ایس پی ممبر اسمبلی نے رام گوپال یادو کے خلاف کھولا محاذ، لگائے سنگین الزام

ایٹہ۔ سماج وادی پارٹی(ایس پی) میں جاری آپسی جھگڑے کے درمیان ایٹہ صدر سے پارٹی کے رکن اسمبلی آشیش یادو نے آج پارٹی کے جنرل سکریٹری اور راجیہ سبھا رکن پروفیسر رام گوپال یادو کے خلاف مورچہ کھول دیا۔

Sep 22, 2016 07:48 PM IST | Updated on: Sep 22, 2016 07:48 PM IST
ایس پی ممبر اسمبلی نے رام گوپال یادو کے خلاف کھولا محاذ، لگائے سنگین الزام

ایٹہ۔ سماج وادی پارٹی(ایس پی) میں جاری آپسی جھگڑے کے درمیان ایٹہ صدر سے پارٹی کے رکن اسمبلی آشیش یادو نے آج پارٹی کے جنرل سکریٹری اور راجیہ سبھا رکن پروفیسر رام گوپال یادو کے خلاف مورچہ کھول دیا۔ مسٹر یادو نے ایس پی کے جنرل سکریٹری پر مسٹر ملایم سنگھ یادو کو گمراہ کرنے اور بہوجن سماج پارٹی(بی ایس پی)کے دور اقتدار میں اہم عہدوں پر تعینات افسروں کو عہدے دلا کر اپنے حامیوں سے غیر قانونی کاموں ،زمینوں پر قبضے ،غیر قانونی شراب کی اسمگلنگ وغیرہ کروانے کے سنگین الزام لگائے۔ انہوں نے ایس پی کارکنان سے پروفیسر یادو کی باتوں میں نہ آنے کی بھی اپیل کی۔ایس پی رکن اسمبلی کے والد اور قانون ساز اسمبلی کے چیئرمین رمیش یادو ملایم سنگھ یادو کے کافی قریبی تصور کئے جاتے ہیں۔

ایٹہ صدر کے رکن اسمبلی آشیش یادو نے آج یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ مسٹر رام گوپال یادو نیتا جی(ملایم سنگھ یادو)کو گمراہ کرکے اپنے افسروں کی تقرری کروا کرمتوازی حکومت چلا رہے ہیں۔ ایس پی کے لوگ پارٹی میں ملایم سنگھ یادو،شیوپال یادو اور اکھیلیش یادو کے علاوہ کسی دیگر کی بات نہیں سنیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی میں صرف ایک ہی دھڑا ہے وہ ہے ملایم سنگھ،شیو پال یادو اور اکھیلیش یادو کا ۔ایس پی کے متعدد رہنماؤں کی جانچ چل رہی ہے اس میں جو بھی قصوروار پایا جائے گا چاہے اس میں میں ہی کیوں نہ ہوں،اس کے خلاف کارروائی ہوگی۔

ایس پی رکن اسمبلی مسٹر یادو نے کہا کہ پروفیسر صاحب نے ایٹہ ،اٹاوہ،مین پوری،فرخ آباد،فیروزآباد،آگرہ،علی گڑھ،کاس گنج،میرٹھ،غازی آباد، اور نوئیڈا میں اپنے مرضی کے افسروں کی تقرری نیتا جی کو گمراہ کرکے کروائی تاکہ ان کے حاشیہ بردار غیر قانونی کاموں اور بیش قیمت زمینوں پر قبضہ کرکے غیر قانونی شراب کی اسمگلنگ وغیرہ آسانی سے کرسکیں۔ انہوں نے کہا کہ 2017 انتخابات میں اکھیلیش یادو کے نام پر ہی لڑاجائےگا اور وہی وزیراعلی ہوں گے۔

Loading...

Loading...