ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اترپردیش: طلباء نےکیا یونیورسٹی کھولنے کا مطالبہ، پولیس نے کیا لاٹھی چارج

یونیورسٹی میں تعلیمی سرگرمیاں شروع کرنے اور بیرونی طلبہ کے لئے ہاسٹل کھولے جانے کے مطالبے کے ساتھ دھرنے پر بیٹھے طلبہ پر پولیس نے لاٹھی جارچ کر دیا ہے۔

  • Share this:
اترپردیش: طلباء نےکیا یونیورسٹی کھولنے کا مطالبہ، پولیس نے کیا لاٹھی چارج
یوپی: طلبہ نے کیا یونیورسٹی کھولنے کا مطالبہ، پولیس نے کیا لاٹھی چارج

الہ آباد: یونیورسٹی میں تعلیمی سرگرمیاں شروع کرنے اور بیرونی طلبہ کے لئے ہاسٹل کھولے جانے کے مطالبے کے ساتھ دھرنے پر بیٹھے طلبہ پر پولیس نے لاٹھی جارچ کر دیا ہے۔ الہ آباد یونیورسٹی کے اسٹوڈنٹس یونین کے سامنے گذشتہ ایک ماہ سے جاری طلبہ کے احتجاجی دھرنے کو پولیس نے طاقت کے ذریعے ختم کرا دیا ہے۔ طلبہ یونیورسٹی انتظامیہ سے مطالبہ کر رہے تھے کہ لاک ڈاؤن ختم ہونے کے ساتھ ہی یونیورسٹی میں تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز کیا جائے۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے دھرنے کی جگہ پر بھاری تعداد میں پولیس فورس تعینات کر دی ہے۔ پولیس نے پہلے طلبہ سے دھرنا ختم کرنےکو کہا، لیکن طلبہ نے پولیس کا حکم ماننے سے انکار کر دیا اور نعرے بازی شروع کر دی۔ طلبہ کی نعرے بازی شروع ہوتے ہی پولیس نے دھرنے دے رہے طلبہ پر لاٹھی چارج کر دیا۔ دھرنے میں شامل سماج وادی پارٹی یو جن سبھا سے تعلق رکھنے والے کئی طلبہ کو گرفتار کرکے پولیس لائن لے جایا گیا ہے۔ گذشتہ ایک مہینے سے دھرنے پر بیٹھے طلبہ کا الزام ہے کہ کورونا وائرس کے آڑ میں یونیورسٹی انتظامیہ نے تمام تعلیمی سرگرمیاں معطل کر رکھی ہیں۔


یونیورسٹی میں تعلیمی سرگرمیاں شروع کرنے اور بیرونی طلبہ کے لئے ہاسٹل کھولے جانے کے مطالبے کے ساتھ دھرنے پر بیٹھے طلبہ پر پولیس نے لاٹھی جارچ کر دیا ہے۔


طلبہ کا کہنا ہےکہ جب ریاست بھر میں داخلہ امتحانات کرائے جاسکتے ہیں تو یونیورسٹی میں تعلیمی سرگرمیاں کیوں کر شروع نہیں کی جاسکتیں؟ لاٹھی چارج کے واقعہ پر سماج وادی پارٹی نے اپنے سخت رد عمل کا اظہارکیا ہے۔ پولیس لاٹھی چارج کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے سماج وادی پارٹی کے ایم ایل سی اور یو پی بورڈ کے سابق ڈائرکٹر واسو دیو یادو نے ریاستی حکومت پر طلبہ کی آواز دبانے کا الزام لگایا ہے۔


یونیورسٹی انتظامیہ نے دھرنے کی جگہ پر بھاری تعداد میں پولیس فورس تعینات کر دی ہے۔
یونیورسٹی انتظامیہ نے دھرنے کی جگہ پر بھاری تعداد میں پولیس فورس تعینات کر دی ہے۔


واسو دیو یادو کا کہنا ہے کہ الہ آباد یونیورسٹی میں تمام طرح کی تعلیمی سرگرمیاں معطل پڑی ہوئی ہیں، ایسے میں طلبہ یہ جاننا چاہتے ہیں کہ ان کا تعلیمی مستقبل کیا ہے۔ واسو دیو یادو کا کہنا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ کو پولیس کی طاقت کے بجائے تعلیمی سرگرمیاں شروع کرنے پر توجہ دینی چاہئے۔ وہیں دوسری جانب الہ آباد کے ایڈیشنل سٹی مجسٹریٹ یوراج سنگھ کا کہنا ہے کہ پوری ریاست میں کووڈ-19 کا ضابطہ نافذ ہے۔ لہٰذا کسی کو بھی ضابطے کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ یوراج سنگھ نے طلبہ کے دھرنے کو سیاسی بتاتے ہوئے پولیس لاٹھی چارج کا دفاع کیا ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 25, 2020 07:48 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading