உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اٹلی سے امرتسر پہنچی فلائٹ سے قیامت برپا، ٹسٹ میں 125 مسافر کورونا پازیٹیو

    Coronavirus: ایئر انڈیا (Air India) کی اٹلی-امرتسر پرواز کے 125 مسافر کورونا متاثر پائے گئے ہیں۔ ان کا امرتسر ہوائی اڈہ پر آمدورفت پر کووڈ-19 کے لئے ٹسٹ کیا گیا تھا۔ اس طیارے میں 179 مسافر سوار تھے۔

    Coronavirus: ایئر انڈیا (Air India) کی اٹلی-امرتسر پرواز کے 125 مسافر کورونا متاثر پائے گئے ہیں۔ ان کا امرتسر ہوائی اڈہ پر آمدورفت پر کووڈ-19 کے لئے ٹسٹ کیا گیا تھا۔ اس طیارے میں 179 مسافر سوار تھے۔

    Coronavirus: ایئر انڈیا (Air India) کی اٹلی-امرتسر پرواز کے 125 مسافر کورونا متاثر پائے گئے ہیں۔ ان کا امرتسر ہوائی اڈہ پر آمدورفت پر کووڈ-19 کے لئے ٹسٹ کیا گیا تھا۔ اس طیارے میں 179 مسافر سوار تھے۔

    • Share this:
      امرتسر: ایئر انڈیا (Air India) کی اٹلی-امرتسر پرواز کے 125 مسافر کورونا متاثر پائے گئے ہیں۔ ان کا امرتسر ہوائی اڈہ پر آمدورفت پر کووڈ-19 کے لئے ٹسٹ کیا گیا تھا۔ اس طیارے میں 179 مسافر سوار تھے۔ ایئر پورٹ پر ہی ان کی آر ٹی پی سی آر جانچ ہوئی تھی۔ ایئر پورٹ کے ڈائریکٹر وی کے سیٹھ نے بتایا کہ سبھی پازیٹیو مسافروں کو آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے۔ انہیں آئیسولیشن سینٹر بھیجنے کے لئے ایمبولینس ایئر پورٹ پر آچکی ہیں۔ وہیں ان کے سیمپل اومیکرون جانچ کے لئے بھیجے گئے ہیں۔

      اطلاع کے مطابق، اٹلی کے ملان شہر سے امرتسر آئی نان شیڈولڈ چارٹر فلائٹ (YU- 661) کے مسافروں کی جانچ کی گئی تھی۔ ایئر پورٹ کے ڈائریکٹر وی کے سیٹھ نے کہا کہ سبھی مسافروں کو کوارنٹائن رہنے کو کہا گیا ہے، جبکہ پازیٹیو مسافروں کو سرکاری کوارنٹائن سینٹر میں بھیجا جا رہا ہے، جن مسافروں کو سہولت کے مطابق آئیسولیشن سینٹر میں جانا ہے، ان کے بھی نظم کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ابھی ایئر پورٹ پر انفیکشن نہ پھیلے، اس کو لے کر مسافروں کو ایئر پورٹ سے باہر کیا جا رہا ہے۔ اس کے لئے ایمبولینس بلائی گئی تھیں۔ مسافروں کو ان کے ضلع میں بھی آئیسولیٹ کیا جائے گا۔

      دوسری جانب، ہریانہ اور پنجاب کی راجدھانی چندی گڑھ (Chandigarh) میں کورونا وائرس (Coronavirus) کا قہر مسلسل جاری ہے۔ کورونا سے پی جی آئی میں بھی حالات بگڑ گئے ہیں۔ پی جی آئی میں 197 ڈاکٹر اور ملازم کورونا کی چپیٹ میں آچکے ہیں۔ ان میں 88 ڈاکٹر شامل ہیں۔ گزشتہ تین دنوں میں ہی 147 کے قریب ڈاکٹر اور ہیلتھ ورکر پازیٹیو آچکے ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر دونوں ڈوز لے چکے تھے۔ راحت کی بات یہ ہے کہ صرف ایک میں ہی سنگین علامات ہیں، باقی سبھی میں مائلڈ ہیں۔ یہ اعدادوشمار 20 دسمبر سے 4 جنوری تک کا ہے۔

      کورونا کے نئے ویریئنٹ اومیکرون کا اثر دکھنے لگا ہے۔ ایکسپرٹ نے پہلے ہی تشویش ظاہر کی تھی کہ اومیکرون کی وجہ سے جنوری-فروری میں حالات سنگین ہوسکتے ہیں، جو کہ اب صاف نظر آنے لگا ہے۔ اومیکرون کی وجہ سے پورے ملک میں بدھ کو پورے ملک میں تقریباً 91 ہزار کووڈ کے معاملے سامنے آئے، جو کہ ایک بڑی تشویش کی بات ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: