உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    World Cancer Day: کیسے پہچانیں اپنے جسم میں جان لیوا کینسر کی دستک

    World Cancer Day

    World Cancer Day

    World Cancer Day: ۔ ہر سال تمباکو 3500 سے زیادہ زائد افراد کی جان لے رہا ہے۔ ساتھ ہی، ICMR-NCDIR نیشنل کینسر رجسٹری پروگرام کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ 2020 میں کینسر میں مبتلا مریضوں کی سالانہ تعداد 14 لاکھ تک پہنچ چکی ہے اور اگر یہی صورتحال رہی تو 2025 تک ہمارے کینسر کے مریضوں کی تعداد ملک میں سالانہ 15.7 لاکھ تک پہنچ سکتی ہے۔

    • Share this:
      World Cancer Day: انڈیا اگینسٹ کینسر نامی تنظیم کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ ہندوستان میں بچے دانی کے کینسر سے ہر آٹھ منٹ میں ایک عورت کی موت ہو جاتی ہے۔ اپنے ہی ملک میں چھاتی کے کینسر سے متاثر ہر دو خواتین میں سے ایک اپنی جان گنوا دیتی ہے۔ ہر سال تمباکو 3500 سے زیادہ  زائد افراد کی جان لے رہا ہے۔ ساتھ ہی، ICMR-NCDIR نیشنل کینسر رجسٹری پروگرام کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ 2020 میں کینسر میں مبتلا مریضوں کی سالانہ تعداد 14 لاکھ تک پہنچ  چکی ہے اور اگر یہی صورتحال رہی تو 2025 تک ہمارے کینسر کے مریضوں کی تعداد ملک  میں سالانہ 15.7 لاکھ تک پہنچ سکتی ہے۔

      میکس انسٹی ٹیوٹ آف کینسر کیئر میں میڈیکل آنکولوجی ڈیپارٹمنٹ کے پرنسپل ڈائریکٹر پدم شری ڈاکٹر پرمود کمار جولکا  (Padmashree Dr. Pramod Kumar Julka)  بتاتے ہیں کہ کینسر ایک خطرناک بیماری ہے جو طرز زندگی، کھانے کے رویے اور وائرس سے چڑے ہیں۔ ہمارے ملک میں اس تیزی سے پھیلنے والی بیماری کو صرف پرائمری اور سیکنڈری  پریوینشن کے ذریعے ہی روکا جا سکتا ہے۔ بنیادی روک تھام کے تحت حکام کو ایسی مصنوعات پر پابندی لگانا ہو گی، جو کینسر کی بیماری کا باعث بنتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ،  سیکنڈری  پریوینشن کے ذریعے، ہمارے جسم میں ظاہر ہونے والی علامات کی مدد سے، ہم کینسر کو بہت ابتدائی مرحلے میں پکڑ سکتے ہیں اور اس کا علاج کروا سکتے ہیں۔

      کینسر کو کیسے پہچانا جائے
      چھاتی کا کینسر  (Breast Cancer): ڈاکٹر پرمود کمار جولکا کی صلاح  ہے کہ 20 سے 30 سال کی خواتین کو اپنے سینوں کا خود معائنہ کرنا چاہیے۔ چھاتی میں بغیر درد کے گانٹھ ہو، نپل سے کچھ خون یا پانی خارج ہو رہا ہو، نپل اندر کی طرف دھنس گیا ہو، دونوں چھاتی کے سائز میں فرق ہو، چھاتی میں سوجن ہو، گلے یا بغل میں گانٹھ تو یہ سب چھاتی کے کینسر کی علامات ہو سکتی ہیں۔

      رحم کا کینسر (Uterine Cancer): بچہ دانی یا رحم کا کینسر وائرس سے پیدا ہونے والا کینسر ہے۔ اگر خواتین کی ماہواری معمول سے زیادہ دیر تک جاری رہے تو سیکس کے بعد خون آنا، گندے پانی کا اخراج، دو ماہواری کے درمیان اچانک خون آنا، پیٹ کے نچلے حصے میں درد ہونا وغیرہ علامات ظاہر ہو سکتی ہیں۔

      سروائیکل کینسر (Cervical Cancer): سیکس کے دوران خون آنا، بے قاعدہ اور غیر معمولی خون بہنا، دو باقاعدہ ادوار کے درمیان خون آنا،  مین پوز کے بعد خون آنا، ماہواری کے علاوہ پیٹ میں غیر معمولی درد، گاڑھا، بدبو دار اندام نہانی خارج ہونا، پیشاب میں جلن یا درد اس کی ابتدائی علامات ہو سکتی ہیں۔
      منہ کا کینسر (Oral Cancer): منہ کا کوئی چھالا طویل عرصے سے ٹھیک نہیں ہو رہا ہے۔ ہونٹوں، مسوڑھوں، گالوں کے اندرونی حصے میں دھبے یا زخم ہیں۔ بلا وجہ منہ میں درد رہتا ہے۔ منہ میں سفید یا سرخ دھبے ہوتے ہیں اور ان سے مسلسل خون آتا ہے۔ چہرے کا کچھ حصہ اچانک بے حس ہو جاتا ہے اور گلے میں درد ہوتا ہے۔ اگر بولنے، چبانے یا نگلنے میں دشواری ہو یا اچانک آواز میں تبدیلی آجائے تو یہ سب منہ کے کینسر کی علامات ہو سکتی ہیں۔

      پھیپھڑوں کا کینسر (lung cancer): پھیپھڑوں کے کینسر میں خلیوں کی بے قابو نشوونما کی وجہ سے ٹیومر بنتا ہے۔ ابتدائی علامات میں مسلسل کھانسی، کھانسی سے خون آنا، سینے میں درد، کھردرا پن، مسلسل سر درد، اور وزن میں غیر واضح کمی شامل ہیں۔ اگر پھیپھڑوں کے کینسر کا بروقت پتہ چل جائے تو علاج ممکن ہے۔

      پروسٹیٹ کینسر (Prostate Cancer): پروسٹیٹ کینسر کی علامات میں خون کے ساتھ بار بار پیشاب آنا اور جلنا، پیشاب کا کم بہاؤ، کمر کے نچلے حصے میں درد، ہڈیوں میں درد، بھوک میں کمی، وزن میں غیر واضح کمی، اور انزال کے دوران درد شامل ہیں۔ جب پروسٹیٹ کینسر کا جلد پتہ چل جاتا ہے، تو کامیاب علاج کا امکان ہوتا ہے۔

      گردے کا کینسر (Kidney Cancer): جیسے جیسے گردے میں کینسر کی رسولی بڑھ جاتی ہے، علامات ظاہر ہونے لگتی ہیں۔ گردے کے کینسر کی ابتدائی علامات میں خون کے ساتھ پیشاب، پیٹ میں گانٹھ، بھوک کا نہ لگنا، بہت زیادہ تھکاوٹ، جسم میں درد، ہیموگلوبن کا کم ہونا، پاؤں اور ٹخنوں کا سوجن، سانس لینے میں دشواری، مسلسل بخار وغیرہ شامل ہیں، گردے کے کینسر کی علامات ہوسکتی ہیں۔

      دماغی کینسر(Brain Cancer): متلی، قے، دورے، بولنے میں دشواری، چہرے پر بے حسی، جسم میں ایٹھن، باتوں کو دیر سے سمجھنا، کمزوری اور تھکاوٹ، بہرا پن، دوہرا نظر آنا اور ڈپریشن دماغی کینسر کی علامات ہوسکتی ہیں۔

      جگر کا کینسر liver cancer): بھوک میں کمی، وزن میں کمی، پیٹ کے اوپری حصے میں درد رہنا، کمزوری اور تھکاوٹ، پیٹ میں سوجن رہنا، پیلیا ہونا  اور پاخانہ  سفید ہونا وغیرہ جگر کے کینسر کی علامات ہوسکتی ہیں۔

      پیٹ کا کینسر (Stomach Cancer) :  کم کھانے کے باوجود پیٹ بھرا محسوس ہونا، بار بار ڈکارنا، نگلنے میں دشواری، سینے میں مسلسل جلن، ہاضمے میں دشواری، پیٹ اور سینے کی ہڈیوں میں درد، ہیموگلوبن میں اچانک کمی، کالے رنگ کا پاخانہ یا پاخانے میں خون، تھکاوٹ شامل ہیں۔ بھوک میں کمی، وزن میں کمی، وغیرہ۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: