فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی سے دوسرے دن بھی سی بی آئی کی پوچھ گچھ

نئی دہلی۔ متنازعہ آگسٹا ہیلی کاپٹر سودا معاملے میں پوچھ گچھ کے لئے فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی آج صبح پھر مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے صدر دفتر پہنچے۔

May 03, 2016 07:32 PM IST | Updated on: May 03, 2016 07:33 PM IST
فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی سے دوسرے دن بھی سی بی آئی کی پوچھ گچھ

نئی دہلی۔  متنازعہ آگسٹا ہیلی کاپٹر سودا معاملے میں پوچھ گچھ کے لئے فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی آج صبح پھر مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے صدر دفتر پہنچے۔ سی بی آئی کا ان سے پوچھ گچھ کا یہ دوسرا دن ہے۔ مسٹر تیاگی سے سی بی آئی کے حکام نے کل تقریبا پورے دن پوچھ گچھ کی تھی اور انہیں چھتیس ارب روپے کے اس مبینہ اسکینڈل کےسلسلے میں آج پھر پیش ہونے کو کہا تھا۔ پوچھ گچھ کے بعد کل دیر شام ایجنسی کے ہیڈ کوارٹر سے نکلتے ہی صحافیوں نے انہیں گھیر لیا تھا اور انہوں نے ان سے تقریبا دس گھنٹے تک ہوئی پوچھ گچھ کے سلسلے میں سوالات کی بوچھار کر دی تھی لیکن مسٹرتیاگی خاموش رہے اور صرف اتنا ہی کہا کہ انہیں جو کچھ کہنا تھا وہ ان (حکام) کو بتا چکے ہیں۔

مسٹر تیاگی پر 12 ہیلی کاپٹروں کے سودے کو اس کی شرائط میں تبدیلی کرکے اٹلی کی اہم دفاعی کمپنی فنمیكانكا اور اس کی معاون کمپنی آگسٹا ویسٹ لینڈ کے حق میں کرنے کا الزام ہے۔ مسٹر تیاگی کو اس سے پہلےانفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے منی لاؤنڈرنگ ایکٹ کے تحت سمن کیا تھا۔ سی بی آئی نے اس معاملے میں فضائیہ کے سابق نائب سربراہ جے ایس گجرال سے بھی ہفتہ کو پوچھ گچھ کی تھی۔ جب آگسٹا ویسٹ لینڈ معاہدہ ہوا تھا، اس وقت وہ خریداری محکمہ کے انچارج افسر تھے۔ مسٹر تیاگی تب شک کے دائرے میں آئے جب اٹلی کی ایک عدالت نے کئی موقعوں پر ان کے نام کا ذکر کیا۔ اس عدالت نے معاہدہ حاصل کرنے کے لئے رشوت دینے کے الزام میں کئی اعلی حکام کو سزا دی تھی۔ اس کے بعد سی بی آئی نے مسٹر تیاگی، ان کے تین رشتہ داروں اور یورپی بچولیوں سمیت 13 افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔

Loading...

Loading...