ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

مسلم ریزرویشن پر سوال کرنے پر بھڑگ گئے چندر شیکھر راو، بولے بیٹھو، تمہارے باپ کو بھی سمجھاوں گا

كے سی آر کی ریلی میں کسی شخص نے اس بل سے متعلق سوال پوچھ لیا تو كےسی آر بھڑک گئے

  • Share this:
مسلم ریزرویشن پر سوال کرنے پر بھڑگ گئے چندر شیکھر راو، بولے بیٹھو، تمہارے باپ کو بھی سمجھاوں گا
کے چندرشیکھر راؤ

تلنگانہ کے وزیر اعلیٰ کے چندرشیکھر راؤ کی پارٹی تلنگانہ راشٹر سمیتی کی حکومت نے گزشتہ سال اپریل میں جس تیزی سے مسلمانوں کو تعلیم اور ملازمت میں 12 فیصد ریزرویشن دینے والا بل پاس کیا تھا، اسے دیکھ کر یہ کہنا درست ہے کہ یہ بل ابھی تک کسی مقام پر نہیں پہنچا ہے۔ تلنگانہ کے مسلمانوں کو اب بھی اس کا انتظار ہے۔


جمعرات کو كے سی آر کی ریلی میں کسی شخص نے اس بل سے متعلق سوال پوچھ لیا تو كےسی آر بھڑک گئے۔ نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق، جب کے سی آر کی ریلی میں کسی شخص نے ان سے پوچھ لیا کہ مسلمانوں کو 12 فیصد ریزرویشن دینے کا جو وعدہ انہوں نے کیا تھا، اس کا کیا ہوا تو اس پر کے سی آر بھڑک گئے اور بولے 12 فیصد ہی بولے، خاموش بیٹھو، تمہارے باپ کو بلا کر بھی بتائیں گے۔ '

کے سی آر نے اس شخص سے کہا، 'کیا تم یہاں کوئی تماشہ کر رہے ہو؟ سب سے پہلے بیٹھ جاؤ اور پھر سب کچھ بتائیں گے۔ '


ٹائمس آف انڈیا کی خبر کے مطابق،  بعد میں چندر شیکھر راو نے اپنے خطاب میں کہا کہ حکومت نے مسلمانوں کو 12 فی صد ریزرویشن دینے کا قدم اٹھایا ہے لیکن مرکزی حکومت سے تعاون نہیں مل پا رہا ہے۔ ہم نے سنجیدہ قدم اٹھایا ہے۔ ہم کڑی محنت کر کے اس بات کو یقینی بنانا چاہتے ہیں کہ مرکز میں غیر کانگریسی اور غیر بی جے پی حکومت آئے اور  مسلمانوں کو ریزرویشن ملے۔



بتا دیں کہ تلنگانہ میں پہلے سے ہی تعلیم اور ملازمت کے لئے 4 فیصد ریزرویشن مسلمانوں کو ملا ہوا تھا۔ لیکن پچھلے سال کے سی آر کی حکومت نے  سپریم کورٹ کی حد سے بھی زیادہ بڑھا کر اسے 12 فیصد کر دیا۔

 
First published: Nov 30, 2018 03:10 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading