ہوم » نیوز » No Category

انگریزی اورکنڑمیڈیم اسکولوں میں اردوکو تیسری زبان کےطورپرپڑھانے کا مطالبہ

ادارے کی بانی ماہ لقا مصطفی کے مطابق بچوں کوبھلے ہی انگریزی میڈیم میں پڑھائیں ، لیکن انہیں مادری زبان سےمحروم نہ رکھیں۔ لیکن افسوس کے اب بھی کرناٹک کے90سے زائدانگریزی میڈیم اسکولوں میں اردو کا نام ونشان تک نہیں ہے۔

  • ETV
  • Last Updated: Jan 13, 2017 08:45 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
انگریزی اورکنڑمیڈیم اسکولوں میں اردوکو تیسری زبان کےطورپرپڑھانے کا مطالبہ
ادارے کی بانی ماہ لقا مصطفی کے مطابق بچوں کوبھلے ہی انگریزی میڈیم میں پڑھائیں ، لیکن انہیں مادری زبان سےمحروم نہ رکھیں۔ لیکن افسوس کے اب بھی کرناٹک کے90سے زائدانگریزی میڈیم اسکولوں میں اردو کا نام ونشان تک نہیں ہے۔

بنگلورو : کرناٹک کے انگریزی اور کنڑمیڈیم اسکولوں میں اردو کوتیسری زبان کےطورپرپڑھایا جائے۔ اس سےاردو بولنےوالے بچوں کا تعلق اپنی مادری زبان سےقائم رہے گا۔ بنگلوروکےشانتی نکیتن اسکول میں یوم اردوکےموقع پرپرزور انداز میں یہ مطالبہ کیا گیا ۔

خیال رہے کہ بنگلورو کے وویک نگر میں واقع شانتی نکیتن اور چند دیگر اداروں میں اردو کوتیسری زبان کے طورپرپڑھایا جارہا ہے ، تاکہ بچے اپنی تہذیب اور تاریخ سےوابستہ رہیں۔ شانتی نکیتن ادارہ میں تعلیم کا میڈیم انگلش ہے ، لیکن اس ادارے میں بچوں کو تیسری زبان کے طورپر اردو پڑھائی جارہی ہے۔ ہرسال ادارے کے تحت یوم اردو کے موقع پر پروگرام کا انعقاد کیا جاتا ہے۔

ادارے کی بانی ماہ لقا مصطفی کے مطابق بچوں کوبھلے ہی انگریزی میڈیم میں پڑھائیں ، لیکن انہیں مادری زبان سےمحروم نہ رکھیں۔ لیکن افسوس کے اب بھی کرناٹک کے90سے زائدانگریزی میڈیم اسکولوں میں اردو کا نام ونشان تک نہیں ہے۔

یوم اردو کے موقع پراقلیتی کمیشن کے سکریٹری انیس سراج نے کہا کہ اردو کو تیسری زبان کے طورپرپڑھانےکے لیےحکم نامہ جاری کیا جاچکا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ کرناٹک میں سہ لسانی فارمولہ کےتحت اقلیتی طبقہ اپنی مادری زبان کو اختیارکرسکتا ہے۔ تعلیمی اداروں کو اس حکم پرعمل کرنا چاہئے۔

First published: Jan 13, 2017 08:45 PM IST