ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کے چندر شیکھر راو کے تیسرے مورچہ کے جھانسے میں نہ آئیں پارٹیاں: کانگریس

تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری شرون دوساجو نے ممتا بنرجی، ایم کے اسٹالن، نوین پٹنائک اور دیگر مقامی رہنماؤں کو خط لکھ کر کہا ہے کہ انہیں تلنگانہ کے وزیر اعلی کے چندر شیکھر راؤ کے تیسرے محاذ کے جھانسے میں نہیں آنا چاہئے۔

  • Share this:
کے چندر شیکھر راو کے تیسرے مورچہ کے جھانسے میں نہ آئیں پارٹیاں: کانگریس
تلنگانہ کے وزیر اعلیٰ کے چندرشیکھر راو، پی ٹی آئی، فائل فوٹو۔

حیدرآباد۔ عام انتخابات 2019 کی گھڑی جیسے جیسے قریب آتی جا رہی ہے ویسے ویسے ملک کے سیاسی درجہ حرارت میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ جہاں ایک طرف، کانگریس بھارتیہ جنتا پارٹی کے خلاف سیکولر پارٹیوں کو ایک متحدہ پلیٹ فارم پر لانے کی کوشش کر رہی ہے تو وہیں دوسری طرف، تلنگانہ راشٹر سیمتی کے سربراہ کے چندر شیکھر راو ایک وفاقی مورچہ بنانے میں مصروف عمل ہیں۔


اسی ضمن میں تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری شرون دوساجو نے ممتا بنرجی، ایم کے اسٹالن، نوین پٹنائک اور دیگر مقامی رہنماؤں کو خط لکھ کر کہا ہے کہ انہیں تلنگانہ کے وزیر اعلی کے چندر شیکھر راؤ کے تیسرے محاذ کے جھانسے میں نہیں آنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک سیاسی سازش ہے جو کے سی آر نے وزیراعظم نریندر مودی اور امت شاہ کے اشارہ پر رچی ہے۔


تلنگانہ کانگریس نے الزام لگاتے ہوئے لکھا ہے کہ کے سی آر کا وفاقی مورچہ ایک ڈھونگ یے اور یہ پی ایم مودی اور امت شاہ کے اشارہ پر رچی گئی سیاسی سازش ہے۔ دراصل، اسی دوران  کے سی آر نے حال کے دنوں میں ایک وفاقی محاذ بنانے سے متعلق اپنی کوشش تیز کر دی ہے۔ اسی ضمن میں کے سی آر نے 10 مئی کو حیدرآباد میں کئی علاقائی جماعتوں کے سربراہان کو دعوت نامہ بھی بھیجا ہے۔ ان میں ٹی ایم سی کی ممتا بنرجی ، ڈی ایم کے کے اسٹالن، بی جے ڈی کے نوین پٹنایک، ایس پی کے اکھلیش یادو اور جے ایم ایم رہنما ہیمنت سورین شامل ہیں۔


First published: May 05, 2018 11:13 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading