ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

طلبہ اپنے اندر جرأت وبے باکی اور علمی وعملی گہرائی نیز سیرت طیبہ سے گہری وابستگی پیدا کریں : مولانا محمدرحمانی

سعودی سفارتخانہ سے آئے ملحق ثقافی ڈاکٹر عبداللہ بن صالح الشتوی نے طلبہ کی مختلف النوع کارکردگیاں خاص کر عربی زبان کے بولنے اور فصیح عربی میں تقریر کرلینے کی خوبی دیکھ کر اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ طلبہ تو اہل زبان سے بھی اچھی عربی بولتے ہیں۔

  • Share this:
طلبہ اپنے اندر جرأت وبے باکی اور علمی وعملی گہرائی نیز سیرت طیبہ سے گہری وابستگی پیدا کریں : مولانا محمدرحمانی
طلبہ اپنے اندر جرأت وبے باکی اور علمی وعملی گہرائی نیز سیرت طیبہ سے گہری وابستگی پیدا کریں : مولانا محمدرحمانی

ابوالکلام آزاد اسلامک اویکننگ سنٹر ،نئی دہلی کے اعلیٰ تعلیمی وتربیتی ادارہ جامعہ اسلامیہ سنابل ،نئی دہلی میں نادی الطلبہ کی جانب سے ہونے والے پانچ روزہ قرأتِ قرآن کریم، عربی،اردو،انگریزی اورہندی زبانوں میں تقریری وتحریری،مباحثہ علمیہ، مشاعر ہ اورکوئز پر مشتمل سالانہ اجلاس کاآج بحسن وخوبی اختتام ہوا۔ان تمام پروگراموں میںمرحلۂ ثانویہ وعالیہ کے210 ،مرحلۂ متوسطہ کے257 اورمعہد عثمان بن عفان جوگابائی کے105 طلبہ نے مختلف مقابلوں میں پورے جوش وخروش کے ساتھ حصہ لیا ۔

سالانہ اجلاس کا اختتامی پروگرام آج بروز اتوار 3مارچ 2019 مولانا محمد رحمانی سنابلی کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ اس موقع پر سعودی سفارتخانہ سے آئے ملحق ثقافی ڈاکٹر عبداللہ بن صالح الشتوی نے طلبہ کی مختلف النوع کارکردگیاں خاص کر عربی زبان کے بولنے اور فصیح عربی میں تقریر کرلینے کی خوبی دیکھ کر اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ طلبہ تو اہل زبان سے بھی اچھی عربی بولتے ہیں۔اس کے بعد انہوں نے طلبہ میں مزید ذوق وشوق پیدا کرنے کے متعلق سفارت خانہ کی جانب سے مستقبل میں مسابقات رکھنے کے ارادہ کا اظہار کرتے ہوئے طلبۂ سنابل کی نمایاں کامیابی کے تئیں اپنی نیک تمنا اور امید ظاہر کی۔

سینئر صحافی سہیل انجم صاحب نے اپنی تاثراتی گفتگومیں کہا کہ میڈیا کا موضوع انتہائی اہم موضوع ہے۔ جو کہ عالمی پیمانہ پر موضـوعِ بحث بنا ہوا ہے۔ ہندوستانی میڈیا کا ماضی میں ایک مقام تھا لیکن آج متعصبانہ ذہنیت نے اس کے چہرے کو مسخ کردیا ہے ۔ضرورت اس بات کی ہے کہ طلبہ کو یہ مواقع فراہم کئے جائیں کہ وہ میڈیا کی طرف آئیں تاکہ صحیح فکر کے ساتھ قوم وملت کی ترجمانی اوران کی رہنمائی کرسکیں۔

مہمانِ خصوصی پروفیسر عبدالحق ،سابق صدر شعبۂ اردو دہلی یونیورسٹی نے طلبہ کو اپنے ناصحانہ کلام میں اس بات کی طرف رہنمائی کی کہ طلبہ زبان وادب میںقدرت حاصل کریں ۔ زبان وادب ہی وہ واحد ذریعہ ہے جس کے ذریعہ آپ کی پہچان ہوگی ۔ میڈیا اوردیگر شعبہ جات آپ کو عزت دیںگے۔ بالخصوص اردو زبان جوہماری علمی زبان ہے جس میں ہمارے دین کا ایک بڑا سرمایہ محفوظ ہے ، اس کوسیکھنا اورفروغ دینا بے حد ضروری ہے ۔


maulana rahami2
اس کے بعد مرکز کے صدر مولانا محمد رحمانی سنابلی مدنی نے صدارتی کلمات میں کہا کہ عزیز طلبہ! والدِ گرامی علامہ عبدالحمید رحمانی رحمہ اللہ نے جوپودہ لگایاتھا اس کی آبیاری کرنا اوراسے ترقی دینا ، اس کے لئے قربانی پیش کرنا ہم سب کے لئے ضروری ہے ۔طلبہ کو نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ ہم سوشل ورک پر خصوصی توجہ دیں ۔ مسلمانوں کے یہاں اس سلسلے میں کافی سستی پائی جاتی ہے اس کے لئے ضرورت ہے کہ ہم غرباء اورمساکین کی داد رسی کی کوشش کریں ۔ سیرت نبوی کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیرت طیبہ پر مختلف گوشوں پرمسابقہ کرایا جائے کیونکہ یہ وہ چیز ہے جس سے ہماری زندگیوں میں روشنی آئے گی ۔ اسی سے ہمیں جرأت اوربے باکی کا سبق ملے گا۔
First published: Mar 03, 2019 09:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading