உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جانیں کرناٹک میں کتنی ہیں نشستیں، کتنے ووٹرز اور کتنی پارٹیاں

    کرناٹک کے وزیر اعلی سدارمیا: فائل فوٹو۔

    کرناٹک کے وزیر اعلی سدارمیا: فائل فوٹو۔

    یکم نومبر 1956 کو کرناٹک ریاست کا قیام عمل میں آیا تھا۔ آئیے، جانتے ہیں کہ کرناٹک میں کتنی نشستیں، کتنے ووٹرز اور کتنی پارٹیاں ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی۔ کرناٹک میں اسمبلی انتخابات کی تاریخ کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ 224 نشستوں کے لئے ووٹنگ 12 مئی کو ہوگی اور نتائج 15 مئی کو اعلان کیے جائیں گے۔ یہ پندرہویں اسمبلی کے لئے الیکشن ہوگا۔ موجودہ اسمبلی کی مدت کار 28 مئی 2018 کو ختم ہو جائے گی۔ یکم نومبر 1956 کو کرناٹک ریاست کا قیام عمل میں آیا تھا۔ آئیے، جانتے ہیں کہ کرناٹک میں کتنی نشستیں، کتنے ووٹرز اور کتنی پارٹیاں ہیں۔

      اسمبلی میں کل نشستیں - 224 (ایک نامزد نشست)۔

      کل ووٹر - 4.9 کروڑ (2013 کے انتخابات میں 4.3 کروڑ ووٹرز تھے)۔

      کرناٹک میں 15.4 لاکھ نوجوان ووٹر ہیں، جو گزشتہ انتخابات میں 7.2 لاکھ تھے۔ ان کی تعداد میں 113 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ وہیں، کرناٹک میں 4340  ٹرانس جینڈر ووٹرز بھی ہیں۔ ہر اسمبلی حلقہ میں اوسطا 2.2 لاکھ ووٹر ہیں۔ گزشتہ انتخابات میں، ہر اسمبلی میں 1.8 لاکھ اوسطا ووٹر تھے۔

      سب سے زیادہ ووٹر بنگلورو جنوب میں ہیں۔ یہ پانچ لاکھ ہیں۔ وہیں، سب سے کم ووٹر چکمنگلوراسمبلی نشست پر ہیں، جو 1.6 لاکھ ہیں۔

      کل آبادی - 61.1 کروڑ

      کل اضلاع - 30 اضلاع، 270 قصبے، 29406 گاؤں

      پچھلے انتخابات میں صورت حال

      دو ہزار تیرہ کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس نے 122 نشستیں حاصل کی تھیں، جبکہ بھارتیہ جنتا پارٹی (44) اور جنتا دل (سیکولر) نے چالیس۔

      گزشتہ انتخابات میں ووٹ شئیر

      بی جے پی 19.89 فیصد

      کانگریس 36.59 فیصد

      جے ڈی ایس 20.19 فیصد

      بی ایس پی 0.91 فیصد

      0.22 سی پی آئی ایم

      سی پی آئی 0.08 فیصد

      این سی پی 0.06 فیصد

      اس بار انتخابات میں کون کون سی پارٹیاں ہیں

      اس سال کرناٹک اسمبلی انتخابات میں اصل مقابلہ کانگریس، بی جے پی اور جے ڈی ایس کے درمیان ہوگا لیکن میدان میں کئی اور پارٹیاں بھی ہوں گی۔ عام آدمی پارٹی بھی ان انتخابات میں حصہ لے گی۔

      بڑی پارٹیاں- کانگریس، بھارتیہ جنتا پارٹی، جنتا دل سیکولر

      دیگر پارٹیاں۔ عام آدمی پارٹی، بی ایس پی، سی پی آئی (ایم)، سی پی آئی، این سی پی، جے ڈی یو، سماجوادی پارٹی، کرناٹک جنتا پارٹی، بی شری مولو کانگریس پارٹی۔

      مذہبی بنیاد پر کرناٹک

      ہندو 84 فیصد

      اسلام 12.92 فیصد

      1.87 عیسائی

      جین 0.72 فی صد

      بدھ 0.16 فیصد

      سکھ 0.05 فیصد

      دیگر 0.02 فیصد

      حال ہی میں کرناٹک کی سدارمیا حکومت نے ریاست کے لنگایتوں کو الگ مذہب کی منظوری دینے کی تجویز پاس کر کے اسے مرکزی حکومت کو بھیجا ہے۔ لنگایت ریاست میں سترہ فیصدی ووٹر ہیں۔
      First published: