உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    WhatsApp کی نئی شروعات، مہاراشٹر اور کرناٹک میں 500 گاؤں لئے گود، جانیے کیا ہے کمپنی کا پلان

    واٹس ایپ ڈیجیٹل پیمنٹ کے لئے شروع کی گئی مہم۔

    واٹس ایپ ڈیجیٹل پیمنٹ کے لئے شروع کی گئی مہم۔

    واٹس ایپ کا کہنا ہے کہ وہ لاکھوں لوگوں کو اس مشن میں جوڑنے کی کوشش کررہا ہے۔ ہندوستان میں واٹس ایپ کے ہیڈ ابھیجیت بوس نے کہا کہ ڈیجیٹل پیمنٹ کے سسٹم میں 5000 لاکھ (500ملین) لوگوں کو جوڑنے کی تیاری ہے اور اسی سمت میں قدم آگے بڑھائے جارہے ہیں۔

    • Share this:
      واٹس ایپ ڈیجیٹل پیمنٹ کو لے کر بڑا قدم اُٹھانے جارہا ہے۔ واٹس ایپ نے کہا ہے کہ ڈیجیٹل پیمنٹ کو فروغ دینے کے لئے ہندوستان کے 500 گاوں کو گود لیا جائے گا۔ ان گاوں میں واٹس ایپ ڈیجیٹل پیمنٹ کے بارے میں بتائے گا، لوگوں میں شعوربیداری کی جائے گی اور ڈیجیٹل پیمنٹ پروموٹ کرے گا۔ واٹس ایپ فیس بک (جس کا نیا نام میٹا ہے) کی کمپنی ہے جو لوگوں کو مسیجنگ کی سہولت دیتی ہے۔ ہندوستان میں واٹس ایپ کے 50 کروڑ سے زیادہ یوزرس ہیں۔

      واٹس ایپ نے کہا ہے کہ شروع میں وہ پائلٹ پروجیکٹ شروع کرے گا جس م یں وہ گاوں کو گود لے کر ڈیجیٹل پیمنٹ کو فروغ دیا جائے گا۔ واٹس ایپ شروع میں 500 گائوں میں یہ کام شروع کرے گا۔ پیش رفت کی بنیاد پر شعور بیداری کے کام کو فروغ دیا جائے گا۔ واٹس ایپ نے کہا ہے کہ شروع میں وہ مہاراشٹر اور کرناٹک میں 500 گاوں میں یہ کام شروع کرے گا۔ واٹس ایپ نے اس کے لئے ’پیمنٹ آن واٹس ایپ‘ کی سروس شروع کی ہے۔ یعنی واٹس ایپ سے ویسے ہی پیمنٹ کرسکتے ہیں جیسے گوگل پے یا فون پے سے کرتے ہیں۔

      واٹس ایپ کا پلان
      میٹا نے ہندوستان میں ایک سالانہ ایونٹ میں اس بات کا اعلان کیا۔ اس ایونٹ میں بتایا گیا ہے کہ میٹا کے ایپ سے سوشل اور اکنامک سیکٹر میں کتنا مثبت اثر پڑا ہے۔ میٹا کی میسنجر کمپنی واٹس ایپ کا پورا دھیان اس بات پر ہے کہ لوگوں میں ڈیجیٹل پیمنٹ کے تئیں شعور پیدا کرکے آن لائن یا انٹرنیٹ ٹرانزکشن کی جانب سے سرگرم کیا جائے۔ اس سمت میں حکومت بھی کوشش کررہی ہے جس سے کہ کیش پر لوگوں کا انحصار کم ہو اور ڈیجیٹل پیمنٹ سے کام چلایا جائے۔

      واٹس ایپ کا کہنا ہے کہ وہ لاکھوں لوگوں کو اس مشن میں جوڑنے کی کوشش کررہا ہے۔ ہندوستان میں واٹس ایپ کے ہیڈ ابھیجیت بوس نے کہا کہ ڈیجیٹل پیمنٹ کے سسٹم میں 5000 لاکھ (500ملین) لوگوں کو جوڑنے کی تیاری ہے اور اسی سمت میں قدم آگے بڑھائے جارہے ہیں۔ بوس نے کہا کہ واٹس ایپ کا استعمال بہت آسان ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو ی پی آئی پیمنٹ کرنے میں کوئی پریشانی نہیں آئے گی۔ بس موبائل فون کے ذریعے یہ کام ہوجانا ہے۔

      WhatsApp کا ڈیجیٹل پیمنٹ جشن
      WhatsApp کی اس مہم کا نام ڈیجیٹل پیمنٹ جشن رکھا گیا ہے جو ملک میں 15 اکتوبر کو شروع ہوچکی ہے۔ اس کی شروعات کرناٹک کے مانڈیا ضلع کے کیاتھن ہللی گاوں سے کی گئی ہے۔ اس گاوں کے لوگ پہلے سے ہی ڈیجیٹل پیمنٹ کے بارے میں تھوڑی بہت جانکاری رکھتے تھے۔ انہیں یو پی آئی میں سائن اَپ، یو پی آئی اکاونٹ کی سیٹنگ اور سیفٹی ٹپس کے بارے میں جانکاری تھی۔ واٹس ایپ کے ذریعے کیسے پیمنٹ کو فروغ دیا جاسکتا ہے، اس کے بارے میں اُنہیں پائلٹ پروجیکٹ کے تحت جانکاری دی گئی ہے۔ اس کا فائدہ یہ ہوا کہ اس گاوں کے لوگ اب واٹس ایپ سے بھی ڈیجیٹل پیمنٹ شروع کرچکے ہیں۔

      ’بزنس اسٹینڈرڈ‘ کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے، واٹس ایپ نے کہا ہے کہ مانڈیا ضلع کے اس گاوں میں لوگ اب کرانہ دکان سے لے کر بیوٹی پارلر اور چھوٹے سے لے کر درمیانی سطح کے بزنس میں ’پیمنٹ آن واٹس ایپ‘ سے ٹرانزکشن کررہے ہیں۔ ایک دکاندار کا کہنا ہے کہ گاوں کے لوگ زیادہ دکان پر نہیں آتے بلکہ واٹس ایپ پر سامان کی لسٹ بھیج دیتے ہیں اور گھر کا لوکیشن ڈال دیتے ہیں۔ دکان سے اُس لوکیشن پر سامان پہنچادیا جاتا ہے اور پیمنٹ بھی واٹس ایپ سے ہی لے لیا جاتا ہے۔



      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: