سی بی آئی بدعنوانی معاملہ: آلوک ورما کا جواب لیک ہونے سے سپریم کورٹ برہم، کہا آپ لوگ سماعت کے لائق نہیں

چیف جسٹس آف انڈیا (سی جے آئی) رنجن گوگوئی نے ورما کے مہربند لفافے کی باتیں عوامی ہونے پر اپنی سخت ناپسندیدگی کا اظہار کیا

Nov 20, 2018 11:32 AM IST | Updated on: Nov 20, 2018 11:42 AM IST
سی بی آئی بدعنوانی معاملہ: آلوک ورما کا جواب لیک ہونے سے سپریم کورٹ برہم، کہا آپ لوگ سماعت کے لائق نہیں

سی بی آئی ڈائریکٹر آلوک ورما

سی بی آئی ڈائریکٹر آلوک ورما پر بدعنوانی کے معاملہ میں منگل کو سپريم کورٹ میں سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس آف انڈیا (سی جے آئی) رنجن گوگوئی نے ورما کے مہربند لفافے کی باتیں عوامی ہونے پر اپنی سخت ناپسندیدگی کا اظہار کیا۔ سی جے آئی نے یہاں تک کہہ دیا کہ آپ میں سے کوئی بھی سماعت کے لائق نہیں ہے۔ معاملے کی سماعت کرتے ہوئے عدالت نے معاملہ کی اگلی تاریخ انتیس نومبر تک کے لئے  ملتوی کردی ہے۔

بتا دیں کہ خود پر لگے بدعنوانی کے الزامات پر سینٹرل ویجیلینس کمیشن( سی وی سی) رپورٹ پر آلوک ورما نے پیر کی شام سپریم کورٹ میں اپنا جواب سونپا تھا۔ بتایا جا رہا ہے کہ ایک آن لائن پورٹل پر ورما کے جواب کی بنیاد پر رپورٹ کی گئی تھی جس پر عدالت عظمیٰ نے ناراضگی جتائی۔

Loading...

اس پورے معاملہ میں سی وی سی جانچ کی ضرورت اس وقت پڑی جب سی بی آئی کے ڈائریکٹر آلوک ورما اور اسپیشل ڈائریکٹر راکیش استھانہ نے ایک دوسرے پر بدعنوانی کے الزام لگائے۔

یہ بھی پڑھیں: آلوک ورما کے گھر کے باہر گھوم رہے چاروں افراد آئی بی افسران تھے ، کررہے تھے اپنی ڈیوٹی

تنازعہ بڑھنے پر دونوں کو 23 اکتوبر کو چھٹی پر بھیج دیا گیا تھا۔ سی بی آئی نے استھانہ کے خلاف 15 اکتوبر کو شکایت درج کی تھی۔ وہیں، استھانہ نے ورما کے خلاف کابینہ سکریٹری کو 24 اگست کو شکایت دی تھی۔

Loading...