ہوم » نیوز » وطن نامہ

Sanjeevani : وہ کہانیاں جن پر سنجیونی کو فخر ہے

Sanjeevani - A Shot Of Life : ہندوستان کی سب سے بڑی ویکسین بیداری کی مہم Network18 سنجیونی ۔ ایک ٹیکہ زندگی کا، Federal Bank Ltd کی جانب سے شروع کردہ ایک CSR پیش قدمی، اس کی ایک زندہ مثال ہے جس صحت اور امیونٹی کیلئے کامیابی کے ساتھ ایک قومی تحریک شروع کی اور عام ہندوستانیوں کو یہ اختیار دیا کہ وہ اپنی کمیونٹیز کی مشکلات کا مداوا کرنے کیلئے اپنی تلاش سے اوپر اور پرے جائیں۔

  • Share this:
Sanjeevani : وہ کہانیاں جن پر سنجیونی کو فخر ہے
Sanjeevani : وہ کہانیاں جن پر سنجیونی کو فخر ہے

کہتے ہیں تاریک راتوں میں ستاروں کی چمک سب سے زیادہ ہوتی ہے۔ ہر چند کہ COVID-19 انفیکشنز کی متواتر لہروں نے ملک پر شدید معاشی اور جذباتی ضرب لگائی، لیکن اس کے باوجود اس دوران ہمدردی اور ابھرنے کی انتہائی شدید خواہش بھی دیکھنے کو ملی۔ ہندوستان کی سب سے بڑی ویکسین بیداری کی مہم Network18 سنجیونی ۔ ایک ٹیکہ زندگی کا، Federal Bank Ltd کی جانب سے شروع کردہ ایک CSR پیش قدمی، اس کی ایک زندہ مثال ہے جس صحت اور امیونٹی کیلئے کامیابی کے ساتھ ایک قومی تحریک شروع کی اور عام ہندوستانیوں کو یہ اختیار دیا کہ وہ اپنی کمیونٹیز کی مشکلات کا مداوا کرنے کیلئے اپنی تلاش سے اوپر اور پرے جائیں۔


چیلنج سے نبردآزما ہونا


اب ناسک کے اشفاق شیخ کی ہی مثال لے لیں۔ قبل اس کے کہ سنجیونی مہاراشٹر کے متاثرہ ترین اضلاع میں سے ایک میں واقع اشفاق کے گاؤں پہنچتی، اشفاق کو پہلے ہی ’108 ہیلپ لائن اسسٹنس‘ کے لقب سے نوازا جا چکا تھا۔ یہ اعزاز انہیں ہمیشہ مدد کیلئے تیار رہنے کی ان کی عادت کے سبب ملا، انہوں نے دوسری لہر کے عروج پر 300 مریضوں کیلئے اسپتال میں بیڈ تلاش کرنے میں معاونت کی۔ سنجیونی کی آن گراؤنڈ ٹیم کی مدد سے، اب وہ اپنی کمیونٹی کے لوگوں کو امیونائزیشن کے بارے میں آگاہ کر کے اور انہیں ویکسینیشنز کیلئے رجسٹر کر کے اپنی کمیونٹی کو محفوظ بنائے رکھنے کے اقدامات کر رہے ہیں۔


یقیناً، جا بجا غلط معلومات اور بے یقینی کے ماحول میں، بذات خود صحیح راستے پر ایک دلیرانہ عمل ہے۔ امرتسر ضلع میں واقع بلارہوال گاؤں کی جسکرن سے پوچھیں جنہوں نے سماجی رسوائی اور برادری سے باہر نکالے جانے کے خوف پر قابو پاتے ہوئے خود کو اور اپنی والدہ کو ویکسین لگوائی۔ سنجیونی کی آن گراؤنڈ ٹیم نے صحت اور امیونٹی کے ان کے نقطہ نظر کو زیادہ اہمیت دی، یہاں تک کے ان کے ان پڑوسیوں کیلئے بھی ویکسین لگوانے کا اہتمام کیا جو کبھی اس کے تعلق سے وہم کا شکار تھے۔

دردمند دل رکھنے والے وہ لوگ جن کی ہمیں ضرورت ہے

ایسی بااختیار فیصلہ سازی ملک کے ایسے حصوں میں عام بات ہے جہاں ضروری ساز و سامان کا فقدان نہیں ہے، لیکن ان لوگوں کا کیا جنہیں ہمارے ہیلتھ کیئر سیٹ اپ کے حاشیوں میں فراموش کر دیا گیا؟ دیہی دکشن کنّڑ کے علاقے میں آباد منوہر اور اس کے اہل خانہ کی کہانی انہیں درپیش مسائل کو اجاگر کرتی ہے، خاص طور بحران کے ان وقتوں میں۔ اپنے بزرگ والدین کو ویکسین لگوانے کی کوشش کو ریاست میں لگنے والے لاک ڈاؤن اور علاقے میں صحت کی سہولیات کی کمی کی وجہ سے ٹھیس پہنچی۔ عین اس وقت جب یہ لگ رہا تھا کہ وہ ویکسینیشن کے جال سے باہر نکل جائیں گے، سنجیونی مہم بچاؤ کیلئے آن پہنچا اور اہل خانہ کو ویکسینز کے بارے میں اطلاع دی اور ویکسینیشن اپوائنٹمنٹس کیلئے ان کے سفر کا اہتمام کیا۔

اسی طرح، گنتور میں کاوورو گاؤں کی رماڈو کو COVID-19 کے بارے میں بہت کم علم تھا، تبھی سنجیونی گاڑی ان کی کمیونٹی میں پہنچی۔ وین کے کنارے پر چلنے والی معلوماتی ویڈیو سے انہیں COVID-19 کے تئیں مناسب برتاؤ اور ویکسینیشنز کی اہمیت سمجھائی۔ کبھی کبھار، بیدار ذہن لوگ اپنی ذات ہی میں صحت اور فلاح و بہبود کے سفارت کار بن جاتے ہیں، جیسے اندور کے سانویر گاؤں کی پرتیبھا بھدوریا بن گئیں۔ معروف آشا نامی غیر سرکاری تنظیم سے وابستہ اس فلاحی کارکن پرتیبھا نے COVID-19 بیداری پھیلانے کیلئے انتھک محنت کی اور ویکسینیشن سے متعلق مفروضوں کو ختم کیا۔ بعد میں، سنجیونی مہم نے اپنی کمیونٹی کو تحفظ فراہم کرنے کی ان کی کوشش کو مزید رفتار عطا کی۔



ان میں سے ہر ایک کہانی فتح کی ایک ایسی داستان ہے جو عمل کی طاقت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک روشن مستقبل میں راہ ہموار کرتی ہے۔ آپ سنجیونی کی ان کہانیوں کو اپنی آنکھوں سے دیکھ سکتے ہیں۔ ان کہانیوں کو تمام Network18 TV اور ڈیجیٹل چینلز پر خاص طور پر نشر کیا جائے گا۔ انہیں دیکھنا نہ بھولیں اور صحت اور فلاح و بہبود میں ہندوستان کی جد و جہد میں تعاون کا ہاتھ بڑھائیں۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 22, 2021 06:32 PM IST