبر کرائم کی وجہ سے ایف بی آئی کی جانچ کے گھیرے میں ہے۔
First published: Feb 16, 2020 01:21 PM IST