உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سری لنکا کے دیوالیہ ہونے کی وجہ سے India پر آیا یہ بڑا بحران

    سری لنکا میں پیدا ہوا معاشی بحران ہندوستان کے لئے بن سکتا ہے مصیبت! (تصویر: اے ایف پی)

    سری لنکا میں پیدا ہوا معاشی بحران ہندوستان کے لئے بن سکتا ہے مصیبت! (تصویر: اے ایف پی)

    جمعرات کو تمل ناڈو کے سی ایم ایم کے اسٹالن نے اسمبلی میں سری لنکا کے معاشی بحران کا ذکر کیا اور کہا کہ وہ سری لنکا سے تامل ناڈو آنے والے تاملوں کی مشکلات سے واقف ہیں۔ انہوں نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ مرکزی وزارت سے بات چیت کریں کہ قانونی طریقے سے صورتحال سے کیسے نمٹا جائے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: سری لنکا کی تباہ حال معاشی حالت نے وہاں کے لوگوں کا جینا مشکل کر دیا ہے۔ آسمان چھوتی مہنگائی کے باعث عوام دو وقت کی روٹی تک اٹھانے سے قاصر ہیں۔ سری لنکا میں بھوک کے ستائے لوگوں کو اپنا ملک چھوڑنے پر مجبور کیا جا رہا ہے۔ اس ہفتے سری لنکا کے بہت سے تامل شہری اپنا ملک چھوڑ کر مشکل حالات میں سمندری راستے سے ہندوستان کے شہر تامل ناڈو آئے ہیں۔ حکام کا اندازہ ہے کہ سری لنکا سے مزید ہجرت ہوگی اور دو سے چار ہزار سری لنکن شہری ہندوستان آسکتے ہیں۔

      منگل کے روز سری لنکن تاملوں کا ایک چھ رکنی خاندان جو رامیشورم کے ایک جزیرے کے قریب پہنچا تھا، کوسٹ گارڈ کی طرف سے پوچھ گچھ کے بعد رامیشورم کے قریب ایک پناہ گزین کیمپ بھیج دیا گیا۔ ان چھ افراد میں ایک 4 ماہ کا شیرخوار بھی شامل تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Ship capsized:صاحب گنج سے کٹیہار جا رہا جہاز گنگا ندی میں پلٹا! پتھروں سے لدے کئی ٹرک ڈوبے

      بدھ کو پانچ بچوں سمیت 10 افراد کا ایک اور گروپ تمل ناڈو کے ساحل پر پہنچا۔ پناہ گزینوں میں سے ایک شیواشنکری نے کہا کہ سری لنکا میں ان کے لیے زندہ رہنے کا کوئی راستہ نہیں تھا اس لیے انہوں نے ملک چھوڑ کر ہندوستان آنے کا فیصلہ کیا۔

      اس گروپ نے بتایا کہ سمندر پار کرتے وقت ان کی کشتی کا انجن خراب ہو گیا اور وہ سمندر کے بیچوں بیچ پھنس گئی۔ تیز دھوپ کے درمیان، وہ کسی طرح سمندر پار کر کے آدھی رات کو تمل ناڈو کے ساحل پر پہنچ گئے۔ ایک اور مہاجر شیوا نے بتایا کہ سری لنکا میں چاول، تیل اور پیٹرول کی شدید قلت ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Petrol, Diesel Prices: چار دنوں میں پٹرول، ڈیزل کی قیمتوں میں 2.40 روپے کا اضافہ

      سری لنکا میں گیس، کھانا پکانے کے لیے ایندھن اور اسٹیشنری فروخت کرنے والی دکانوں پر بہت زیادہ ہجوم دیکھا جا سکتا ہے۔ ملک میں تمام اشیا کی شدید قلت ہے اور لائنوں میں کھڑے ناراض لوگ تازہ ترین صورتحال کا ذمہ دار گوتابایا راجا پاکسے حکومت کو ٹھہرا رہے ہیں۔

      منڈپم کے حکام نے اندازہ لگایا ہے کہ اگر سری لنکا میں یہ صورتحال برقرار رہی تو 2,000 سے 4,000 کے درمیان پناہ گزین تمل ناڈو آ سکتے ہیں۔

      سری لنکا سے آنے والوں کے پاس نہیں ہے ضروری دستاویز
      منڈپم میں سری لنکا سے تاملوں کی بحالی اور بہبود کی کمشنر جیسنتھا لازار نے حال ہی میں ان پناہ گزین کیمپوں کا دورہ کیا۔ جیسنتھا نے کہا کہ اب تک سری لنکا سے 16 پناہ گزین تمل ناڈو آ چکے ہیں۔ یہ سب سری لنکا کے سنگین معاشی بحران کی وجہ سے ملک چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں۔ لیکن ان کے پاس ہندوستان آنے کے لیے تمام ضروری دستاویزات نہیں ہیں۔ اس لیے پروٹوکول کے مطابق ان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

      جمعرات کو تمل ناڈو کے سی ایم ایم کے اسٹالن نے اسمبلی میں سری لنکا کے معاشی بحران کا ذکر کیا اور کہا کہ وہ سری لنکا سے تامل ناڈو آنے والے تاملوں کی مشکلات سے واقف ہیں۔ انہوں نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ مرکزی وزارت سے بات چیت کریں کہ قانونی طریقے سے صورتحال سے کیسے نمٹا جائے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: