ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

لوک سبھا انتخابات میں بانٹے تھے روپے ، عدالت نے خاتون ممبر پارلیمنٹ کو سنائی چھ ماہ کی سزا

Cash-For-Votes Case: ملوت کویتا کو 2019 کے لوک سھا انتخابات کے دوران ووٹ کیلئے رشوت دینے کا قصوروار پایا گیا ہے ۔ انہیں چھ مہینے قید کی سزا سنائی گئی ہے ۔

  • Share this:
لوک سبھا انتخابات میں بانٹے تھے روپے ، عدالت نے خاتون ممبر پارلیمنٹ کو سنائی چھ ماہ کی سزا
لوک سبھا انتخابات میں بانٹے تھے روپے ، عدالت نے خاتون ممبر پارلیمنٹ کو سنائی چھ ماہ کی سزا

حیدرآباد : الیکشن کے دوران کئی مرتبہ ممبر پارلیمنٹ پر روپے دے کر ووٹ خریدنے کے الزامات لگے ہیں ، لیکن ملک میں پہلی مرتبہ ان الزامات کو لے کر ممبر پارلیمنٹ کو عدالت سے سزا سنائی گئی ہے ۔ ووٹروں کو رشوت دینے کے الزام میں تلنگانہ راشٹر سمیتی کی ممبر پارلیمنٹ ملوت کویتا کو نام پلی کی ایک خصوصی سیشن عدالت نے قصوروار ٹھہرایا ہے ۔ کویتا تلنگانہ کے محبوب آباد سے ممبر پارلیمنٹ ہیں ۔ ان کی ایک ساتھی کو بھی اس کیس میں عدالت نے قصوروار پایا ہے اور انہیں بھی سزا سنائی گئی ہے ۔


ملوت کویتا کو 2019 کے لوک سھا انتخابات کے دوران ووٹ کیلئے رشوت دینے کا قصوروار پایا گیا ہے ۔ انہیں چھ مہینے قید کی سزا سنائی گئی ہے ۔ ساتھ ہی 10 ہزار روپے کا جرمانہ بھی لگایا گیا ہے ۔ حالانکہ ملزمین کو ہائی کورٹ میں اپیل دائر کرنے کیلئے ضمانت دیدی گئی ہے ۔ کہا جارہا ہے کہ اس معاملہ میں کویتا جلد ہی تلنگانہ ہائی کورٹ میں اپیل کریں گی ۔


کیسے پکڑی گئیں کویتا؟


یہ واقعہ پہلی مرتبہ اس وقت سامنے آیا جب 2019 لوک سبھا انتخابات کے دوران ریوینیو افسران نے ممبر پارلیمنٹ کے ساتھی شوکت علی کو روپے تقسیم کرتے ہوئے پکڑ لیا ۔ کویتا کے حق میں ووٹ مانگ رہے یہ لوگ برگم پہاڑ تھانہ حلقہ میں ووٹروں کو 500 روپے دے رہے تھے ۔ شوکت علی کو پولیس نے رنگے ہاتھوں پکڑا اور رشوت کے معاملہ میں پہلے ملزم کے طور پر نامزد کیا جبکہ کویتا کو دوسرا ملزم بنایا گیا تھا ۔

عدالت میں ثبوت

پولیس نے سماعت کے دوران فلائنگ اسکواڈ کے افسران اور ان کی رپورٹ کو ثبوت کے طور پر پیش کیا ۔ پوچھ گچھ کرنے پر علی نے بھی اعتراف جرم کرلیا اور دعوی کیا کہ اس نے کویتا کے کہنے پر پیسے تقسیم کئے ۔

بتادیں کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب تلنگانہ میں کسی ممبر پارلیمنٹ کو خصوصی سیشن عدالت نے جرم کرنے پر سزا سنائی ہے ۔ اس سے پہلے بی جے پی ممبر اسمبلی راجا سنگھ اور ٹی آر ایس ممبر اسمبلی دانم ناگیندر کو بھی جیل کی سزا سنائی گئی تھی ۔ راجا سنگھ پر بیلارم پولیس اسٹیشن میں ایک پولیس اہلکار کے ساتھ مارپیٹ کرنے کا معاملہ درج کیا گیا تھا جبکہ ناگیندر کو بنجارا ہلس پولیس اسٹیشن میں ایک سرکاری افسر کے ساتھ مار پیٹ کرنے کیلئے اپنے ساتھی کو دھوکہ دینے کیلئے قصوروار ٹھہرایا گیا تھا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 25, 2021 01:20 PM IST