உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Prophet Remark Row: پیغمبر اسلام کے خلاف متنازع تبصرہ معاملہ میں سخت کاروائی ہونی چاہئے: مولانا محمود مدنی

    Prophet Remark Row: پیغمبر اسلام کے خلاف متنازع تبصرہ معاملہ میں سخت کاروائی ہونی چاہئے: مولانا محمود مدنی

    Prophet Remark Row: پیغمبر اسلام کے خلاف متنازع تبصرہ معاملہ میں سخت کاروائی ہونی چاہئے: مولانا محمود مدنی

    Delhi News: مولانا محمود مدنی نے کہا کہ جمعیۃ علماء ہند کا ہمیشہ سے یہ مطالبہ رہا ہے کہ تمام پیشوایان مذہب کی حرمت وعظمت کی حفاظت کے لیے ایک قانون وضع کیا جائے جس سے اس قسم کی فتنہ انگیزیوں کا سدباب ہو سکے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | New Delhi | New Delhi
    • Share this:
    نئی دہلی : حیدر آباد میں بی جے پی کے معطل لیڈر اور ایم ایل اے ٹی راجا سنگھ کے ذریعہ پیغمبر اسلام کے خلاف متنازع تبصرہ کا معاملہ سامنے آنے کے بعد پورے ملک میں ایک بار پھر بحث شروع ہو گئی ہے ۔ اس درمیان جمیعت علماء ہند کی طرف سے بھی بڑا بیان سامنے آیا ہے ۔ جمیعت علمائے ہند کی طرف سے توہین رسالت کا ارتکاب کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی  کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ جن لوگوں نے ہجومی تشدد کو لے کر اعتراف کیا ہے ان کے خلاف بھی کارروائی کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔

    جمعیت علماء ہند کے صدر مولانا محمود اسعد مدنی نے بھارتیہ جنتا پارٹی کے معطل لیڈر اور ایم ایل اے ٹی راجا سنگھ کے ذریعہ پیغمبر اسلام کے خلاف متنازع بیان کو انتہائی شرمناک اور افسوس ناک بتایا ۔ مولانا مدنی نے کہا کہ یہ ملک کے لئے بھی رسوا کن اور عالمی بدنامی کا سبب ہے کہ یہاں بر سر اقتدار پارٹی کے لوگ ایسے متنازع بیانات دے رہے ہیں ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: بی جے پی سے معطل MLA ٹی راجا کو ملی ضمانت، پیغمبر اسلام کے خلاف کیا تھا تبصرہ


    مولانا مدنی نے اس سلسلہ میں راجا سنگھ کی گرفتاری اور پارٹی کی طرف سے تادیبی کارروائی کو وقت کے تقاضوں کے مطابق بتایا ۔ ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ ضروری ہے کہ ایسے مجرموں کو قرار واقعی سزاد ی جائے تا کہ اس کا سد باب ہو ۔ نیز ایسے لوگوں پر بھی کارروائی کی جائے جو اقرار کرتے ہیں کہ انہوں نے مسلمانوں کا ماب لنچنگ کے ذریعہ قتل کیا ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: بی جے پی سے معطل MLA ٹی راجا کو ملی ضمانت، پیغمبر اسلام کے خلاف کیا تھا تبصرہ


    مولانا مدنی نے کہا کہ جمعیۃ علماء ہند کا ہمیشہ سے یہ مطالبہ رہا ہے کہ تمام پیشوایان مذہب کی حرمت وعظمت کی حفاظت کیلئے ایک قانون وضع کیا جائے، جس سے اس طرح کے واقعات کا سدباب ہو سکے ۔ ہم مرکزی سرکار سے ایک بار پھر مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ صورت حال کی نزاکت سمجھے اور اس سلسلے میں سخت اقدام سے باز نہ رہے ۔ اس سلسلہ میں جمعیۃ نے سپریم کورٹ میں بھی ایک عرضی داخل کررکھی ہے کہ سپریم کورٹ اپنی جاری کردہ گائیڈ لائن پر عمل در آمد کے لئے سرکاروں کو مجبور کرے ۔

    ساتھ ہی ساتھ مولانا مدنی نے لوگوں سے امن و امان بنائے رکھنے کی اپیل کی اور صبر وثبات کی تلقین کی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: